Kisi Aur Ka Hun Filhal Novel By Suhaira Awais – Episode 9

0
کسی اور کا ہوں فی الحال از سہیرا اویس – قسط نمبر 9

–**–**–

وہ ایکچولی۔۔ نداحل میں نے realize کیا ہے کہ میں کچھ زیادہ ہی برا پیش آیا تھا تم سے۔۔ apology کی ضرورت تمہیں نہیں مجھے ہے۔۔”
“ارے نہیں۔۔ یہ آپ کیا کہ رہے ہیں۔۔!! ایسا بول کر پلیز مجھے مزید شرمندہ مت کریں۔۔ میری غلطی تھی۔۔ اور میں اس کے لیے آپ سے دوبارہ معافی مانگتی ہوں۔۔” نداحل نے ندامت بھرے لہجے میں کہا۔
“نداحل۔۔!! چھوڑ دو اس بات کو۔۔ یقین مانو!!
اب تمہیں معافی مانگنے کی کوئی ضرورت نہیں۔۔
جو ہوا۔۔ جو کیا۔۔!! وہ سب بھلا دو۔۔ یہ تمہارے حق میں بہتر ثابت ہوگا۔۔!!
میں بھی سب کچھ بھلانے کی کوشش کروں گا!!”
تقی نے عجیب سے لہجے میں کہا۔۔
جیسے وہ اپنے دل کی بغاوتیں چھپانے کی کوشش کررہا ہو۔
نداحل کی تو خوشی کی انتہا نہیں تھی۔۔
تقی کی باتوں کا مطلب تھا کہ وہ اسے معاف کرچکا ہے۔۔!!
وہ اب ناراض بھی نہیں تھا۔۔
نداحل کے دل سے تو جیسے کوئی بہت ہی بھاری بوجھ اتر گیا تھا۔
“Thanks a lot, Taqi bhaiee
Thank you sooo much,
آپ کو اندازہ نہیں ہے کہ آپ نے کتنی بڑی ٹینشن میرے سر سے دور کردی۔۔” نداحل نے چہکتے ہوئے کہا۔
“تمہیں تھینکس بولنے کی بھی ضرورت نہیں۔۔
کیونکہ میرا فرض بنتا تھا کہ اگر تم نے کوئی غلط بات کر بھی دی تھی تو مجھے سمجھانا چائیے تھا۔۔
اینڈ آئی نو۔۔ کہ تم خود کبھی بھی ایسی جرات نہ کرتیں۔۔
I guess…
تمہیں کسی نے ضرور۔۔۔ miss گائیڈ کیا ہوگیا۔۔
لیکن اب چھوڑو ان باتوں کو۔۔”تقی کا لب و لہجہ بہت mysterious سا تھا۔
نداحل کو تقی میں ایک الگ قسم کی۔۔ انجانانی سی تبدیلی محسوس ہورہی تھی۔۔
پر ابھی وہ یہ سب سوچ کر اپنا دماغ خراب نہیں کرنا چاہتی تھی۔۔
ابھی تو اسے سیلبریٹ کرنا تھا۔۔
تقی اس سے راضی ہوگیا تھا۔۔ یہ بات اس کی خوشی بہت تھی۔
وہ لوگ یونیورسٹی پہنچ چکے تھے۔
تقی اپنی کار پارک کر کے، کار سے باہر نکلا تو۔۔
ملک عمیر جیسے اس کے اور نداحل کے انتظار میں ہی اپنی جیپ سے پشت ٹکائے کھڑا تھا۔۔
اسے دیکھ کر تقی کا حلق تک کڑوا ہوگیا۔۔
آج سے پہلے تو اس نے، اس وقت۔۔ یعنی اتنی صبح اس عمیر کو یونیورسٹی میں نہیں دیکھا تھا۔
وہ اس کا سامنا نہیں کرنا چاہتا تھا۔۔
پر برا ہو اس کی قسمت کا۔۔
وہ تو جیسے اس کا دل جلانے کو ام دونوں کے استقبال کے لیے ہی کھڑا تھا۔۔
“ارے۔۔۔ تقی صاحب کہاں جا رہے ہیں۔۔ بندہ سلام دعا ہی کر لیتا ہے۔۔!!” عمیر نے بڑی عیاری سے ان کا راستہ روکا۔
تقی کو مجبوراً رکنا پڑا۔۔
“خیر ہے۔۔؟؟ آج آپ یہاں کیسے۔۔؟” تقی نے بظاہر خوش مزاجی اور تحمل سے پوچھا۔۔
لیکن اندر سے وہ بری طرح کھول رہا تھا۔۔
“ہاں۔۔وہ بس میں ارسلان کو ڈراپ کرنے آیا تھا۔۔” عمیر نے اپنے چھوٹے بھائی کا نام لیتے ہوئے سادگی سے جواب دیا۔
عمیر کی شوق بھری نظریں۔۔ مسلسل نداحل کے حسین چہرے کا محاصرہ کیے ہوئے تھیں۔
اور یہ بات تقی کو ہضم ہی نہیں ہو کے دے رہی تھی۔
وہ مٹھیوں بھینچے ، غصہ ضبط کیے عمیر کو گھور رہا تھا۔۔
پر وہ بھی کوئی اونچے لیول کا ڈھیٹ تھا۔۔
تقی کی گھوریوں کا اس پر کوئی اثر نہیں ہوا۔
الٹا۔۔عمیر، تقی کو چھوڑ کر۔۔ نداحل سے باتوں میں مشغول ہوگیا۔
نداحل، تقی کے ایکسپریشنز دیکھ رہی تھی۔۔ اور وہ بھی عمیر سے جان چھڑا کر بھاگنے کی کوشش کر رہی تھی۔۔
پر عمیر کی سحر انگیز شخصیت۔۔ اس کی باتیں۔۔ نداحل کو اس کی طرف راغب کررہی تھیں۔۔
اور وہ چاہ کر بھی ، اس کے ساتھ سلسلۂ کلام توڑ نہیں پائی۔۔
تقی کا تو آج سارا موڈ ہی خراب ہوکر رہ گیا تھا۔۔
اس کی اچھی خاصی ٹھنڈی طبیعت کو آگ بگولا کر گیا تھا وہ۔۔
وہ اتنا sensitive نہیں تھا۔۔ نہ ہونا چاہتا تھا۔۔ مگر پھر بھی۔۔
وہ نداحل کے case میں حد سے زیادہ حساس ہورہا تھا۔۔
اور یہ اس کے لیے بلکل کوئی خوش آئند بات نہیں تھی۔
وہ اپنی اس محبت سے جتنا دور بھاگنا چاہ رہا تھا۔۔
وہ اتنا ہی اسے اپنے بس میں کر رہی تھی۔

–**–**–
جاری ہے
——
آپکو یہ ناول کیسا لگا؟
کمنٹس میں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Read More:  Kisi Aur Ka Hun Filhal Novel By Suhaira Awais – Episode 8

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: