Main Aashiq Deewana Tera Novel by Areej Shah – Episode 19

0
میں عاشق دیوانہ تیرا از اریج شاہ – قسط نمبر 19

–**–**–

ماما آپ کو پکا پتا ہے میرا رشتہ ان کے لیے آیا ہے وہ صبح سے شام کی تصویر لیے کبھی ادھر کبھی ادھر گھوم رہی تھی
اور نہیں تو کیا اور سب سے مزے کی بات یہ ہے بیٹا جی کہ یہ ہمارے وطن کے لیے لڑتا ہے ہمارے وطن کے لیے کام کرتا ہے یہ لڑکا آرمی میں ہے تمہارے ابو نے یہ بات سنی تو فوراً ہی راضی ہوگئے
اب اس سے زیادہ خوشی کی اور کون سی بات ہو سکتی ہے کہ جس کے ساتھ ہماری بیٹی کی شادی ہو گی وہ وطن کا سپاہی ہے
امی تو صبح سے شام کی تعریفیں کی جا رہی تھی جب کہ وہ شام کی تصویر لیے بہت غور سے دیکھ رہی تھی شاید یقین کرنا چاہتی تھی کہ یہ شام ہی ہے کوئی اور نہیں
بیٹا اب اس کو گھور کے نظر مت لگا دینا پتہ ہے مجھے بہت خوبصورت دکھتا ہے لاؤ تصویر واپس دو تمہارے بھائی کو دکھانی ہے
زارا کے ایک بھائی نے تو شادی کے لیے ہاں کر دی تھی دوسرے بھائی کی طرف سے بھی ہاں تھی بس وہ تصویر دیکھنا چاہتا تھا
ہائے اللہ اب میں کیسے صبح ان کے پاس جاؤں گی کیسے ان کی کلاس لونگی یہ تو میرے منگیتر نکل آئے زارا کبھی شرمارہی تھی تو کبھی خوش ہو رہی تھی
❤
کچھ کھاتی پیتی ہو نہیں اپنا حال دیکھو ترس آتا ہے مجھے اپنے آپ پر کیسے گزارا کرو گی تم میرے ساتھ اسے تھوڑا سا کھا کر اٹھتے دیکھ کر کر بولا
میرا ہو گیا میں کھانا کھا چکی ہوں
اور میں اتنا ہی کھاتی ہوں
اسے آہستہ اسے بولتے دیکھ کر وہ معصومیت سے بولی
وہی تو میں کہہ رہا ہوں میری جان تھوڑا زیادہ کھایا کرو اپنی جان بناؤ مجھے برداشت کرنا بچوں کا کام نہیں ہے وہ سمجھاتے ہوئے اینڈ پر شرارت سے بولا
جس پر وہ جھنبپ کر رہ گئی
آپ نا بہت وہ ہیں اسے کوئی بات سوج نہیں رہی تھی رومینٹک ہاں میری جان میں جانتا ہوں میں بہت رومنٹک ہوں لیکن ابھی تم نے مجھے رومینٹک ہونے کا موقع کہاں دیا ہے وہ اس کی بات پکڑتے ہوئے بولا جب کہ وہ منہ کھول کر رہ گئی ۔
میں نہیں بات کروں گی آپ سے آپ ایک انتہائی بے شرم انسان ہیں وہ اپنے گالوں کی سرخی چھپاتے ہوئے اٹھ کر بھاگنے لگی جب زاوق نے اسے کمر سے پکڑ لیا
ایسے کیسے میری جان ابھی تو تم باتوں پر گھبرا رہی ہوں جب میں عمل کر کے دکھاؤں گا تب تمھارا کیا بنے گا وہ شرارت سے اس کے گال کھینچتے ہوئے بولا
آپ مجھے چھوڑ دیں ورنہ میں ۔۔۔۔۔
ورنہ تم مجھے کس کرو گی ہے نا ذرا سوچو ہماری شادی کو ایک ہفتہ ہو چکا ہے اور ابھی تک تم نے مجھے ایک چھوٹی سی کسی بھی نہیں دی کتنی بورنگ ہو تم ایسے تو میرا گزارہ نہیں ہوگا اگر تم یہاں سے جانا چاہتی ہو تو تم میری خواہش پوری کرو ورنہ آج میں اپنی خواہشیں پوری کرنے کے موڈ میں ہوں ۔
وہ اس کے لبوں پر انگوٹھا پھرتا بہکےہوئے انداز میں بولا
زاوق مجھے جانے دیں پلیز وہ نظریں جھکائے معصومیت سے بولی تو اس کی اس معصومیت پر اسے ٹوٹ کر پیار آیا
ایسے مت کرو جان ورنہ میں خود ہی تو میں کس کرلوں گا
اور میری کس تمہاری کس طرح چُونی مونی کسی نہیں ہوگی ۔مکمل کس ہوگا جو ہوسکتا ہے تم برداشت نہ کر سکو
اب وہ مکمل اسے اپنی باہوں میں قید کر چکا تھا
زاوق پلیز وہ ہلکی سی مزاحمت کرتے ہوئے بولی لیکن آج سامنے والا مزاحمت کے موڈ میں نا تھا ۔
اس سے پہلے کہ وہ مزید مزاحمت کرتی وہ بہکے ہوئے انداز میں اس کے لبوں پر جھکا تھا
اور اس کا اندازہ وہی تھا ہمیشہ سے شدت والا احساس نے سختی سے اس کے شرٹ کے کالر کو پکڑا نہ جانے کتنی دیر یہ میٹھا لمس محسوس کرتے ہوئے تو پیچھے ہٹا ۔
احساس کے سامنے آنکھیں بند کی ہے تیز تیز سانس لے رہی تھی اس نے نرمی سے اس کے ماتھے کو چھوا
جاؤ آرام کرو شام کو ملتے ہیں ۔
وہ اس کے ماتھے کو چومتا فورا باہر نکل آیا ۔
❤
سرکنگ کا اصل نام سفیان مرزا ہے اور اس کا تعلق انڈیا سے ہے وہ یہاں پر صرف پاکستان کی تباہی کے لیے آیا تھا
نوجوان نسل کو تباہ کر دینا اس کا مقصد ہے وہ پچھلے چھ سال سے پاکستان میں رہ کر اندر ہی اندر سے پاکستان کی جڑیں کاٹ رہا ہے
کہنے کو مسلمان ہے لیکن کام انڈیا کے لئے کر رہا ہے ۔
اس کا تعلق کسی سیکریٹ ایجنسی سے نہیں بلکہ انڈیا میں بھی اس کا کام سمگلنگ تھا
یہاں تک کہ وہ دبئی اور سعودیہ میں لڑکیاں فروخت کرنے کا کام بھی کرتا ہے
اور سب سے اہم بات جو مجھے پتہ چلی ہے اس نے آپ کی بیوی کے لیے اپنا رشتہ بھی مانگا تھا آپ کی بیوی کے والد کا ایک مہینے سے ان سے ملنا جلنا ہے
اور وہ آپ کی وائف کے والد کو کافی پیسہ بھی دے چکا ہے اس کا مقصد آپ کی بیوی کے ذریعے آپ کو بلیک میل کرنا ہے
اور انہیں یقین ہے کہ آپ اپنی بیوی کے لئے کوئی بھی حد پار کر جائیں گے اسی لئے ان کا پہلا ٹارگیٹ حجاب اور زائم کا بیٹا موسی تھا
لیکن جب موسی کو کسی بھی طرح سے اٹھا نہیں پائے تو انہوں نے آپ کی وائف کے والد کو اپنی باتوں میں لگا لیا
اور اب تک وہ آپ کی وائف کے والد کو کافی زیادہ پیسے دے چکے ہیں اور رحمان ان کے لیے کچھ بھی کرنے کو تیار ہے
سر آپ کوشش کریں کہ رحمان کی ملاقات آپ کی وائف سے نہ ہو کیوں کہ اگر ایسا ہوا تو ہم بہت برے طریقے سے پھنس سکتے ہیں
اس کے خفیہ آدمی نے ساری خبر دی تھی جو اندر ہی اندر کنگ کے لیے کام کرتے ہوئے ان کی مدد کر رہا تھا
تمہیں پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے میری بیوی میرے گھر پے ہے اور وہاں میری اجازت کے بغیر کوئی نہیں جا سکتا ۔
اس نے بے فکر ہو کر فون بند کیا اس کے ذہن میں ایک بار رحمان کا خیال آیا
واچ مین رحمان صاحب کو اچھے سے جانتا تھا اگر رحمان صاحب گھر پر احساس سے ملنےکے لیے آتے ہیں تو وہ اندر جانے کی اجازت ضرور دے دے گا
اس نے فکر مندی سے جیب سے موبائل نکالتے ہوئے اپنے واچ مین کو فون کیا لیکن اس کا فون بند ہونے کی صورت میں
اس نے خود ہی گھر جانے کا فیصلہ کیا تھا ۔
کیوںکہ اسے پتا تھا رحمان پیسے کے لیے کوئی بھی حد پار کر جائے گا شاید اپنی بیٹی کی زندگی بھی مشکل میں ڈال دے گا اور اس وقت اس کے لئے یہ مشن بہت اہم تھا جو اپنی آخری سرحدوں کو چھو رہا تھا اس وقت تو احساس پر کوئی رسک نہیں لے سکتا تھا
❤
اس نے دروازہ کھولا تو سامنے بابا کو کھڑے دیکھا
ایک پل کے لئے اس کے چہرے پر کتنے ہی رنگ آئے تھے اس کا باپ اس سے ملنے کے لیے یہاں آیا تھا یہ کتنی خوشی کی بات تھی اس کے لئے
بیٹا چلو یہاں سے میرے ساتھ مجھے تم سے ایک بہت ضروری بات کرنی ہے بابا کافی زیادہ گھبرائے ہوئے لگ رہے تھے
کیا بات ہے بابا آپ اتنے پریشان کیوں ہیں اور کہاں لے کے جانا چاہتے ہیں مجھے ماماٹھیک تو ہیں احساس نے پریشانی سے کہا
ہاں بیٹا عائشہ بالکل ٹھیک ہے پر تم میرے ساتھ چلو مجھے تمہیں کچھ بتانا ہے ۔
بابا اس کا ہاتھ پکڑکرزبردستی اسے اپنے ساتھ لے جانے لگے
واچ مین نے راستے میں آ کر ان سے پوچھا کہ وہ کہاں جا رہے ہیں
میں اپنی بیٹی کو لے کر جا رہا ہوں ساری باتیں بعد میں بتاؤں گا فلحال میں اسے لے کر جا رہا ہوں وہ گھبرائے ہوئے لہجے میں بولیں
لیکن کہاں لے کے جا رہے ہیں یہ تو بتائیں وہ ان کے گھبرائے ہوئے لہجے کو دیکھ کر پریشانی سے بولا
میری بیٹی ہے میں لے کر جا رہا ہوں تم بیچ میں مت آوہٹو راستے سے وہ غصے سے بولے تو واچ مین پیچھے ہٹ گیا
ظاہر سی بات تھی وہ ان کی بیٹی تھی وہ انہیں روک نہیں سکتا تھا ۔اور وہ کوئی غیر نہیں تھے جیہں وہ جانتا نہ ہو وہ رحمان صاحب کو اچھے سے جانتا تھا
اسی لیے اس نے بھی زیادہ اصرار نہ کیا

–**–**–
جاری ہے
——
آپکو یہ ناول کیسا لگا؟
کمنٹس میں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Novels

Signup for Novels and get notified when we publish new Novel for free!




%d bloggers like this: