The Moon Of Lunar Night Novel by Bella Bukhari – Episode 33

0
دی مون آف لونر نائیٹ از بیلا بخاری – قسط نمبر 33

–**–**–

 

نکاح کا سننا تھا کہ فیروزے بے یقینی سے فارب کو دیکھنے لگتی ہے اور فارب بخاری تو پہلے سے ہی اپنی جان سے عزیز اس چھوٹی سی لڑکی کو نہار رہا تھا جس نے فارب بخاری کا دل چرا لیا تھا ۔۔۔۔

وہ فارب بخاری جو فیشن انڈسٹری کا چمکتا ستارہ تھا جس پہ کروڑوں لڑکیوں نے اپنا دل ہارا ۔۔۔۔

وہ فارب بخاری جو کروڑوں فینز کا فیورٹ سٹار ھے ۔۔۔

وہ فارب بخاری جو کسی کو ایک نظر بھی دیکھنا پسند نہیں کرتا ۔۔۔۔

وہ فارب بخاری جس نے اپنے پیشن کو پروان چڑھایا اور فیشن انڈسٹری میں اپنا نام بنایا کہ ہر ملک کی جانی مانی انڈسٹری فارب بخاری کہ آگے پیچھے ایسے بھاگتے ہیں کہ شاید وہ انکی طرف نظر کرم کردے ۔۔۔۔۔

وہ فارب بخاری جس کے پیچھے زوئی جیسی کئی ایسی آئیں کہ اس حسین شہزادے کو اپنا گرویدہ بنا لیں پر وہ چاہ کہ بھی ایسا نہ کرسکیں
کیونکہ فارب بخاری کو پانا اتنا آسان نہیں کہ کوئی بھی آ کے اسے اپنے جال میں پھنسا لے ۔۔۔

فارب بخاری کا دل چرانا اتنا آسان نہ تھا مگر ایک پاگل سی لڑکی نے نہ صرف فارب بخاری کو اپنا گرویدہ بنایا بلکہ منٹوں سکینڈوں میں اسکا دل اسی سے ہی چرا کر لے گئی ۔۔۔۔

اور وہ کوئی عام لڑکی تو ہو نہیں سکتی وہ لڑکی تو فیروزے ھے جس نے ناجانے کب فارب جیسے سخت دل انسان کو نہ صرف محبت کرنا سکھایا بلکہ اسے نبھانا بھی سکھایا ۔۔۔۔

تو کیسے نہ فارب بخاری اپنی پیاری سی فیروزے کا دیوانہ ہوتا جس سے وہ جنون کی حد تک محبت کرنے لگا تھا ۔۔۔۔۔۔

❤️❤️❤️❤️❤️

وہ جو فیروزے کی شکوے بھری نگاہیں تک رہا تھا کہ یہ تسلسل فیروزے کی آنکھوں سے آنسو بہنے کی صورت میں ٹوٹا اس سے پہلے وہ فیروزے کے پاس جاتا وہ بھاگتی ہوئی سیڑھیاں چڑھ کر اوپر والے پورشن میں چلی جاتی ہے تو میرا اور حمنا اسکے پیچھے جاتی ہیں ۔۔۔۔۔

کچھ دیر میں حمنا اور میرا فیروزے کا میک اپ سیٹ کرتئ ہیں اور کچھ ہی دیر میں نکاح شروع ہوتا تو مولوی صاحب کو زوہیب اور ظہان اندر لے کر آتے ہیں اور پھر نکاح شروع ہوتا ہے تو فیروزے بڑی مشکل سے اپنے آنسوؤں کو اپنے اندر انڈیلتی ھے اور آخری بار اپنے جن کو یاد کرتی ہے اور پھر ہمیشہ ہمیشہ کے لئے وہ فیروزے زوہیب سے فیروزے فارب بخاری بن جاتی ھے اور اسی طرح فارب بھی تین بار
قبول ھے
قبول ھے
قبول ھے

کہہ کر بہت پرسکون ہوجاتا ہے کیونکہ فائنلی اسے اسکی محبت اسکی چاہت ہمیشہ کے لئے مل گئی تھی ۔۔۔۔

اور سب ہی دعائے خیر کے بعد فارب بخاری کو مبارک باد پیش کرتے ہیں اور وہ بھی خوشی خوشی وصول کرتا ہے ۔۔۔۔

جیسے ہی فیروزے اور فارب کا نکاح ہوتا ھے میرا اور حمنا فیروزے کو سٹیج پر فارب کے ساتھ بٹھایا جاتا ھے اور انکے ساتھ ہی آیت اور حنان کا کیوٹ سا کپل بیٹھا ہوتا ھے اور پھر دونوں کپلز کا فوٹو سیشن ہوتا ھے اور جس کو فیروزے چاہ کہ بھی انجوائے نہیں کرپارہی تھی کیونکہ وہ اپنے ” جن ” کو بہت مس کررہی تھی ۔۔۔۔

اور فارب بخاری بھی فیروزے کی آنکھوں میں کسی کو کھودینے کا درد محسوس کرلیتا ھے شاید وہ بھی اس دکھ سے گزر چکا تھا تو وہ فیروزے کا دھیان بٹانے کیلئے ہلکے سے فیروزے کی گال پر کس کرتا ھے اور کوئی دیکھے نہ دیکھے پر کیمرے کی آنکھ نے اس حسین دل موہ لینے والے منظر کو ضرور قید کیا تھا ۔۔۔۔

اور فیروزے غصے سے فارب کو گھورتی ھے
اور فارب اسکے غصے کو اگنور کرتے ہوئے ایک بار پھر اسکی دوسری گال پر کس کرتا ھے تو فیروزے بیچاری ادھر ادھر دیکھنے لگتی ھے
اور فیروزے منہ کھولے فارب کو تکتی ھے کہ اس بے شرم انسان کو زرا حیا نہیں سب کہ سامنے ہی کس کردیا ۔۔۔

تو فارب فیروزے کو آنکھ مارتا ہے جس سے وہ بیچاری مزید ہکا بکا ہوجاتی ھے پر فارب کسی کی بھی پرواہ کیے بغیر

ایک بار پھر فیروزے کو اپنے بے حد قریب کرکے اسکے ہیڈ پر کس کرتا ھے اور یہ آخری کس والا منظر سب نے باخوبی دیکھا تھا اور سب نے بہت زیادہ ہوٹنگ بھی کی ۔۔۔

اور فارب کافی حد تک فیروزے کا دھیان بٹانے میں کامیاب ہوگیا تھا پر فیروزے بیچاری تو شرم سے سر ہی نہ اٹھا سکی تھی

اور فارب بخاری نے فیروزے کے شرمانے والے منظر کو کافی اینجوائے کیا تھا ۔۔۔۔

فارب کی آنکھوں سے فیروزے کیلئے چھلکتی بے پناہ محبت دیکھ کر رخسانہ بیگم نے دونوں کی خوب نظر اتاری۔۔۔

اور اسطرح اور بھی بہت سے پل فوٹوگرافر نے قید کیے جس میں فارب کے فیروزے کو سب سے چھپا کر کس کرنے والے منظر بھی شامل تھے ۔۔۔۔۔

پھر دوسرا فوٹوگرافر آیت اور حنان کا فوٹو شوٹ کرتا ھے وہ ان دونوں کو ڈیفرنٹ پوز بتاتا ھے جسے حنان تو بہت ہیپیلی انجوائے کرتا ھے پر آیت بیچاری نہیں کرپاتی اور حنان فیل تو کرتا ھے آیت کی اداسی پر وہ اسے بعد میں منانے کا پلین کرتا ھے ۔۔۔۔

پھر سب فیملی ممبرز ایک ساتھ فوٹو شوٹ کراتے ہیں اور پھر وہ لمحہ بھی آجاتا ہے جب آیت کی رخصتی ہوتی ھے

پھر شیری،، ظہان،، فارب سب ملکر آیت کو باہر گاڑی تک لے کر جاتے ہیں اور آیت باری باری اپنے بابا ،، بھائیوں،،، مما،، فیروزے سب سے ملتی ھے اور روتے ہوئے ودا ہوتی ھے ۔۔۔۔

اور پھر حنان کے ہمراہ وہ اپنی زندگی کے نئے سفر پر روانہ ہوجاتی ھے ۔۔۔

اور اسطرح ہنستے مسکراتے تھوڑا سا سینٹی ماحول کے بعد ایک خوبصورت شام کا اختتام ہوتا ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔

 

–**–**–
جاری ہے
——
آپکو یہ ناول کیسا لگا؟
کمنٹس میں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Novels

Signup for Novels and get notified when we publish new Novel for free!




%d bloggers like this: