The Moon Of Lunar Night Novel by Bella Bukhari – Episode 20

0
دی مون آف لونر نائیٹ از بیلا بخاری – قسط نمبر 20

–**–**–

 

Nikha Special ❤️❤️❤️

فیروزے ۔۔۔
آپ کی ممی کہاں ہیں ۔۔؟؟
پتہ نہیں پاپا
جائیں انہیں میرے پاس بھجیے ۔
پاپا مجھے آپ سے بات کرنی ہے ۔۔۔
ابھی نہیں بیٹا میرے پاس ٹائم نہیں ھے ۔۔بعد میں جو بھی بات کرنی ھے کر لینا
اوکے پاپا ۔۔۔

جی زوہیب صاحب اپنے مجھے کیوں بلایا ۔۔۔
وہ حورا کے سسر کی کال آئی تھی کہ وہ مختصر لوگوں کے ساتھ فنکشن کے لیئے آرہے ہیں تو آپ دیکھ لیں سب انتظامات ٹھیک ہیں اگر کوئی کمی رہ گئی ہے تو بتا دیں ۔

آپ فکر نہ کریں سب کچھ ٹھیک ھے آپ پلیز جاکر تیار ہوں ایسے ہی گھوم رہے ہیں مہمان کسی بھی وقت آنے والے ہوگے ۔

اچھا بیگم صاحبہ جیسے آپ کا حکم ۔۔۔
آپ بھی نہ کہیں بھی شروع ہوجاتے ہیں بس موقعہ چاہیے آپ کو ۔۔۔
ارے بیگم آپ کہا جارہی ہیں ۔۔؟؟؟
میں ذرا حورا کو دیکھ لوں ۔۔
ٹھیک ھے ۔۔۔بیگم

حورا ۔۔۔۔۔
وہ ابھی تک ویسے ہی بیٹھی تھی ۔۔۔
حورا ۔۔۔۔بیٹا آپ ابھی تک ویسے ہی بیٹھی ہیں صبح والے حلیے میں ۔۔۔
حورا آپ میری بات سن رہی ہیں ۔

مگر وہ کوئی جواب نہیں دیتی

رخسانہ بیگم اسکے پاس جاتی ہیں اور اپنی بیٹی کی ایسی حالت دیکھ کر انکا دل مٹھی میں آجاتا ھے ۔

حورا انکے گلے لگتی اور بہت زیادہ رونا شروع کردیتی ھے
حورا میری بچی کیا ہوا ہے آپ کو ۔۔۔؟؟؟
وہ اسکے آنسو صاف کرتی ہیں ۔
حورا کیا آپ اس رشتہ سے خوش نہیں ہیں ۔۔۔؟،
جواب دو حورا ۔۔۔
میرا دل بہت گھبرا ریا ہے کچھ تو بولوں ۔۔۔۔۔

وہ جو اپنی محبت نہ ملنے کے غم میں مبتلا تھی انکی بات سے سکتے میں آجاتی ھے ۔۔۔

حورا تمہاری خاموشی سے مجھے ڈر لگ رہا ہے ۔۔

حورا اپنی ممی کی طرف دیکھتیں ہے اور انکی ایسی حالت دیکھ کر شرمندہ ہوگئی تھی
میں خوش ہوں ممی اس رشتہ سے آپ پریشان نہ ہو ۔۔۔
تو پھر تم رو کیوں رہی تھی میری بچی ۔۔۔؟؟

وہ ۔۔وہ آپ سب سے دور چلی جاوگی اس لیئے مجھے بہت رونا آرہا ہے اور حورا کسی ڈرے ہوئے چھوٹے بچہ کی طرح ان کی آغوش میں چھپ گئی تھی

مجھے آپ سب سے دور نہیں جانا ممی ۔۔۔

میری جان ۔۔۔ادھر دیکھو میری طرف ۔۔۔

“یہ تو زمانے کا دستور ہے جو صدیوں سے چلا آرہا ھے ہر لڑکی شادی کے بعد اپنے والدین،بہن بھائی کو چھوڑ کر اپنے شوہر کے گھر رخصت ہوکر جاتی ھے اور ہر لڑکی کے یہ پل بہت مشکل ہوتے ہیں ۔اس لیئے ہر لڑکی کو بہادر بننا پڑتا ہے ۔”

اچھا آپ کو ایک بات بتاو ۔۔۔
حورا ہاں میں سر ہلاتی ہے

جب میرا نکاح ہونے والا تھا تو میری حالت بھی آپ کی طرح تھی میں بھی بہت روئی تھی مجھے ڈر لگ رہا تھا جس گھر میں جارہی ہوں وہ پتا نہیں کیسے ہونگےاور خاص طور پر میرا جیون ساتھی کیسا ہوگا کیا میرا اور انکا مزاج ایک جیسا ہوگا ۔۔ سب سے زیادہ دکھ اپنے والدین اپنی فیملی سے دور جانے کا تھا

مگر ممی ۔۔۔
پاپا تو بہت اچھے ہیں پھر آپ کیوں ایسا سوچ رہی تھی ۔۔۔

ہاں آپ کے پاپا بہت اچھے ہیں مگر تب نہ تو میں نے انہیں دیکھا تھا اور نہ ہی کوئی بات ہوئی تھی ۔۔۔

حورا میری بیٹی تو ہے ہی اتنی پیاری ۔۔کہ سب آپ سے بہت پیار کریں گے ۔۔۔۔

چلو اب جلدی سے اٹھو اور شاور لوں ۔۔۔پھر آپ کو تیار بھی تو ہونا ہے ۔۔۔

اوکے ممی ۔۔۔
میری جان میری پیاری بیٹی اور حورا کو ماتھے پہ پیار کرتی ہیں

میں بھی بس تیار ہونے جارہی ہوں جب واپس آو تو مجھے آپ فریش لگے اوکے بیٹا ۔۔۔
جی ممی ۔۔۔

حورا کھڑکی کی طرف جاتی ھے اور باہر آسمان کی طرف دیکھتی ہے ۔۔

کوئی طوفان آنے والا ھے ۔۔۔
کیوں فضا پر سکوت طاری ھے ۔۔۔

وہ نیچے سب کو کام کرتے ہوئے دیکھ رہی تھی ۔۔
پھر شاور لینے چلی جاتی ہے ۔

___ ___ ___ ___ ___ ___ ___

فیروزے کو پھر سے ڈانٹ پرتی ہے وہ ابھی تک تیار نہیں ہوئی تھی رخسانہ بیگم اسے فورا تیار ہونے کا حکم دیتی ہیں اور وہ بھاگ کر اپنے روم میں جاتی ھے

اس کے لیئے چار پانچ خوبصورت سے ڈریس رکھے تھے وہ خوش ہوکر ان تمام ڈریسز کو دیکھتی ھے سارے ہی پیارے تھے اور ڈریس چوز کرنے میں اسے مشکل ہورہی تھی ۔ آخر ایک ڈریس کو اٹھا کر مرر میں دیکھتی ہے پرفیکٹ بس یہی پہنوں گی ۔۔

فیروزے جلدی سے تیار ہونے چلی جاتی ہے اور میک اپ کرنے کے بعد وہ خود پر طائرانہ نظر ڈالتی ھے بالوں کو رول کرتی ہے اورایک ایک لٹ ایک سائڈ پر نکالتی ہے ۔۔۔

رخسانہ بیگم اسے پکارتی ہوئی کمرے کی طرف آرہی تھی
اوووو نو ۔۔۔۔
فیروزے جلدی کرو ورنہ آج تمہیں ممی سے کوئی نہیں بچا پائے گا ۔
جلدی سے ائیر رنگز پہنتی ھے

رخسانہ بیگم جو اسے ڈانٹنے والی تھی اسے تیار دیکھ کر خاموش ہوجاتی ہیں ۔

ماشااللہ ۔۔آج تو میری بیٹی بہت پیاری لگ رہی ہیں خوبصورت پری ۔۔۔
ممی خیریت تو ہے نہ آج آپ میری اتنی ذیادہ تعریف کررہی ہیں ۔آپ کی طبعیت تو ٹھیک ہے نا ۔۔۔۔
مگر جب اسے اسکی ممی گھورتی ہیں تو اسے بریک لگتی ہے اور پھر دونوں ہنستی ہیں ۔

تو کیوں نہ کرو تعریف آج تم بہت پیاری لگ رہی ہوں ۔۔

Ooooooo
Thank you Darling..!!

ویسے ممی آج تو آپ بھی قیامت لگ رہی ہیں پاپا تو بس دیکھتے رہ جائے گے ۔۔۔
اوووو میری کیوٹ ڈارلنگ تو پاپا کے نام پر بلش کررہی ہیں ۔۔۔

لیں جی اب پڑا اسے ایک اور تھپڑ ۔۔۔۔
اف ممی اب کیوں ماررہی ہیں
میں نے تو آپ کی تعریف کی ہے کیا کچھ غلط کہہ دیا ۔۔۔

تم بے وقوف سے کون مقابلہ کرسکتا ہے ۔۔

حورا کے پاس جاو ۔۔
شوز پہن لوں بس پھر جاتی ہوں ان کے پاس

ٹھیک ہے میں زرا تمہارے پاپا کو دیکھ لوں کب سے تیار ہونے کا کہا ہے مجال ہے جو وہ میری بات سنیں ۔۔۔

تو ممی آپ ان پر سختی کریں ۔۔۔

جی بیٹا ضرور آپ کے مشورے پر عمل کرو گی ۔۔۔پاگل لڑکی

فیروزے کی درگت بننے پر وہ سٹرینجر ہنس رہا تھا اور پھر وہ اسے کال کرتا ھے ۔۔۔
نمبر دیکھ کر فیروزے منہ پر بارہ بج جاتےہیں ۔۔۔

Helo ‘ mi corazon late `

ہیلو مائی ہارٹ بیٹ “

اف اب یہ کیا کہہ رہا ھے اللہ جی ۔۔۔۔۔😮

یہ “”جن “” اسے کوئی اور کام نہیں ہے ہر وقت میرے پیچھے پڑا رہتا ھے اس دنیا میں اور بھی تو لوگ ہیں انہیں کرے تنگ کیوں میرا خون پینا چاھتا ھے ۔ویسے تو یہ عامل ، پیر جنوں کو قابو کر لیتے ہیں اسے کیوں نہیں قابو کرکے کسی بوتل میں بند بند کرتے میری تو جان چھوٹتی ۔۔۔۔

پھر سے کال آتی ھے ۔۔۔

میں نہیں اٹھاو گی ۔۔
جلدی کرو فیروزے کہیں وہ جن خود نا آجائے اور تیزی سے وہ شوز پہنتی ہےاور حورا کے کمرے کی طرف بھاگتی ھے ۔

Hahaha
Te Amo

ہاہاہاہاہاہا
مائی لو

💞💞💞💞💞

وہ جیسے ہی روم میں جاتی ھے بیوٹیشن حورا کو تیار کررہی تھی ۔
بجو کتنا خوبصورت ڈریس ہے آپ کا اور اس پنک کلر آپ پنک فیری لگ رہی ہیں ۔۔

حورا بس مسکراتی ہے

میم آپ اپنے آپ کو مرر میں ایک بار دیکھ تولیں ۔۔۔جیسے آپ نے کہا بلکل لائٹ میک اپ کیا ہے ۔

وہ اپنی پلکوں کو اوپر اٹھاتی ھے اور واقعی میں فیروزے کے مطابق بہت پیاری لگ رہی تھی مگر اسکی آنکھوں میں اداسی تھی جو آسکے حسن کو مزید نکھار رہی تھی ۔۔

پھر بیوٹیشن چلی جاتی ھے ۔

بجو مجھے تو دیکھیں میں کیسی لگ رہی ہوں ۔۔۔؟؟

بہت بہت ۔۔۔۔کیوٹ لگ رہی ہوں

Thanks Bjjo …

میں ممی کے پاس جارہی ہوں انہیں کوئی کام ہوں مجھ سے

اوکے ۔۔۔

حورا گہرا سانس لیتی ھے اور اپنی محبت کو الودع کہتی ھے

” الودع اے محبت ”

رخصت ہوئی خوشیاں
ہوئے اب غم مبارک
یادوں کے سائے میں
کٹھن ھے سفر مگر
قدم قدم اذیتیں ہیں
وقت ہوا ہے بچھڑنے کا
الودع اے محبت
الودع اے محبت

(از خود بیلا بخاری )

So guy’s kisi lgi epi
Give ur feedback
Don’t forget to like and share my page

 

Nikha Special ❤️❤️❤️

نکاح سے ایک دن پہلے:

ظہان جیسے ہی حورا سے ملکر واپس آتاہے فارب کو اچانک کمرے میں دیکھ کر گھبرا جاتا ھے ۔۔۔

تو کیوں بھٹکی ہوئی آتما کی طرح گھوم پھر رہا ھے فارب ۔۔۔۔

پہلے تم بتاو اتنی رات کو کہاں گئے تھے وہ بھی گارڈز کے بغیر ۔۔۔؟؟؟

امپورٹنٹ کام تھا یار ۔۔۔۔

اچھا ایسا کونسا کام تھا ذرا مجھے بھی تو پتہ چلے ۔۔۔؟؟

یار۔۔۔۔
میں پہلے ہی بہت تھکا ہوا ہوں اب سوال نہ پوچھ تو بہتر ہوگا ۔۔۔

نہ بتاو صبح اپنے بابا سائیں کو جواب دینا ۔
۔اوکے گڈنائٹ
I’m going…..

اچھا روک ۔۔۔۔
بتاتا ہوں ہر بار دھمکایا نہ کر

جگر ایسا کرنے پر تو ہی مجھے مجبور کرتا ھے ۔

میں فریش ہوجاو پھر بات کریں گے جب ظہان کافی دیر تک نہیں آتا تو فارب باتھروم کا دروازہ ناک کرتا ھے ۔۔

ظہان اب آ بھی جا مجھے پتہ ہے تو جان بوجھ کر ایسا کررہا ھے میں بھی جانے والا نہیں ۔۔۔

ظہان بیٹا یہ بلا ایسے ٹلنے والی نہیں وہ جل کر کہتا ہے آرہا ہوں صبر کر ۔۔۔

ظہان بیڈ پر آکے لیٹ جاتا ھے جہاں فارب پہلے سے لیٹا ہواتھا

چل جگر اب شروع ہو جا ۔۔۔

پہلے تم بتاو آجکل بڑی نزدیکیاں بڑھ رہی ہیں زوئی کے ساتھ ۔۔۔خیر تو ھے نہ کہیں محبت کا چکر تو نہیں ۔۔۔

ظہان میرا موڈ بہت اچھا اس زوئی کا نام نہ لے زہر لگتی ھے وہ مجھے عجیب چپکو لڑکی ھے ۔

اچھا تو پھر آج کس خوشی میں اسکی خدمتیں کی جارہی تھی ۔۔۔؟؟؟

تم میری جاسوسی کرتے ہوں ۔۔۔

نہیں تمہاری فکر ہوتی ھے اس لیئے تم کہاں جاتے ہو کیا کرتے ہوں سب کی رپورٹ مجھے ملتی رہتی ھے ۔۔۔۔۔

تم اب باتوں کو گھماو مت سچ بتا کہاں گئے تھے ورنہ ماما سے کہہ کر تمہارا حویلی سے ظاہر نکلنا ختم کروا دوں گا ۔۔

میں بھی مماجانی کو پھر زوئی سے ملاو گا اس لیئے مجھے دھمکا مت ۔۔۔۔

تو ایسا کچھ نہیں کرے گا ظہان ورنہ میں ناراض ہوجاو گا ۔۔۔
اچھا سن

اینجل سے ملنے گیا تھا ۔۔۔
کتنے دن ہوگئے تھے اسے دیکھا نہیں تھا اور اس حملے کے بعد سے بابا سائیں نے سیکیورٹی بڑھا دی تھیں تو آج سب کو چکما دے کر اینجل سے ملنے گیا تھا اور واپسی پر تو” بلا ” کی صورت میں میرے کمرے میں تھا ۔

اووووو تو موصوف بھابھی سے ملنے گئے تھے لگتا ھے محبت ہوگئی ہے ۔

میں عشق کرتا ہوں اپنی اینجل سے اوریہ بڑھتا جارہا ھے ۔اینجل کا ذکر کرتے ہوئے اسکے چہرے پر جو خوشی تھی فارب نے اس خوشی کے قائم رہنے کی دعا مانگی تھی ۔

ہہم زرا سنبھل کر جگر وہ مشہور شعر تو سنا ہوگا ۔۔۔۔

یہ عشق نہیں آسان بس اتنا سمجھ لیجیئے ۔۔۔۔
اک آگ کا دریا ہے اور ڈوب کے جانا ہے ۔۔۔۔۔

خیریت تو ہے نہ مسڑ فارب شاعر بنے ہوئے کہیں آپ کو تو یہ عشق والی بیماری نہیں لگ گئی ۔۔۔۔؟؟؟
جو ایسے وارننگ والے شعر سنا رہا ھے ۔

یار۔۔۔۔۔
میں تو ایسے سنا دیا اب تو غلط مطلب نہ نکال ۔۔۔ ایسا کوئی ہے ہی نہیں جس سے مجھے عشق ہوں ۔۔۔

زوئ بھی نہیں ۔۔۔

اچھا اچھا اینگری کیوں ہورہا زوئی نہیں تو کسی سے ہوگا عشق ۔۔۔

ماما کو کب بتارہے ہو بھابھی کے بارے میں ان سے کہو گا جلدی سے رشتہ لے کر جائیں اس سے پہلے ہمارا لڑکا مجنوں نہ بن جائے ۔

کل بتاو گا اور پھر وہ باتیں کرتے کرتے سوجاتے ہیں ۔

ظہان کی نیند دروازے پر ہونے والی دستک سے ختم ہوتی ھے
وہ دروازہ کھولتا ھے…
آیت کیا ہوا ۔۔۔
Is everything alright..??

بھائی وہ ماما پاپا آپ دونوں بلا رہے ہیں کوئی امپورٹنٹ بات کرنی ھے ۔۔فارب بھیا کو بھی لیتے آئے جلدی ۔۔۔
اوکے ہم آرہے ہیں ۔

فارب ۔۔۔۔
اٹھو ۔۔۔۔
بابا سائیں بے بلایا ھے ۔

ظہان تو چلا جا مجھے سونے دے ۔۔۔اور وہ منہ پر تکیہ رکھ کر سوجاتا ھے ۔

تو ایسے نہیں اٹھے گا رک ابھی بتاتا ہوں ۔۔۔ ظہان اسکے منہ پر پانی ڈالتا ھے ۔۔

یار کیوں میری نیند کا دشمن بنا ہوا ھے سونے دے میرے بھائی سونے دے پلیز ۔۔۔۔

اوکے مماجانی کو کہہ دوں گا تو صرف نام کا بیٹا ھے اور کچھ نہیں ۔۔۔۔
مجھے تو تیری بیوی پر افسوس ہوتا ھے تیرے جیسے سست انسان کے ساتھ اسکی قسمت پھوٹے گی ۔۔

فارب جلدی سے اٹھ کر باتھروم میں چلا جاتا ہے ظہان تو اس کی چالاکی دیکھ رہا تھا ۔

Yar Farib that’s not fair

جگر جب تک تو میری ہونے والی بیوی کی قسمت پر افسوس کر تب تک فریش ہوکر آتا ہوں ۔
وہ ناشتے کی ٹیبل پر جاتے ہیں اور سب کو سلام کرتے ہیں ۔

ماما آج شام کو ہم واپس جارہے ہیں پاپا کی بھی کال آئی ھے تو واپس جانا ہوگا ۔
آیت اور شیری اداس ہوجاتے ہیں

بھیا مجھے ابھی کچھ اور دن ماما کے پاس رہنا ھے ۔

فارب کچھ دن تک میں انہیں چھوڑ جاوگا ابھی فیری کو اور شیری کو یہاں رہنے دو۔۔۔

تب سکندر شاہ بولتے ہیں

کوئی کہیں نہیں جائے گا کل شام کو ظہان کا نکاح ہے اور اگلے ہفتے شادی تو آپ سب تب تک یہیں رہیں گے ۔۔وہ اپنی بات مکمل کرنے بعد چلے جاتے ہیں ۔

ظہان پر تو یہ خبر سن کر جیسے قیامت آجاتی ھے ۔

ماما ظہان بھائی کی شادی وہ بھی اتنی جلدی آیت شوک کی سی کیفیت میں پوچھتی ھے
سوائے ظہان اور فارب کے سب نکاح کا سن کر خوش ہوتےہیں ۔

فارب ۔۔۔
میں چاہتی ہوں بہو کے سارے ڈریسز تم ڈیزائن کرواو کسی اچھے ڈیزائنر سے ۔۔۔
اوکے ماما

ظہان اچانک اٹھتا ہے اور اپنے کمرے میں جاکر بند ہوجاتا ھے
حیات بیگم بھی پریشان ہوکر اس کے پیچھے جاتی ہیں ۔

ظہان ۔۔۔
میری جان ۔۔۔
میری بات تو سنو ۔۔۔

مما پلیز میں فلحال کسی سے بات نہیں کرنا چاہتا مجھے اکیلا چھوڑ دیں ۔

فارب ساری صورتحال دیکھ رہا تھا وہ بھاگ کر حیات بیگم کے پاس جاتا ھے ۔۔
ماما آپ ٹھیک تو ہیں
کمرے میں چلیں ۔۔۔۔

فارب ۔۔۔
وہ ظہان میری بات نہیں سن رہا اسکے بابا سائیں نے اسکا رشتہ بہت پہلے طے کردیا تھا میں اسےبتانے والی تھی مگر اس پر حملہ کیا گیا تھا اسکی طبعیت خراب نہ ہوجائے میں نے نہیں بتایا ۔۔۔
کیا وہ کسی اور کو پسند کرتا ہے ۔۔۔؟؟؟
اگر ایسی بات ہے تو پھر کیا ہوگا شاہ جی تو زبان دے چکے ہیں اور انہوں نے کہا ہے انکا بیٹا انکی بات مانے گا ۔

ظہان جو اپنی مما جانی کے پاس آیا تھا انہیں منانے وہ ساری باتیں سن لیتا ھے اور دبے قدموں سے واپس چلا جاتا ھے ۔

ماما آپ پریشان مت ہو ایسا کچھ نہیں ہے ۔
تم سچ کہہ رہے ہو فارب ۔۔۔؟
جی ماما آپ پانی پیئے اور ریلیکس کرے ۔
نکاح کی تیاری بھی تو کرنی ھے ۔

حیات بیگم کو سنبھالنے کے بعد وہ ظہان کے پاس جاتا ہے اور اسکو اجڑی ہوئی حالت میں دیکھ کر فارب کا دل دکھتا ھے ۔

ظہان ۔۔۔۔
جگر یہ کیا حالت بنائی ہوئی ھے تم نے ۔۔۔۔؟؟؟

فارب ۔۔
ہماری محبت کو میری ہی نظر لگ گئی دیکھو ہم ملنے سے پہلے بچھڑ گئے میں کتنا خوش تھا آج مماجانی کو اینجل کے بارے میں بتانے والا تھا مگر ایسا نہ ہو سکا ۔

اینجل مجھ سے بہت دور چلی گئی ۔۔۔

میں ۔۔۔میں کیسے کسی اور کو اپنی زندگی میں شامل کرسکتا ہوں ۔
میں کیسے کسی اور کے ساتھ شادی کرسکتا ہوں ۔

فارب مجھ سے یہ سب برداشت نہیں ہورہا ۔۔۔
میں اینجل کے بغیر زندہ نہیں رہ پاو گا ۔۔۔۔

میں بے بس ہوں کچھ نہیں کرسکتا ۔۔۔

ظہان میری طرف دیکھ میری بات سن۔۔۔۔

ظہان اپنی آنکھیں اٹھاتا ھے جن میں زندگی کی کوئی رمق باقی نہ تھی ۔۔۔

فارب سوچ رہا تھا کن الفاظ میں اسے تسلی دے ۔

فارب کچھ کر ایسا نہ ہونے دے
تو میرا بھائی ہے نہ میری تکلیف تجھے کیوں نہیں دیکھائی دے رہی ۔۔۔

ظہان ۔۔۔۔

نہیں تم بھی کچھ نہیں کرسکتے تم جاو میرے کمرے سے ۔۔۔

ظہان میں تجھے ایسی حالت میں نہیں چھوڑ سکتا ۔۔۔

نہیں جاو میرے کمرے سے وہ فارب کو دھکے مار کر نکالتا ھے

میری بات تو سن۔۔۔۔۔

پریشان مت ہو میں خودکشی نہیں کروں گا بابا سائیں نے جو حکم دیاھے وہ پورا ہوگا تو بے فکر ہوجا اور نکاح کی تیاری شروع کرو ۔۔

مگر ۔۔۔ظہان

ہوا کے دوش پہ رکھے ہوئے چراغ ہیں ہم
جو بجھ گئے تو ہوا سے شکایت کیسی 💔

اور پھر
وہ دروازہ بند کردیتا ھے

صبح سے شام ہوجاتی ھے مگر ظہان ویسے ہیں ویران حالت میں بیٹھا رہتا ھے ۔

پھر نکاح کا دن بھی آجاتا ھے اور ظہان نارملی بی ہیو کرتا ھے اور وہ لڑکی والوں کی طرف روانہ ہوجائے ہیں ۔

___ ___ ___ ___ ___ ___ __

 

فیروزے آپ نے تمام مہمانوں پر پھولوں کی پتیاں ڈالنی ہیں ۔

ممی مجھ سے یہ فضول کام نہیں ہوگا ۔۔۔

کیا مطلب ۔۔۔؟؟؟

ممی آپ خود سوچے کتنا عجیب لگے گا کہ میں ان پر پھول ڈالوں ۔۔۔نو وے

اچھا تم چاہتی ہو مہمانوں کے سامنے تمہاری عزت افزائی کی جائے ۔۔۔

اف۔۔۔۔۔۔
ممی😓
ممی صرف دولہا بھائی پر پھولوں کی پتیاں ڈالوں گی اور کسی پر نہیں ۔۔۔

فیروزے ۔۔۔۔۔۔
Ok
Ok darling as you wish 😘

جیسا آپ کہیں گی ویسا ہی کروں گی پلیز اب غصہ تو نہ کریں ۔

رخسانہ بیگم آجائیں ۔۔۔لڑکے والے آگئے ہیں
جی آرہی ہوں ۔۔۔فیروزے بھی ان کے ساتھ جاتی ہے تاکہ گیسٹس کو ویلکم کرے ۔

سب سے پہلے دولہا کے ماں باپ انٹر ہوتےہیں اور آپس میں ایک دوسرے کا انٹرو کرواتے ہیں ۔

پھر کافی دیر بعد دولہا اپنے دوستوں کے ساتھ انٹر ہوتا ھے ۔
اس نے سفید رنگ کا سوٹ پہنا ہوا تھا ساتھ میں واسکٹ پہن کر وہ کسی ریاست کے شہزادے سے کم نہیں لگ رہا تھا ۔

دولہا کو دیکھ کر فیروزے کی آنکھیں حیرت سے کھل جاتی ہیں اور پھر وہ خود پر کنٹرول نہیں رکھ پاتی اور اسکے قریب جاکر کہتی ھے ۔۔۔۔”بھائی” ۔۔۔۔۔
اور سب فیروزے کو دیکھنے لگ جاتے ہیں ۔

دولہا بھی حیران اور خوش ہوکر اس پیاری سی لڑکی کو دیکھتا ھے ۔

اف ۔۔۔۔بھائی
میں نے آپ کا کتنا انتظار کیا تھا کتنی دعائیں مانگی تھی کہ میرا جیجو صرف اور صرف آپ بنیں اور دیکھیں اللہ جی نے میری دعا قبول کرلی فیروزے جذبات میں آکر ظہان کے گلے لگ جاتی ھے ۔اور آج سے ابھی سے آپ میرے جیجو نہیں میرے بھائی ہیں
وہ بھی اسکے سر پر ہاتھ رکھتا ھے اور بالکل ویسا مان اور پیار دیتا ھے جیسے ایک بھائی بہن کو دیتا ھے ۔اوکے میں اپکا بھائی ہو اینڈ تھینک یو لٹل فیری

لیکن دولہے کے ساتھ موجود اسکا دوست اس بے وقوف لڑکی کو غصہ سے دیکھ رہا تھا کیونکہ فیروزے میڈم جب جذباتی ہوکر دولہا کے پاس جاتی ہے تو اس بیچارے کا پاوں جلدبازی میں کچل دیتی ھے ۔

وہ اصل میں فیروزے اور حورا کا کوئی بھائی نہیں ہے تو آپ بس اس لیئے جذباتی ہوگئی ہے رخسانہ بیگم دولہا کی ماں کو کہتی ہیں ۔۔۔
آپ ایسے کیوں کہہ رہی ہیں یہ بھی میری چھوٹی بیٹی کی طرح ہے ۔

فیروزے ۔۔۔۔
کیا سب کو یہی روک کے کھڑی رہو گی یا انہیں اندر بھی جانے دوگی ۔۔۔؟؟؟
جی ممی ۔۔۔کیوں نہیں
آپ سب کو اجازت ہے اندر جانے کی ۔۔۔
سب فیروزے کی بات پر ہنستے ہیں سوائے دولہا کے دوست کے ۔

بھائی آپ میرے ساتھ چلے ۔۔
فیروزے کی فرینکس دیکھ کر دولہا کی بہن بھی غصہ میں تھی ۔

فنکشن کا اہتمام لان میں کیا گیا تھاتو سب کو وہاں بٹھایا جاتا ہے اور حورا کے سسرال والے بہت ملنسار لوگ تھے اور سب فیملی کی طرح بی ہیو کررہے تھے ۔

زوہیب صاحب حورا کی ممی کو بلاتے ہیں جی بیگم اب بتائیں کیسے لگے آپکو سب لوگ ۔۔۔؟؟؟

سب بہت اچھے ہیں اور مجھے تسلی ہوگئی ہے کہ وہ میری بیٹی کو بہت خوش رکھیں گے ۔

ویٹرز تمام مہمانوں کو ریفریشمنٹ پیش کررہے تھے ۔

فیروزے بس اپنے بھائی مطلب دولہا کے ساتھ بیٹھی باتیں کررہی تھی ۔۔

فیروزے بیٹا ادھر آئیں ۔۔۔
جی آرہی ہوں
بھائی بس تھوڑی دیر میں واپس آجاو گی ۔۔۔
اوکے۔

حورا کے پاس روم میں جاو دیکھو وہ تیار ہوگئی ھے بس تھوڑی دیر تک رسم شروع ہوجائےگی تم اس کے ساتھ بیٹھو میں بھی آجاوگی
جاو۔۔۔

Ok mom…

پہلے تو جناب کا منہ بنا ہوا تھا اب اچانک کونسا خزانہ مل گیا ھے جو خوشی کی وجہ سے تیرے دانت اندر نہیں جارہے ۔۔

کیوں میرا نکاح ہے آج اور تو کیا چاہتا میں اب خوش بھی نہ ہو وہ دل جلانے والی مسکراہٹ کے ساتھ اپنے دوست کی طرف دیکھتا ھے ۔۔۔
ہونہہ جب میں سمجھا رہا تھا تب تو میری جان لینے کے درپے پہ تھا اب ایسا کیا ہوگیا ۔۔۔۔
تب میرا موڈ بہت خراب تھا ۔۔۔
مزید ان دوستوں کے بیچ بحث ہوتی دولہا کی بہن اسکے پاس آتی ھے ۔۔۔۔

بھائی ۔۔۔۔۔۔
مجھے آپ کی نئی بہن اچھی نہیں لگی آپ کو بھائی ایسے کہہ رہی تھی جیسے آپ صرف اسکے بھائی ہیں ۔ زہر لگ رہی ہے یہ لڑکی مجھے اور ایٹیٹیوڈ کیسے دیکھا رہی آپ کو پانے کے بعد ہم سب کو اگنور کردیا ۔
آپ اسکے بھائی نہیں بنے گے آپ صرف اور صرف میرے بھائی ہیں میں آپ کو کسی کے ساتھ شیئر نہیں کرسکتی خاص طور پر اس پر جو دوسرے کے بھائی کو اپنا بھائی بنا لے قبضہ کرنے والی چڑیل ۔۔۔۔

کام ڈاون مائی ڈول ۔۔۔
ایسے نہیں کہتے وہ اچھی ہے آپ اسے اپنی دوست بنا لیں وہ اسے سمجھا رہا تھا مگر اس ڈول کے چہرے کے بگڑے زاویے بتا رہے تھے وہ ایسا کچھ کرنے کے موڈ میں نہیں ۔۔۔۔

💞💞💞💞💞💞💞

بجو ۔۔۔۔
اف ۔۔۔۔
کیا بتاو آپکو ۔۔۔
جیجو اتنے خوبصورت ، سمارٹ اور ڈیشنگ ہیں کہ میں کیا بتاو آپ کو ۔۔۔۔
آپ کو پتہ جیسے ہی میں نے انہیں دیکھا جھٹ سے اپنا بھائی بنا لیا ۔فیروزے پھر ساری باتیں بتاتی ھے اور وہ بس بےدھیانی سے اسکو سن رہی تھی۔
بجو ۔۔۔بس تھوڑی دیر میں مولوی صاحب نکاح پڑھانے کے لیئے آنے والے ہیں تو آپ ریڈی رہیں ۔۔۔

نکاح کا نام سن کر حورا پھر سے بےقرار ہوجاتی ھے اور اسکا دل پھر سے ظہان کو سوچنے لگتا ھے اور اسے پانے کے لئیے بے مچلنے لگا تھا ۔اور وہ دل و دماغ کی جنگ میں الجھ جاتی ھے اور اردگرد سے بیگانہ ہوجاتی ھے ۔

دروازے پر دستک ہوتی ھے اور حورا کے پاپا مولوی کے ساتھ کمرے میں داخل ہوتے ہیں ۔
بجو ملوی صاحب آگئے ہیں ۔۔۔۔

حورا کو کچھ نظر نہیں آرہا تھا اسکا دماغ سن ہوگیا تھے رخسانہ بیگم اسکے پاس بیٹھتی ہیں ۔

مولوی صاحب نکاح پڑھانا شروع کرتے ہیں اور حورا سے پوچھتے ہیں مگر جب وہ کوئی جواب نہیں دیتی دیتی تو وہ دوبارہ پوچھتے ہیں اور حورا کو ہاتھ پر دباو محسوس ہوتا ھے تو وہ تین بار قبول ہے کہتی ھے اور پھر اسے نکاح نامہ پر دستخط کا کہا جاتاہے یہی وہ وقت تھا جب حورا اپنے پاپا کی طرف دیکھتی ھے اور وہ ہاں میں سر ہلا کر حورا کو دستخط کی اجازت دیتے ہیں وہ ڈبڈبائئ آنکھوں کے ساتھ دستخط کراتی ھے اور اسکے آنسو جھلک پڑتے ہیں ۔
سب مبارک باد دیتے ہیں اور رخسانہ بیگم اسے پیار کرتی ہیں ۔

“”تمہیں پانے کی آخری خواہش
اس نکاح کے بعد بس دم توڑ گئی اب بس میں ہوں اور میری نامکمل اور نہ ختم ہونے والی محبت ہے ۔۔۔””

💔💔💔💔💔💔

مولوی صاحب لڑکے کے پاس جاتے ہیں

ظہان حیدر شاہ ولد سکندر شاہ آپ کو حورا بنت زوہیب پانچ کروڑ سکہ رائج الوقت نکاح قبول ہے۔؟؟

قبول ہے ۔۔۔
(دل و جان سے قبول ہے )

قبول ہے ۔۔۔؟؟

قبول ہے ۔۔۔؟؟؟
(آخری سانس تک قبول ہے )

ظہان حیدر شاہ تین بار بہت خوش ہوکر کہتا ھے ۔
اور دستخط کے بعد ہر طرف مبارک باد کا شور اٹھتا ھے ۔۔

سکندر شاہ اسے گلے ملتے ہیں
بابا سائیں بہت بہت شکریہ آج میں بہت خوش ہو میرا بیٹا خوش ہے تو مجھے اور کیا چاھیے ۔۔

مبارکاں جگر ۔۔۔۔
خیر مبارک
بلاخر ہمارے دیوانے کو آسکے خوابوں کی ملکہ ہمیشہ کے لیئے مل گئی ۔۔۔
ہاں یار بس آج مجھے میری دعاوں کا جواب مل گیا ۔۔۔۔

سب خوشیاں منا رہے تھے اور حورا بس اپنے غم میں کھوئی ہوئی تھی ۔۔۔۔۔

___ __ ___ __ ___ __

فیروزے جائے اور بہن کو نیچے لے کر آئیں ۔۔۔
ماما میں بھی جاو ماما بھابھی کو دیکھنے ۔۔۔۔؟؟
آیت ان سے پوچھتی ھے

ٹھیک ھے چلی جائیں ۔۔۔

وہ فیروزے کے ساتھ جاتی ھےدونوں خاموش تھی فیروزے خود بات کا آغاز کرتی ھے
میرا نام تو آپ جانتی ہیں آپ کا نام کیا ھے ۔۔۔؟؟؟

آیت ۔۔۔۔

واو بہت پیارا نام ھے
اور تم بھئ بہت کیوٹ سی ہوں فیری کی طرح ۔۔۔
آیت جو غصہ میں تھی اسکی کیوٹ والی بات سن کر مسکراتی ھے کیونکہ ظہان بھی اسے فیری کہتا ھے ۔۔

تھینکس ۔۔۔ فیروزے

وہ حورا کے روم میں داخل ہوتی ہیں ۔۔۔

بجو ۔۔۔۔
دیکھیں آپ سے کوئی ملنے آیا ھے ۔۔۔۔

حورا جلدی سے آنسو صاف کرتی ہے اور مسکرا کر فیروزے کے ساتھ کھڑی پیاری سی لڑکی کو دیکھتی ھے ۔

بھابھی ۔۔۔۔
واو آپ بہت خوبصورت ہیں وہ حورا کے گال پر کس کرتی ھے ۔اور حورا

آیت کی اس حرکت پر مسکراتی ھے

حورا بھابھی ۔۔۔

بس فائنل ہوگیا آپ آج سے ابھی سے میری بہن ہیں ۔

نو وے۔۔۔
بجو صرف میری بہن ہیں ۔۔۔

نو بھابھی میری بہن ہیں ۔۔۔
آپ نے بھی تو میرے بھائی پر قبضہ کیا ھے میں نے تو کچھ نہیں کہا ۔۔۔۔ کیوں نہیں بنایا انہیں اپنا بھائی ۔۔۔۔

آیت وہ اور بات ہے
فیروزے کا لہجہ ذرا دھیما تھا بحث کرنے کے چکر میں بھائی سے ہاتھ دھونا پڑتا ۔۔۔۔

ہونہہ ۔۔۔
تو یہ بات بھئ الگ ھے اور آیت ناراض ہوجاتی حے وہ اتنی معصوم لگ رہی تھی کہ حورا کو اس پر پیار آ رہا تھا ۔۔

اس سے پیلے دونوں میں جنگ شروع ہوتی حورا انکی دوستی کرواتی ھے ۔
اگر دونوں نے پھر جھگڑا کیا تو میں کسی کی بہن نہیں بنوں گی ۔۔چلو دوستی کرو ابھی ۔۔۔۔

وہ ایک دوسرے کو دیکھتی ہیں اور فرینڈز بن جاتی ہیں ۔۔

پھر وہ دونوں حورا کے ساتھ باتیں شروع کرتی ہیں اور حورا نے بھی خود کو کافئ حد تک سنبھال لیا تھا ۔

فیروزے تم یہاں باتیں کررہی ہوں اور نیچے سب حورا کا انتظار کررہے ہیں رخسانہ بیگم اسے ڈانٹتی ہیں ۔

آنٹی پلیز میری فرینڈ کو مت ڈانٹیں آیت جلدی سے بولتی ھے
اوکے بیٹا آپ حورا کو لے کر نیچے آئیں ۔

Tu kisi lgi Hora & Zuhan Nikah special
Acha sa response din & let’s see what happened in nxt part of nikah special
So
Stay Tuned

 

فارب میں ابھی اینجل سے ملنا چاھتا ہوں ۔

کیا مطلب ۔۔۔۔۔تو پاگل ہوگیا ھے

بس یار تو کچھ دیر ان سب کو سنبھال لے میں ملکر آجاو گا جلدی ۔۔۔۔

ظہان ۔۔۔۔
یار تو مجھے مروائے گا ۔۔۔۔

کچھ نہیں ہوتا آیت اور فیروزے اسے نیچے نہ لے آئیں مجھے پہلے جانا ہوگا ۔
تو ویسے بھی بہانے بنانے میں ماہر ھے اب چل میرے ساتھ اور ان دونوں کو بھی روم سے باہر نکالنا ہوگا ۔

اچھا آیت کوتو میں ماما کے پاس بھیج دوں گا مگر تیری نئی بہن کا کیا کرو ؟ ۔۔۔

مجھے نہیں پتہ جو بھی کرنا ھے کر فارب ۔۔۔۔
ابھی تو چلو ۔۔۔۔

فارب آیت کو کال کرتا ھے اور حورا کے روم سے باہر کھڑا ہونے کا کہتا ھے اور وہ جیسے ہی اند آتا ھے آیت اسے اپنی طرف بلاتی ھے اور وہ بھی آیت کے پاس جاتا ھے ۔

آیت ماما تمہیں بلا رہی ہیں تم ابھی انکے پاس جاو ۔۔۔

مگر بھائی ۔۔۔
ہم پہلے بھابھی کو نیچے لے جائیں پھر ماما کے پاس جاو گی ۔

نو آپ ابھی جائیں اور اس قبضہ کرنے والی چڑیل کو بھی باہر بلاو ۔

اسے ایسے مت کہیں وہ میری اب فرینڈ ھے ۔

اوکے ۔۔۔
اسے باہر بلاو ۔۔

فیروزے ڈئیر باہر آو ۔۔۔

اسے بلانے کے بعد وہ ماما کے پاس چلی جاتی ھے ۔۔۔

آیت ۔۔۔
کہاں ہو کیوں مجھے بلا رہی تھی ۔آیت۔۔۔۔
فیروزے کو آیت باہر کہیں نظر نہیں آتی وہ مزید اسے پکارتی ھے کہ فارب اسے بازو سے پکڑ کر کھینچتا ہے ۔۔۔

کون ہیں آپ ۔۔
چھوڑیں مجھے ۔۔۔
فارب اسکی طرف غصے سے دیکھتا ھے اور فیروزے بیچاری حیران سی اسے دیکھتی ھے
آپ ۔۔
آپ آیت کے بھائی ہیں نہ
پھر فارب کوئی جواب نہیں دیتا اور زبردستی فیروزے کا ہاتھ پکڑ کر چلتا رہتا ھے

دیکھیں آپ میرا ہاتھ چھوڑیں
مجھے بجو کو نیچے بھی لے کر جانا ھے ۔

مگر فارب اسکی بات کو ان سنا کردیتا ھے اور اسے سیڑھیوں کے نیچے والی سائیڈ پر لے جاتا ھے تاکہ کوئی انہیں دیکھ نہ سکے ۔
فارب اسے دیوار کے ساتھ لگا دیتا ہے اور بازو اسکے اردگرد رکھ کر اسے قید کرلیتا ھے ۔اور پھر فارب اسکے قریب ہوتا ھے ۔

دیکھو ۔۔۔
میرے قریب مت آو دور رہو مجھ سے وہ اسے اپنے ہاتھ سے دور کرتی ھے ۔

تمہارے قریب آنے کا مجھے بھی کوئی شوق نہیں یے چھوٹی بیوقوف لڑکی ۔۔۔۔
چپ چاپ یہاں ٹھہری رہوں ۔
Ha …..😮
What you mean……???

کیا کیا تم نے ۔۔۔؟؟؟
تم خود بےوقوف ہو اور تمہاری جرات کیسے ہوئی مجھے ایسا کہنے کی ۔۔۔۔
اور
اور میں تمہیں چھوٹی کہاں سے دیکھتی ہوں
فیروزے بھی چیخ کر کہتی ھے ۔

شش ۔۔۔
فارب اسکے لبوں پر انگلی رکھتا ھے ۔

کیا شش ۔۔۔ ہاں
تم ہوتے کون ہو مجھ سے یعنی فیروزے سے اس طرح بات کرنے کی وہ غصے سے فارب کا ہاتھ جھٹکتی ھے

اور ادھر فارب کو غصہ آجاتا ھے اور وہ فیروزے کو غصہ سے زور سے ڈانٹتا ھے

آواز نیچی ۔۔۔
خاموش ٹھہری رہو ۔۔

ظہان کی وجہ سے تمہیں برداشت کررہا ہو ورنہ تمہیں اس بدتمیزی کی سزا دیتا ۔۔۔

فارب غصہ میں اسے ڈانٹتا ھےاور فیروزے بیچاری اسکا غصہ دیکھ کر ڈر جاتی ھے ۔
اس سے آج تک کسی نے بھی اس لہجے میں بات نہ کی تھی ۔
فیروزے اس لہجے کو برداشت نہیں کرتی اور بس ڈر کی وجہ سے اسکی آنکھوں میں آنسو آجاتے ہیں ۔

فارب انتہائی کوفت سے اسے دیکھتا ھے۔۔۔

اب ٹیپیکل لڑکیوں کی طرح رونا بند کروں وہ بے دردی سے اسکے آنسو صاف کرتا ھے اور فیروزے اس سے مزید ڈر جاتی ھے۔

اس جلاد سے تو میرے والا جن بہتر تھا پتا نہیں کہاں ھے پلیز جن جلدی سے آجاو اور مجھے اس جلاد سے بچا لو ۔۔۔وہ دل ہی دل میں سٹرینجر کو یاد کررہی تھی ۔

ظہان یار ۔۔۔
اور کتنا ٹائم لگائے گا اس مصیبت سے کب میری جان چھوٹے گی ۔وہ جو کب سے فیروزے کے ساتھ ٹھہرا تھا کوفت سے سوچتا ھے شاید اسے یہ لڑکی بلکل بھی اچھی نہیں لگی تھی یا شاید اسکا اگنور کرنا فارب کو اچھا نہیں لگا تھا

سنو لڑکی ۔۔۔
تم ابھی آیت کے پاس باہر جاوگی اور کہیں بھی نہیں جاوگی اگر میری بات مانو گی تو جانے دوں گا ورنہ ۔۔۔۔

اوکے ۔۔۔۔۔

میں آیت کے پاس ہی رہو گی پلیز مجھے جانے دو ۔۔۔

اوکے میری نظریں تم پہ رہیں گی کوئی چالاکی مت کرنا ۔
جاو ۔۔۔۔

فیروزے ایسے بھاگتی ھے جیسے کوئی قیدی جیل سے رہا ہوتا ھے ۔

بےوقوف ۔۔۔فارب اس کی حالت پر ہنستا ھے ۔

💞💞💞💞💞💞💞

اس دوران ظہان اینجل کے روم میں انٹر ہوتا ھے اور حورا تو اپنی سوچوں میں گم تھی

ظہان آہستہ آہستہ اسکی طرف بڑھتا ھے اور حورا کو بھی کسی موجودگی کا احساس ہوتا ھے وہ مضبوطی سے اپنے دوپٹے کو پکر لیتی ھے اور چہرے کو ممکنہ حد تک چھپا لیتی ھے ۔اور ظہان کوئی بات کرتا ۔۔۔حورا جلدی سے بولتی ھے ۔۔۔

آپ جو کوئی بھی ہیں میں نے آپ سے نکاح صرف اپنے پاپا کی خوشی کی خاطر کیا ھے تو آپ کسی خوش فہمی میں مبتلا مت ہو اور ویسے بھی میں کسی اور کو پسند کرتی ہوں ۔۔۔۔

ظہان اسکی بات غور سے سن رہا تھا اسکے منہ سے کسی اور سے پسندیدگی کا تذکرہ سن کر اپنے قابو میں نہیں رہتا ۔۔۔اور جھٹکے سے اسے کھڑا کرکے اپنی طرف رخ کرتا ھے ۔

وہ جو پہلے ہی یہ بات کرکے ڈری بیٹھی تھی اسکا شدید ردعمل دیکھ کر مزید گھبرا جاتی ھے ۔

چھوڑیں مجھے ۔۔۔۔
وہ جتنا اسے دور کررہی تھی ظہان اتنا ہی اسکے پاس ہورہا تھا اور اینجل پر اسکی پکڑ سخت ہوتی جارہی تھی ۔
اسکی انگلیاں کمر اور بازو میں دھنستی جارہی تھی تکلیف سے اسکی اینجل کی آنکھوں میں آنسو آگئے تھے ۔

تم کسی اور کو کیسے پسند کرسکتی ہو۔۔۔۔۔؟؟؟؟
اینجل ۔۔۔۔۔

وہ سلگتے ہوئے لہجے میں پوچھتا ھے ۔

حورا اسکی آواز سن کر ساکت ہوجاتی ھے کیونکہ وہ ظہان کی آواز تھی وہ اپنی نگاہیں اٹھاتی ھے تو ظہان کا ہی چہرہ تھا ۔

نہیں حورا یہ ۔۔یہ ظہان نہیں ہوسکتے تمہارا وہم ھے وہ خود کو یقین دلا رہی تھی ۔۔۔

اینجل ۔۔۔۔۔

حورا غصہ سے اسکی طرف دیکھتی ھے اور اسے دکھا دے کر دور کرتی ھے وہ جو اپنی اینجل کے اس قدر خوبصورت روپ میں کھویا ہوتا ھے اس دھکے سے ہوش میں آتا ھے ۔

ظہان ۔۔۔
آپ یہاں کیا کررہے ہیں ۔۔۔؟،،
آپ جائیں یہاں سے فیروزے کسی بھی وقت آنے والی ہوگی ۔

دیکھ کیا رہیں ہیں جائیں یہاں سے ۔۔۔۔

وہ بس خاموش ہوکر اسے دیکھ رہا تھا اور اسکی حالت دیکھ کر اسے سمجھ آجاتا ھے کہ میری طرح اینجل بھی بے خبر تھی ۔

حورا اسکے پاس آکر اسے باہر کی طرف دھکیلتی ھے مگر وہ اپنی جگہ سے نہیں ہلتا اور حورا کو اپنی طرف کھینچ کر گلے سے لگاتا ھے ۔

ظہان ۔۔۔۔
سب ختم ہوگیا میں سب کو بتانا چاہتی تھی کہ میں آپ کو پسند کرتی ہوں مگر۔۔۔۔میں پاپا کی بات نہیں ٹال سکتی تھی اس لیئے مجھے پاپا کی خاطر یہ کرنا پڑا ۔
وہ روئی جارہی تھی اور آسکے آنسو ظہان کے سینے میں جذب ہورہے تھے وہ بھی اسکی تکلیف کی طرح رورہا تھا ۔

اینجل ۔۔۔۔
میری بات تو سنو ۔۔۔

نہیں ظہان آپ میری بات سنیں ۔۔۔۔۔

ان دنوں میں کس اذیت سے گزری ہوں وہ کوئی نہیں سمجھ سکتا ۔
ظہان ہم ملنے سے پہلے ہی جدا ہوگئے اور میں کچھ بھی نہ کرسکی آپ نے بھی تو دیر کردی ورنہ پاپا میرا رشتہ آپ سے کردیتے کاش ہم پہلے ملے ہوتے مگر اب تو سب کچھ ختم ہوگیا ۔۔۔۔۔

ظہان میں نے ہاں تو کری مگر اس رشتے کو میں ذیادہ دیر نباہ نہیں پاو گی ۔

ظہان میں ذیادہ دیر زندہ نہیں رہ پاوگی میرا دم گھٹ رہا ھے وہ اور ظہان دونوں ہی زمین پر بیٹھ جاتے ہیں ۔

اینجل ۔۔۔۔۔
میں کوئی اینجل نہیں آپ چلے کیوں نہیں جاتے ۔۔۔

تمہارا نکاح مجھ سے ہوا ھے ۔۔۔

ہاہاہاہا بہت اچھا مذاق ہے

ادھر میری طرف دیکھو یقین کرو میری بات پر ہم ایک دوسرے کے لیئے بنے ہیں اس لیئے تو ہماری جوڑی آسمان پر بن چکی تھی ہمارا ملنا طے تھا اور اب ہمیں کوئی بھی جدا نہیں کرسکتا تم ایسے ہی میرے خوابوں میں نہیں آتی تھی اینجل تم ازل سے میری تھی صرف اور صرف ظہان حیدر شاہ کی صرف میری ۔۔۔۔

ظہان آسکے آنسو صاف کرتا ھے آپ سچ کہہ رہے نا ۔۔۔
ہاں وہ اسے گلے لگاتا ھے حورا کو اب بھی یہ خواب لگ رہا تھا اور اسنے ظہان کو مضبوطی سے پکڑا ہواتھا اسے ڈر لگ رہتا کہ وہ آنکھیں کھولے گی اور خواب ٹوٹ جائے گا اور ظہان اس سے دور ہوجائے گا ۔

کتنے لمحے وہ ایک دوسرے کو محسوس کراتے رہتے ہیں ۔

ظہان اسکی آنکھوں پر محبت بھرا لمس چھوڑتا ھے دیکھو تو کیا حال بنارکھاھے تم نے ۔۔
وہ مسکرا کر آنکھیں کھولتی ھے اور ظہان کو دیکھتی ھے ۔۔۔

🎀 تیری آنکھوں کی کشس کیسے تجھے سمجھاوں ۔۔۔۔
ان چراغوں نے میری نیند اڑا رکھی ھے۔۔۔۔🎀

حورا محبت سے ظہان کے چہرے کو چھوتی ھے وہ جیسے یقین کرنا چاھتی تھی کہ یہ ظہان ہی ھے۔ وہ بس مدہوش سا اسے دیکھ رہا تھا ۔

🎀 تیرا یہ خوبصورت سا لمس
میری مدہوشی کے لیئےکافی تھا 🎀

ظہان اسکے چہرے کے ہر نقش کو اپنے لبوں سے چھورہا تھا اور حورا اسکئ قربت میں پھگلتی جارہی تھی ۔۔۔

ظہان آپ مجھ سے کبھی دور مت جائیے گا میں زندہ نہیں رہ پاوگی ۔

میں ہمیشہ تمہارے پاس رہوں گا اور وہ اینجل کو اپنے سینے میں چھپا لیتا ھے۔ حورا اسکے حصار میں پرسکون سی ہوگئی تھی ۔

🎀 میں تیرے حصار میں جاناں۔۔۔
مہکتی ہوں دعا جیسی ۔۔۔
کبھی انتہا جیسی
کبھی ہوں ابتدا جیسی
کبھی چپ ۔۔۔کبھی گویا
کبھی سرگوشیوں جیسی
کبھی اشکوں میں ہنستی سی
کبھی ہنسی میں دمکتی جیسی
کبھی کھلتی کبھی تکتی
کبھی خوابوں میں چلتی سی
میں تیرے حصار میں جاناں
مہکتی ہوئی دعا جیسی ۔۔۔🎀

حورا کا چہرہ جو ظہان سے دوری کی وجہ سے مرجھا گیا تھا ظہان کی قربت میں پھر سے تروتازہ ہوگیا تھا ۔

اینجل اب مجھے جانا ہوگا کافی ٹائم ہوگیا ھے مگر حورا اسے دور نہیں ہونا چاہ رہی تھی۔

ظہان آسکے قریب ہوتا ھے اور اسکے ماتھے پر کس کرتا ھے ۔
ریلیکس اینجل ۔۔۔۔
تھوڑی دیر بعد ہم ایک ساتھ ہوںگے وہ اسکے کان میں سرگوشی کرتا ھے اور حورا ہاں میں سر ہلاتی ہے اور پھر ظہان واپس چلا جاتا ھے ۔

آیت اور فیروزے اسے نیچے لےکر جاتی ہیں سٹیج پر پہنچ کر وہ رک جاتی ہیں اور ظہان اسکی طرف ہاتھ بڑھاتا ھے جسے اینجل خوش ہوکر تھام لیتی ھے ۔
دونوں کو ایک ساتھ بٹھایا جاتا ھے ۔
اور

 

حورا اور ظہان کو خوش دیکھ کر دونوں فیملیز بہت خوش ہوتی ہیں ۔۔۔۔۔

ماشااللہ ہماری بہو تو بہت خوبصورت ھے بلکل چاند کی طرح ۔۔۔۔
حیات بیگم حورا کو پیار کرتے ہوئے بولتی ہیں اور پھر حورا کو اپنی خاندانی انگوٹھی پہناتی ہیں ۔۔۔
سکندر شاہ بھی حورا کو پیار کرتے ہیں اور اسکے سر پر ہاتھ رکھ کر ہمیشہ خوش رہنے کی دعا دیتے ہیں اور اسطرح فارب کے پاپا بھی دونوں کو مبارک باد دیتے ہیں
اور
پھر سب بڑے اپنی الگ محفل سجا لیتے ہیں ۔۔۔۔

اور ادھر ینگسٹرز سب حورا اور ظہان کو گھیر لیتے ہیں

ظہان یار ہمارا انٹرو تو کروا بھابھی سے ۔۔۔۔؟

تو نہیں کرواتا چل میں خود اپنا انٹرو دیتا ہوں
بھابھی میں ۔۔۔۔۔۔

ارے فارب تو چپ کر میں خود تیرا انٹرو کرواتا ہوں

اینجل یہ ھے فارب حسن بخاری جو کہ ہماری فیملی کا سب سے بڑا ڈرامہ باز انسان ھے اور ۔۔۔

بس بس یار تو نے بہت تعریف کردی میری ۔۔۔۔۔
بھابھی یہ سب جھوٹ بول رہا ھے اصل میں یہ سب جیلس ہوتے ہیں مجھ سے کیونکہ مما ان سب سے زیادہ مجھ سے پیار کرتی ہیں ۔اور جسکی وجہ سے میں ہر وقت ان سب کے ظلم کا نشانہ بنتا ہوں اور میں ہوں انوسنٹ مظلوم فارب بخاری دی گریٹ 😎
Oh my God Farib you are such a liar 😯

افففف ۔۔۔۔۔ یار کتنا جھوٹ بولتا ہے تو افف توبہ توبہ ۔۔۔۔ ظہان حیرت زدہ سا اپنے کانوں کو ہاتھ لگاتا ہے ۔۔۔
No no Bhabi I’m not a liar I’m innocent piece of this family 😜

فارب معصوم سے فیس ایکسپریشن دیتا ہے

اور ادھر فیروزے تو بس حیران ہوکر فارب کا یہ نیا روپ دیکھ رہی ہوتی ہے ۔۔۔
میرے ساتھ تو کتنا روڈلی بیہو کیا اور یہاں دیکھو لگتا ہی نہیں یہ وہی جلاد ھے وہ بس جل کر اسے دیکھ رہی تھی نہیں بلکہ گھور رہی تھی ۔۔
فارب کو جب محسوس ہوتا کہ کوئی اسے دیکھ رہا ہے تو وہ اپنی نظروں کا رخ ادھر ادھر موڑتا ھے تو فیروزے میڈم اسے آنکھوں کے ذریعے ہی اسے ختم کرنے کا سوچ رہی ہوتی ہے ۔۔
اور پھر فارب اپنا بایاں ابرو اٹھاتا ھے تو پھر فیروزے اپنی نگاہیں پھیر لیتی ہے ۔۔

Ohhhh…
Who is that cute boy..?

حورا سب سے خاموش ایک طرف ٹھہرے شیری کی طرف اشارہ کرتی ہے تو آیت اسے بتاتی ھے
بھابھی یہ تو میرا پیارا سا ینگر برو ھے شیری ۔۔
ہممممم
تو یہ ناراض سا کیوں ٹھہرا ھے ۔۔؟
پھر حورا اسے اپنے پاس بلاتی ھے تو وہ حورا کے پاس آتا ہے اور پھر بھی خاموش بیٹھا ہوتا ہے ۔۔
شیری
کیا ہوا ہے ۔۔۔؟
تم اتنے اداس کیوں ہو ظہان شیری سے پوچھتا ہے ۔

مجھے کسی سے کوئ بات نہیں کرنی ۔
Aaawwww my little cute champ you are angry with..?
You wouldn’t talk with your Bhabi ….¿

کیا میرا کیوٹ سا ہیرو مجھ سے بھی بات نہیں کرے گا حورا شیری سے پوچھتی ھے ۔۔

No I’m not angry with you beautiful bride .
I’m angry with all of these Aayat, Zuhan & Faraib bro ‘coz they ignored me 😓

لیکن میں صرف آپ سے بات کروں گا
شیری ۔۔۔۔۔ی ی ی
یار یہ کیا بات ہوئی سب ایک ساتھ بولتے ہیں ۔
ڈئیر سس (sis ) یہ سب ہر بار مجھے اگنور کردیتے ہیں اب بھی سب ایک دوسرے سے بات کررہے تھے مجھے تو سب بھول گئے اور آیت کو بھی اسکی نیو فرینڈ مل گئی ہے تو اس نے بھی مجھے اگنور کردیا اور ظہان برو کو آپ مل گئیں تو چلو انکا اگنور کرنا بنتا ھے مگر فارب برو سے مجھے بلکل امید نہیں تھی ۔۔۔

شیری بہت سیڈ تھا اوربس رونے والا تھا ۔۔۔

ہمممممم تو یہ ظلم کیا ھے ان سب نے میرے کیوٹ سے ہیرو پر تو پھر ٹھیک ھے ان سب کو پنشمنٹ ملے گی ۔۔
چلو بتاو شیری ان سب کو کیا سزا ملے ۔۔۔؟؟؟

I know Farib bro & Ayat wants to make you their sis. Soyou wouldn’t be their sis you’re only mine only my sis….ok 🤗

ابھی حورا کچھ کہتی فارب کہتا ھے شیری یار ایسا تو نہ کر کیا تھوڑی رعایت نہیں مل سکتی ۔۔۔۔؟
فارب امید سے کہتا ھے ۔ دیکھ یار ایسا نہ کر تو جو کہےگا میں وہ کروں گا پر پلیز بھابھی کو میری سس بننے دے پلیز ززز۔۔۔۔۔

اور پھر سب ملکر اسے سوری بولتے ہیں اور حورا بھی شیری کی طرف اشارہ کرتی ہے کہ انہیں معاف کردو ۔۔

Ok
Ok …..
Your sorry was accepted only because of my beautiful sis .😏

پھر سب مسکراتے ہیں

فیروزے ادھر میرے پاس آئیں پھر وہ ظہان کے پاس جاتی ہے اب وہ اور ظہان ایک ساتھ باتیں کررہے تھے اور حورا کے ساتھ شیری لوگ ۔۔

اور زوہیب صاحب اور سکندر شاہ خوش ہوکر انکو دیکھ رہے ہوتے ہیں ۔

پھر سکندر شاہ مخاطب ہوتے ہیں

آپ سب سے بہت اہم بات کرنی ھے تو سب میری بات غور سے سنیں

زوہیب صاحب اور میں نے ظہان اور حورا کا رشتہ اس دن طے کیا تھا جب حورا بچے کے کالج میں پوزیشن ہولڈر کی تقریب رکھی گئی تھی اور میں چیف گیسٹ تھا ۔۔ حورا بیٹا جیسے ہی اپنا انعام لینے آئیں تو انھوں نے تقریب میں چند باتیں کیں جو کہ میرے دل کو چھو گئی انکا پولائٹ لہجہ بہت ہی پیارا لگا اور پھر میں نے اسی وقت فیصلہ کیا کہ حورا بیٹا میری بہو بنیں گی اور میں نے تقریب ختم ہونے کے چند دن بعد زوہیب صاحب سے رابطہ کیا اور ان سے روبرو بات کی انھیں کنوینس کیا اور پھر اسطرح ہم دونوں نے انکا رشتہ فیکس کیا ۔۔۔ ظہان پر حملے کے بعد ہم نے فیصلہ کیا کہ ان دونوں کی جلد از جلد شادی کردی جائے اور آج ان دونوں کو خوش دیکھکر ہمیں اپنے فیصلے پر فخر ہورہا ھے ۔۔۔ کیوں زوہیب صاحب ۔۔۔
جی اللہ کے فضل سے ہم بہت خوش ہیں ۔۔۔

اوووہو سس آپ تو بہت ذہین ہیں آپ کس سبجیکٹ میں ماسٹر کررہی ہیں ۔۔؟

میں کیمسٹری میں ماسٹر کررہی ہوں کیوں کہ یہ میرا فیورٹ سبجیکٹ ھے ۔۔ حورا شیری کو بتاتی ھے

ہمممم گڈ ناٹ بیڈ ۔۔۔۔

چلیں اب سب کھانا کھا لیں اور پھر حورا اور ظہان کو الگ سے کھانا سرو کیا جاتا ہے
اور
اسی دوران فیروزے کو کال آتی ھے اور وہ لان کی بیک سائیڈ پر بات کرنے جاتی ہے ابھی وہ کال اٹینڈ کرتی کہ کوئی جلدی سے اسے اپنی طرف کھنچتا ھے اور اندھیرے والی سائڈ پر لے جاتا ھے ۔
ک کون ھے ۔۔۔۔؟؟
Kizlarim ‘

اوہ ” جن ” ت تم پھر سے آگئے ابھی وہ کچھ کہتی وہ سٹرینجر اس پہ دھارتا ھے

تم اس لڑکے کے ساتھ کیا کررہی تھی ہاں بولو ۔۔۔۔ ؟؟؟

و وہ وہ ڈئیر ” جن ” میں وہ

کیا میں ہاں کیا میں جو پوچھا ھے وہ بتاو تمہیں میں نے پہلے بھی کہا تھا مجھے کسی لڑکے کے ساتھ نظر نہ آو تو تمہیں میری بات کیوں سمجھ میں نہیں آتی ۔۔۔۔؟؟؟

چھوڑو مجھے درد ہورہا ھےکیونکہ اس سٹرینجر کی پکڑ فیروزے کے بازوں پہ بہتسخت ہوتی ھے جس سے اسے درد ہورہا تھا ۔۔
چ چھوڑو ۔۔۔ پھر وہ رونے لگ جاتی ھے اور بس یہی پہ وہ سٹرینجر ڈھیلا پڑتا ھے کیونکہ اسکی لٹل فیری کہ آنسو اسے تکلیف دیتے ہیں اور ابھی وہ فیروزے کہ آنسو صاف کرتا فیروزے اسکے ہاتھ جھٹکتی ھے اور اسے دھکا دے کر دور کرتی ھے کیونکہ وہ جان گئی تھی کہ سٹرینجر اپنے ہونٹوں سے اسکے آنسو صاف کرتا

د د دور رہو مجھ سے ڈونٹ ٹچ می ۔۔۔۔

بس شاید یہی تک اس سٹرینجر کا ضبط تھا اور پھر وہ فیروزے کو غصہ سے اپنی طرف کھنچتا ھے اور پھر اسکے ہاتھوں کو اسکی کمر کے ساتھ لگا کر اپنے ایک ہاتھ سے پکڑتا ھے اور دوسرے ہاتھ سے بہت پیار اور نرمی سے اسکے آنسو صاف کرتا ھے اور پھر اپنے چہرے کو فیروزے کے چہرے کے بے حد نزدیک لے جاتا ھے اور پھر اسے کچھ کہتا ھے

Mi nina pequena ‘
Mi Amor ‘

Mi corazon salta un latido cuando te veo ‘

Bebe’ , te ves impresionate en mi eleccion ‘

مائی کیوٹی پائی ‘

مائی لو ‘

مائی ہرٹ سکیپس وین آئی سی یو ‘

اینڈ بائی داوے بےبی گرل یو آر لوکنگ سٹنگ ان مائی چوائس ‘

فیروزے جو کب سے اسکی سمجھ نہ آنے والی بولی سن رہی تھی پھر بول پڑتی ھے چھوڑو اور تم مجھ سے کس لینگویج میں بات کرتے ہو ہاں جو مجھے سمجھ میں نہیں آتی ۔
Mi Amor
( my love)
دیکھو تم پھر سے ویسے بول رہے ہو کیا تم مجھ سے میری لینگویج میں بات نہیں کرسکتے ہاں

وہ جو کب سے اسکی بات سن رہا تھا اسکے مزید قریب ہوتا ھے اور یہاں تک کہ اسکی گرم سانسیں فیروزے کے چہرے پر پڑتی ہیں اور پھر وہ بولتا ہے

مائی لو تم آج میرے پسندکیے ہوئے ڈریس میں بے حد حسین لگ رہی ہو اور میں جب جب تمہیں دیکھتا ہوں تو میرا دل بے قابو ہونے لگتا ھے اور جب تم مجھے خود سے دور کرتی ہو تو میں اپنا ضبط کھونے لگتا ہوں مجھے ایسا لگتا ھے جیسے مجھ سے میری سانسیں چھینی جارہی ہوں تم میری زندگی میرے جینے کی وجہ ہو تم مجھے خوڈ سے دور کبھی مت کرنا مائی لو پھر وہ فیروزے کی آنکھوں پر باری باری اپنا محبت بھرا لمس چھوڑتا ھے اور پھر فیروزے سے کہتا ھے مائی لٹل فیری ان آنکھوں پر ظلم مت کیا کرو کیونکہ یہ تمہارے پاس میری امانت ہیں اور پھر وہ اپنےچہرے کو فیروزے کے چہرے کے مزید نزدیک کرتا ہے جس سے اگر فیروزے تھوڑا سا بھی بولتی تو اسکے ہونٹ اس سٹرینجر کے ہونٹوں سے ٹچ ہوجاتے اس لیئے وہ بلکل خاموش کھڑی رہتی ہے اور پھر کچھ دیر بعد وہ خود ہی فیروزے سے دور ہوتا ہے تو فیروزے کی جان میں جانآتی ھے ۔
اچھا اب بتاو تم رو کیوں رہی تھی ۔۔؟؟

وہ وہ میں پھر فیروزے ٹوٹے ہوئے اس سٹرینجر کو بتاتی ھے جسے دیکھو مجھے ڈانٹ کر چلا جاتا ھے تمہیں میں کچھ تھوڑا سا ہاں صرف تھوڑا سا اچھا سمجھنے لگی تھی تم بھی برے والے جن ہو مجھ پر غصہ ہورہے ہو اور پھر سے وہ رونا شروع کردیتی ھے اور جن مطلب سٹرینجر اسے جلدی سے اپنے سینے سے لگاتا ہے ۔
Shhhhhh ….
Ma bouee de sauvetage ‘
No ilores mi amor ‘
Mi adorable ‘

شش ۔۔۔۔۔
مائی لائف لائن ‘
ڈانٹ کرائے مائی لو ‘
مائی لولی ون ‘

وہ اسکے کان میں سرگوشی کرتا ہے اور بہت آرام آرام سے اسکے سر پر بوسہ دیتا ہے پھر تھوڑی دیر بعد وہ نارمل ہوجاتی ھے اور پھر فیروزے اسے تھوڑا دور ہوتی لیکن پھر بھی وہ اس سٹرینجر کی بانہوں کے گھیرے میں ہوتی ھے اور وہ اس سے پوچھتی ھے

ج جن ” تم کس لینگویج میں مجھ سے بات کرتےہو

کیوں۔۔۔۔۔؟

وہ میں جاننا چاہتی ہوں کہ تم جن لوگ کس لینگویج میں بات کرتے ہو ۔۔۔؟؟

سٹرینجر اپنی معصوم سی فیری کو مسکرا کردیکھتا ھے اور اسکا دل کررہا ہوتا ہے کہ وہ اپنی لٹل ون کو ٹوٹ کر پیار کرے لیکن وہ صرف اسکے گالوں پر کس کرتا ہے
اب میری لٹل فیری نے پوچھا ھے تو میں ضرور بتاو گا کہ ہم جن یعنی کہ میں اپنی معصوم سی فیری سے سپینش ( Spanish ) لینگویج میں بات کرتا ہوں ۔۔۔۔

اوووہو اچھا یعنی کہ تم جن لوگ سپینش میں بات کرتے ہو ہممم اب فیروزے اپنا ڈر بھول کر اس سٹرینجر کے کندھے پر ہاتھ رکھ کر خوش ہوتے ہوئے بول رہی ہوتی ہے ۔
اچھا اور یہ ڈریسز تم میرے روم میں رکھے تھے اور میں سمجھی کے پاپا نے رکھے ۔،؟؟

You don’t like these dresses my love hmmm tell me my fairy….¿¿¿

مجھے نہیں پتہ مجھے جانا ھے جب ضرورت ہوتی ھے تو اس وقت تو تم نہیں آتے بے وقت ٹپک پڑتے ہو ہونہہ ۔۔۔۔😏
اوکے
اب میں اپنی آنکھیں بند کررہی ہوں جب کھولوں تو تم غائب ہوجانا ۔۔۔ اوکے ۔۔۔۔

But why my love…?¿

بس میری مرضی تم تو مجھے لائک کرتے ہو کیا میری چھوٹی سی بات نہیں مان سکتے ۔۔۔؟

اب میں آنکھیں بند کررہی ہوں ہھر تم غائب ہوجانا ۔۔۔

فیروزے جیسے ہی آنکھیں بند کرتی ھے وہ اسکی آنکھوں پر اپنا لمس چھوڑتا ھے اور پھر وہاں سے غائب ہوجاتا ھے ۔

فیروزے جب آنکھیں کھولتی ھے تو وہ نہیں ہوتا ھے اور وہ بہت خوش ہوجاتی ھے ۔

جن کے ساتھ بھی سیاست کرنی پڑیورنہ کہاں اس سے جان چھوٹتی ۔۔۔۔

Well done Ferozy…

___ __ ___ __ ___ __ ___ __

اینجل ۔۔۔۔۔

You are looking soooooo beautiful…

You are the Moon Of my life….

حورا مسکرا کر اسے دیکھتی ھے ۔۔۔۔

اینجل ۔۔۔۔
میری بھی تعریف کردو ۔۔۔۔

نہیں میرا موڈ نہیں ہے ۔۔۔

اینجل ۔۔۔۔۔
ہاہا ظہان ۔۔۔۔

فارب ان دونوں کی تصویریں بناتا رہتا ھے ان تمام لمحوں وہ دونوں مکمل لگ رہے تھے ۔۔

ظہان اپنی اینجل کا ہاتھ اپنے ہاتھوں میں لیتا ھے اور اس سے اپنی محبت کا اظہار کرتا ھے ۔

به خدا کز غم عشقت نگریزم نگریزم
وگر از من طلبی جان نستیزم نستیزم
.
سحرم روی چو ماهت شب من زلف سیاهت
به خدا بی رخ و زلفت نه بخسبم .

.

..
I cannot sleep, nor can I wake up…
.
I will never flee- your love and its plight.
If you ask me my life, I’ll hand it, I won’t fight!
.
Your fair face is my dawn; your dark hair is my night.
I cannot sleep, nor can I wake up, without you in my sight!
.
.

حورا اسکے اتنے خوبصورت اظہار پر اہنے آپ کو بہت خوش قسمت تصور کررہی تھی ۔

اسطرح نکاح کا فنکشن ختم ہوتا ھے اور ظہان اور اسکی فیملی واپس چلی جاتی ھے ۔

دراب خان اپنے روم میں ہونے والے الیکشن کی ساری تیاریوں اور تمام ممبرز کی لسٹ دیکھ رہا تھا تب ہی نوید دروازے پر ناک کرتا ھے ۔
حالانکہ دراب نے سختی سے منع کیا تھا کہ اسے کوئی ڈسٹرب نہ کرے مگر پھر بھی بار بار دروازہ پر دستک ہورہی تھی۔

کون ۔۔۔۔۔؟؟؟
سر میں ہوں ۔۔۔۔نوید
اندر آجاو ۔

سوری سر آپ کو ڈسٹرب کیا مگر خبر بہت اہم تھی اس لیئے ابھی آنا پڑا ۔۔۔

دراب اسے دیکھتا ھے
ہمم بولوں ۔۔۔۔

سر وہ سمجھ نہیں آرہا کیسے بتاو ۔۔۔۔

نوید جو بھی بتانا ھے جلدی بتاو میرے پاس فالتو وقت نہیں کہ تمہارے بولنے کا انتظار کرتا رہو ۔۔۔۔

جلدی بتاو ورنہ جاسکتے ہو ۔۔۔

وہ سر حورا میم کا نکاح ہوگیا ھے ۔۔۔

کیا ۔۔۔۔۔۔

نوید کیا بکواس کررہے ہو دماغ جگہ پر ہے تمہارا ۔۔۔۔

سر میں سچ کہہ رہا ہوں مجھے ابھی پتہ چلا ہے اور میں فورا آپ کو بتانے آیا ہوں ۔

کچھ گھنٹے پہلے ہی نکاح ہوا ھے ظہان حیدر شاہ کے ساتھ ۔۔۔

نہیں ایسا نہیں ہوسکتا ظہان کے ساتھ نکاح ۔۔۔۔

حورا صرف میری ھے ۔۔۔۔
میں اسے کسی اور کا نہیں ہونے دوں گا ۔۔۔

ظہان مجھے یہاں بھی شکست سےدوچار کرگیا ۔۔۔

نوید اگر یہ خبر جھوٹی ہوئی تو تمہاری جان میں اپنے ہاتھوں سے لوں گا یاد رکھنا ۔۔۔

کاش ظہان اس رات ہی مرگیا ہوتا کوئی بات نہیں حورا کو تو میں کسی بھی صورت حاصل کرکے رہوں گا ۔۔۔

حورا صرف میری ھے ۔۔۔۔

دراب غصہ میں کمرے کی ہر چیز پھینک رہا تھا اسکا دکھ کشی صورت کم نہیں ہورہا تھا ۔۔۔۔

___ ___ ___ ___ ___ ___ ___

–**–**–
جاری ہے
——
آپکو یہ ناول کیسا لگا؟
کمنٹس میں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Novels

Signup for Novels and get notified when we publish new Novel for free!




%d bloggers like this: