The Moon Of Lunar Night Novel by Bella Bukhari – Episode 12

0
دی مون آف لونر نائیٹ از بیلا بخاری – قسط نمبر 12

–**–**–

 

حورا اپنی ممی کے ساتھ بیٹھی ہوتی ھے تب فیروزے بہت سارے شاپنگ بیگز کے ساتھ انر داخل ہوتی ھے ۔

ہوگئ شاپنگ ۔۔۔۔؟؟؟
جی ممی ۔۔۔
دیکھ لوں کوئی چیز رہ تو نہیں گئی یہ نا ہوں پاڑٹی کے وقت تیار ہوتے وقت تمہیں اپنی بھولیں ہوئی چیزیں یاد آجائیں ۔۔۔

ممی میرے مطابق تو شاپنگ کمپلیٹ ہے باقی بعد میں دیکھا جائےگا ۔۔۔

بجو ۔۔۔۔
اب آپ کی طبعیت کیسی ہے ۔۔۔؟
حورا بیچاری پریشان ہوکر اس دیکھتی ہے کیونکہ اسکے منع کرنے کے باوجود اسنے ممی کے سامنے طبعیت کا پوچھا ہے ۔۔۔

کیا ہوا ہے حورا کو ۔۔۔۔؟؟
وہ فیروزے کو دیکھتی ہیں ۔۔

تم نے مجھے کیوں نہیں بتایا ۔۔
میں بھی کہوں حورا اتنی دیر تک نہیں سوتی آج اسکی طبعیت ڈل تھی ۔۔۔

حورا ۔۔۔میری بچی
کسی طبعیت ہے اب آپ کی۔۔۔
کیا ہوا ہے آپ کو۔۔۔۔۔؟،
روکو میں ابھی آپ کے پاپا کو کال کرتی ہوں ڈاکٹر کے پاس چلتے ہیں ۔

ریلیکس ممی ۔۔۔۔
کچھ نہیں ہوا مجھے میں ٹھیک ہو رات کو لیٹ سونے کی وجہ آنکھ دیر سے کھلی ۔۔۔
Now I m fine….

فیروزے کو تھپڑ مارتی ھے اب سنبھالوں ممی کو ۔ ۔۔۔

اوووہو ۔۔۔
ممی ڈارلنگ ۔۔۔۔
کچھ نہیں ہوا بجو کو آپ تو چھوٹی چھوٹی باتوں پر پریشان ہوجاتی ہیں ۔۔۔

ہمم ۔۔۔حورا ہاں میں سر ہلاتی ہے ۔۔۔

چلو اپنی شاپنگ دیکھاوں
حورا فیروزے کو کہتی ھے ۔۔۔

میں بہت تھک گئی ہوں بجو
بعد میں دیکھاوں گی پہلے فریش ہو جائو ۔۔۔
اوکے بیٹا ۔۔۔

رات کھانا کھانے کے بعد سب نیوز دیکھ رہے ہوتے ہیں جس میں بار بار ملک کے نئے ابھرتے ہوے سیاستدان ۔۔۔۔۔ظہان حیدر شاہ پر قاتلانہ حملے کے بارے میں بتایا جارہا ہوتا ھے ۔۔۔

حورا جو فیروزے کے ساتھ باتیں کررہی ہوتی ھے ۔۔۔
یہ خبر سن کر ٹی وی کی طرف متوجہ ہوتی ھے ۔۔۔

جہاں پہ ظہان کی تصویر کے ساتھ خبر دی جارہی تھی ۔۔۔

وہ حیران ہوکر اس تصویر کو دیکھ رہی ہوتی ہے کیونکہ یہ وہی چہرہ ہوتا ہے جو کل رات اسنے اتنے قریب سے دیکھا تھا ۔۔۔

وہ سرگوشی میں ظہان کا نام لیتی ھے ۔۔۔۔۔

فیروزے بھی اب اپنے پاپا سے ظہان کے بارے پوچھ رہی ہوتی ہے ۔

مگر حورا کو کوئ ہوش نہیں ہوتا وہ بس دیوانی سی ٹی وی پر اسکی چلتی ہوئی تصویر دیکھ رہی ہوتی ہے ۔۔۔

وہ سب آپس میں کیا بات کررہے ہوتے ہیں اسے کچھ پتہ نہیں ہوتا ۔

اسے صرف ظہان کا پتہ ہوتا ھے اور اسکے بارے میں خبر سن کر اسکا دل بے چین ہوجاتا ہے ۔۔۔
وہ جلدی سے اپنے روم میں چلی جاتی ھے ۔۔۔

حورا کے اچانک چلے جانے پر سب پریشان ہوجاتے ہیں سب کو پتہ ہے وہ اسطرح کی نیوز سے دور رہتی ہے وہ بہت جلد گھبرا جاتی ھے ۔۔۔۔

روم میں آتے ہی حورا کو پھر سے وہی پل یاد آتے ہیں جنہیں وہ مشکل سے بھلانے کی کوشش کررہی تھی اس خبر نے اسے پھر سے “ظہان ” کی یاد دلا دی ۔۔

ابھی وہ خود سے الجھی ہوئی ہوتی ھے کہ فیروزے روم میں انٹر ہوتی ھے ۔۔۔

بجو ۔۔۔۔
آپ ایسے اچانک چلی گئی آپ ٹھیک ہیں ۔۔۔؟؟؟
ابھی پاپا کو ممی کہہ رہی تھی انہوں نے نیوز چینل کیوں لگایا ۔۔
آپ اتنے دن اداس رہیں گی ۔

حورا خود کو سنبھالتی ہے اور فیروزے کی طرف دیکھتی ہے ۔۔۔

شکر ہے بجو ۔۔۔
آپ نارمل ہیں ۔

اس بات کا کیا مطلب ہے فیروزے ۔۔۔۔؟؟؟

کیا میں تمہیں نارمل نہیں لگ رہی ۔۔

وہ حورا کا دھیان بٹانے میں کامیاب ہوجاتی ھے ۔۔۔

ہاہاہاہاہاہا ۔۔۔۔
بجو ۔۔۔میں تو بس مذاق کر رہی تھی آپ نارمل ہیں بلکل ٹھیک ۔۔۔

جب تھوڑی دیر بعد حورا کو اسکی شرارت سمجھ آتی ھے وہ غصے سے فیروزے کو گھورتی ہے اور پھر دونوں ہسنے لگ جاتی ہیں ۔۔۔

وہ حورا کو ہگ کرتی ہے
آپ ہمیشہ ایسے ہی ہنستی مسکراتی رہا کریں ۔۔۔

بجو آپ نے ظہان حیدر شاہ کو دیکھا تھا ۔۔۔
اف۔۔۔۔۔
کیا پرسنالٹی ہے بندے کی
میں تو فین ہوگئی انکی ۔۔۔

آپ کو پتہ ہے اگر میرا کوئی بھائی ہوتا تو وہ ہوبہو ان کے جیسا ہوتا ۔۔۔۔

۔۔۔حورا کے دل کی حالت جانے بغیر فیروزے نان سٹاپ شروع ہو جاتی ہے ۔۔۔

کوئی بات نہیں بھائی نہیں تو “جیجو ” تو بن سکتے ہیں ۔۔۔۔

ویسے بھی آپ اس دن اپنے لائف پارٹنر کے بارے میں جیسا بتا رہی تھی ظہان حیدر شاہ ان خصوصیات پر پورا اتریں گے ۔۔۔

میں بھی نہ یہاں آکر باتوں میں لگ گئی ۔۔۔
اوکے گڈنائٹ بجو ۔۔۔۔
کل پارٹی کی تیاری بھی کرنی ھے ۔

حورا پھر سے ظہان کے بارے میں سوچنا شروع کردیتی ہے ظہان کو سوچتے وہ نیند کی وادیوں میں میں چلی جاتی ھے ۔

❤️❤️❤️❤️❤️❤️❤️❤️

ڈاکٹر ظہان کا چیک اپ کرنے کے لیئے آتا ھے ۔۔۔
اب آپ کیسا فیل کررہے ہیں ۔۔۔؟؟؟
Much better….

سیکندر شاہ اس وقت بھی ظہان کے ساتھ روم میں ہوتے ہیں ۔۔۔

دو دن بعد انہیں ڈسچارج کردیں گے لیکن آپ کو انکا خاص خیال رکھنا پڑےگا تاکہ ٹانکے کھل نہ جائے ۔۔
Ok…..Doctor

سکندر شاہ جواب دیتے ہیں ۔۔۔

ڈاکٹر کے جانے کے بعد مکرم روم میں آتا ھے ۔
سائیں ۔۔۔۔!!
آپ سے بہت اہم بات کرنی ھے ۔۔
بولو ۔۔۔۔

ہر نیوز چینل پر چھوٹے سائیں ۔۔۔پر قاتلانہ حملے کی خبر دی جارہی ھے ۔
آپکے حکم کے مطابق پریس کانفرنس کا کا انتظام کروادیا ہے ۔۔
جب آپ کہیں گے کانفرنس شروع کی جائے گی ۔۔۔

ہمم ۔۔۔
بہت خوب ۔۔۔مکرم

سائیں ۔۔۔۔
ہر نیوز چینل والے یہ بات جاننے کے لیئے بےتاب ہیں کہ ظہان حیدر شاہ پر کس نے حملہ کروایا ہے ۔۔۔اور کیوں کیا ہے ۔۔۔؟؟؟

تب ظہان بولتا ہے ۔۔۔
بابا سائیں ۔۔ !!
مجھے معلوم ہے اس حملے کے پیچھے کسکا ہاتھ ہے ۔۔۔

جانتا تو میں بھی ہوں ظہان بس تمہارے ہوش میں آنے کا انتظار تھا ۔۔
“دراب خان” نے حملہ کروایا ھے
تم پہ ۔ ۔

جی ۔۔۔
آپ ٹھیک کہہ رہے ہیں بابا سائیں ۔۔۔
اسنے حملہ کروایا ھے ۔۔

حملہ کرکے اسنے بہت بڑی غلطی کردی ہے اب غلطی کی ہے تو خمیازہ بھگتنا پڑے گا ۔۔۔

مکرم اس دوران خاموش کھڑا رہتا ھے
شام کو پریس کانفرنس کریں گے آخر دراب خان کو سزا بھی تو دینی ھے دھیان رہے ہر نیوز چینل کے نمائندے پریس کانفرنس میں شامل ہوں ۔۔۔۔
جو حکم آپ کا سائیں!
ظہان میں کچھ دیر کیلئے حویلی جارہا ہوں تمہاری موم کافی ٹینس تھیں تمہاری صحت کی وجہ سے اب تک ناجانے کتنی کالز کرچکی ہیں ۔۔۔۔
ٹھیک ھے بابا سائیں آپ جائیں مکرم ھے میرے ساتھ ۔۔۔۔۔
مکرم _
جی شاہ سائیں ۔۔۔۔
اب کوئی غلطی نہیں ہونی چاھیے تم ظہان کے ساتھ سائے کی طرح رہنا سمجھے؟
جی سائیں جیساآپکا حکم!

○○○○
چھوٹے سائیں!۔۔۔۔۔!!!!
ظہان جو حورا کے خیالوں میں ہوتا ھے مکرم کے بولنے پر متوجہ ہوتا ھے ۔
ہاں بولو کیا بات ھے ۔۔۔۔؟
چھوٹے شاہ سائیں وہ آپکے دوست کی کال ھے
آپ نے بات کرنی ھے تو بتائیں نہیں تو میں منع کر دو ۔۔۔۔؟
لائوادھر دو ۔۔۔
ابھی ظہان نے پریس بٹن دبایا ہوتا ھے کہ دوسری طرف سے وہ نان سٹاپ شروع ہوجاتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔
ظہان کے بچے
You bahster you rascal how dare you to take this risk ?
You bloody hell you idiot…….. youuuu
ابھی وہ کچھ اور کہتا کہ ظہان نے اسے سٹاپ کردیا
Calm down bro
It’s not a big deal now I’m fine so WHY you are shouted.
Cool down bro
Just cool……..!!!!!!!!

میں کول ہوجاو ہاں میں تیرے ساتھ اتنا سب ہوگیا اور تو کہہ رہا ہے میں کول ہوں سالے ایک تو تونے مجھے انفارم نہیں کیا یہ تو آنٹی نے مجھے انفارم کردیا اور اوپر سے لاڈ صاحب کہہ رہے ہیں کہ کیا ہوا ایم فائن
ہاہاہاہاہاہا
واٹ آ جوک کہ اتنی بڑی بات ہوگئی ھے اور میں کول ہوجاو تمہیں تو میری فکر ہی نہیں ھے تو نہ مجھے اپنا دوست ہی نہیں مانتا تب ہی مجھے اتنی بڑی بات سے بے خبر رکھا تمہیں پتا بھی ھے اگر تجھے کچھ ہوجاتا ت تو میرا ہا ۔۔۔۔۔
میرا کیا ہوتا یہ سب کہنے کے ساتھ ہی اسکا گلا رندھ جاتا ہے
ظہان یہ سب فیل کررہا ہوتا ہے لیکن وہ خاموشریتا ھے کیونکہ وہ چاہتا تھا کہ اسکا جگری یار اپنا سارا غصہ، اپنے دل کی بھڑاس نکال دے ۔۔۔
جب وہ بول بول کہ تھک جاتا ہے تب ظہان بولتا ہے

یار جگر ایسی بات نہیں ہے تو میرا اکلوتا بھائی میرا یار ھے اور میں تجھے کیسے بھول سکتا ہوں میں تو بستجھے پریشان نہیں کرنا چاہتا تھا اور مما جانی کی بھی حد ھے منع کرنے کے باوجود بھی تمہیں بتا دیا مگر وہ اپنے دوسرے بیٹے کے ساتھ کوئی بات شئر نہ کریں ایسا کیسے ہوسکتا ہے ۔۔۔۔
اینی وے اب تم مجھے ڈانٹتے ہی رہو گے یا میری خیریت بھی پوچھو گے ۔۔۔۔؟
کیوں ۔۔۔
نہ کیوں پوچھوں تیری خیریت میں تجھ سے ناراض ہوں ۔۔۔۔
اچھاااااااااا تو ایسی بات جا پھر میں کال ڈسکنکٹ کرتا ہوں ظہان بھی دھمکی دیتا ہے جو کہ کام کرجاتی ھے ۔۔۔
اوئے ئے ئے ئے ئے _______
خبر دار جو تو نے کال کٹ کی ورنہ مجھ سے برا کوئی نہیں ہوگا $
اب بتا کیسا ھے ۔۔۔؟
طبعیت کیسی ھے ۔۔۔۔۔؟
کیا حال چال ہیں ۔۔۔؟
کہیں زیادہ چوٹ تو نہیں آئی ۔؟
ہاہاہاہاہاہا ۔۔۔۔۔
ہاہاہاہاہاہا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ یار تو بھی نہ
Yar I’m fine don’t worry about me my jigar.!

ہمممممم گڈ پھر ملتے ہیں میں کچھ دیر میں ہاسپٹل پہنچتا ہوں اور میں خود دیکھ لوں گا کہ تو کیسا ھے کیونکہ مجھے اب تم پر زرا بھی بھروسہ نہیں ۔۔۔
Ok then byee
See you soon mr.idiot___

ہاہاہاہاہاہا
Ok bayeee byee my jigar

______ ♡♡♡♡♡♡_____

–**–**–
جاری ہے
——
آپکو یہ ناول کیسا لگا؟
کمنٹس میں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Novels

Signup for Novels and get notified when we publish new Novel for free!




%d bloggers like this: