The Moon Of Lunar Night Novel by Bella Bukhari – Episode 7

0
دی مون آف لونر نائیٹ از بیلا بخاری – قسط نمبر 7

–**–**–

 

زوئی اپنے روم میں سو رہی ہوتی ہے ۔۔۔۔
اسکے سیل پر کال آتی ھے جسکی وجہ سے اسے غصہ تو بہت آتا ھے لیکن کال کرنے والے کا نام دیکھ کر اٹینڈ کر لیتی ھے
میم ۔۔۔۔
آپ کا کام ہوگیا
آپ نے جیسا کہا تھا میں نے ویسا ہی کیا اب آپ بتائیں میں کب پکچرز لے کے آپکے پاس آو؟
ہمممممممم
آر یو شیور کام پرفیکٹ کیا ھے نہ تم نے؟؟؟؟
یس میم میں نے بالکل ویسا ہی کیا جیسا آپ نے کہا تھا ۔
ہممم
ویری گڈ _
اوکے پھر تم ایسا کرو وہ پکس لے کے ابھی میرے پاس میرے پاس آجائو
اوکے میم!
پھر کچھ ہی دیر میں وہی فوٹوگرافر زوئی کے گھر ہوتا ھے تو زوئی فورا سے انولپ اس شخص سے چھین کے کھولتی ھے
تو جیسا وہ چاہتی ھے پکس ویسی ہی ہوتی ہیں
جس میں فارب اور زوئی ایک دوسرے کے بہت قریب کھڑے ہوتے ہیں اور بھی کافی اینگلز میں پوز ہوتے ہیں جو کہ کافی بولڈ ہوتے ہیں
جنہیں دیکھ کر زوئی بے انتہا خوش ہوجاتی ھے
اور اس فوٹوگرافر کو اسکے منہ مانگے پیسے دیتی ہے
سنو تم نے بہت اچھا کام کیا یہ پکچرز تو کہیں سے بھی فیک نہیں لگ رہی
ویل ڈن مین ۔۔۔۔۔
ویل ڈن ۔۔۔
اچھا ایک اور بات اگر کسی کو بھی بھنک پڑی کہ یہ میں نے کروایا ھے تو میرا تو جو ہوگا سو ہوگا میں تمہیں بھی کہیں کا نہیں چھوڑوں گی
یاد رکھنا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
او او کے می مییم
می میں تو آپ کو ج جانتا بھی نہیں کہ آپ کون ہیں ۔۔۔
اس شخص نے بڑی مشکل سے جواب دیا
ہممممممممم
گڈ یہی تمہارے حق میں بہتر ہوگا اور ہاں کچھ دنوں کیلئے یہاں سے دور چلے جاو
اوکے میم آپ فکر نہ کریں میں ایسا ہی کروں گا
اوکے اب تم جاسکتے ہو _____

ہممم تو مسٹر فارب حسن بخاری اب تم زوئی سے پچ کے دیکھاو
تمہیں حاصل کرنے کیلئے ایسا جال بچھاوں گی کہ تمہیں میرا ہونا ہی پڑے گا
اس دن کی انسلٹ میں چاھ کے بھی بھول نہیں پائی حساب تو دینا ہی پڑے گا تمہیں ڈارلنگ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
💞💞💞

ادھر فارب بخاری اپنی میٹنگز میں بزی ہوجاتا ھے اور کچھ دنوں کیلئے وہ آوٹ آف کنٹری نئے چہرے کی تلاش میں چلا جاتا ہے کیونکہ وہ کوئی بھی چہرا دوبارہ کاسٹ نہیں کرتا ۔۔۔۔۔۔
■■■■■■

حورا اپنی سٹڈیز میں بزی ہوجاتی ھے
آج بھی وہ اپنی بہت اہم اسائنمنٹ سبمنٹ کروانے جاتی ہے اسلیئے جلدی جلدی تیار ہورہی ہوتی ھے
پھر وہ ناشتہ کیے بغیر ہی جارہی ہوتی ھے کہ اسکی ممی روک لیتی ھے
حورا بیٹے ناشتہ تو کرلو
No mamy I’m too late

اچھا جوس ہی پیتی جاو
No mamy i have no time

اور پھر وہ بغیر ناشتہ کیے یونی چلی جاتی ھے
ڈرائیور انکل جلدی کریں مجھے پہلے ہی دیر ہورہی ھے
جی بیٹا
آپ فکر نہ کریں میں ٹائم پہ پہنچا دوں گا
حورا ایک بار پھر سے اپنی اسائنمنٹ پڑھ رہی ہوتی ہے تاکہ کہیں کوئی کمی نہ رہ جائے
ابھی وہ پڑھ رہی ہوتی ہے کہ گاڑی زور دار جھٹکے سے ٹکڑاتی ھے اور انکا زور دار ایکسیڈنٹ ہوتا ھے
جسکی وجہ سے حورا کہ سر پر چوٹ لگتی ھے اور ادھر ڈرائیور بھی کافی حد تک زخمی ہوجاتا ھے

کیا ہوا نوید
سر وہ اس سے پہلے نوید کچھ کہتا دراب خان اپنے گارڈز کے ہمراہ اپنی وائٹ پراڈو سے نکلتا ھے
اور جلدی سے گاڑی کے قریب آتا ھے اور اپنے گارڈز کو ڈرائیور کو نکالنے کا کہتا ھے
ایک گارڈ دراب کو گاڑی میں موجود لڑکی کا کہتا ھے تو وہ خود کار کی اس سائڈ پر جاتا ہے
جہاں پر حورا بے ہوش پڑی ہوتی ھے ۔
دراب خان جلدی سے حورا کو سیدھا کرتا ہے تب ہی حورا کا معصوم چہرا اسکی آنکھوں کہ سامنے آتا ھے جسے دیکھ کہ دراب خان جیسا مغرور شخص فدا ہوجاتا ھے اور کچھ دیر یونہی گزار جاتے ہیں
حورا کہ سر پر جب اسکا ہاتھ لگتا ھے تو اسکا ہاتھ خون سے بھر جاتا ہے اور ان لمحوں سے وہ خود کو جلدی سے نکالتا ھے
کیونکہ حورا کی حالت بگڑتی جارہی ہوتی ہے
نوید ۔۔۔۔۔۔۔
نوید ۔۔۔۔۔
تم گاڑی یہاں پر لے کے آو
جلدی ی ی ی
پھر وہ جلدی سے اسے اٹھا کر اپنی گاڑی میں لے جاتا ھے
نوید جلدی سے گاڑی ہسپتال لے کے جاو
جلدی ی ی ی ی
اوکے سر!
پھر وہ حورا کو ہسپتال لے جاتا ھے جہاں حورا کو ایمرجنسی وارڈ میں داخل کیا جاتا ہے
کیونکہ اسکی حالت کریٹیکل ہوتی ھے
ادھر دراب خان پریشانی سے ٹہلتا رہتا ھے
کافی ٹائم بعد ڈاکٹر آتا ھے اور اسکے ٹھیک ہونے کی خبر سناتا ھے اور دراب سکون کا سانس لیتا ھے
نوید ۔۔۔۔۔۔۔
یس سر!
ڈرائیور کی حالت کیسی ھے اسے ہوش آیا؟
جی سر وہ کافی بہتر ھے
اس سے کہو کہ میڈم کے گھر کا پتا دے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اوکے سر ^^^^^^^^^

نوید حورا کہ پاپا کا نمبر دراب کو دیتا ہے اور وہ زوہیب صاحب کو ساری صورت حال کے بارے میں آگاہ کرتا ہے
پھر کچھ دیر بعد وہ حورا کو دیکھنے جاتا ہے وہ چونکہ بےہوش ہوتی اور درد اسکے چہرے سے عیاں ہوتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہ بس خاموشی سے حورا کو دیکھتا رہتا ھے
پھر کچھ دیر بعد زوہیب صاحب بہت ریش ڈرائیونگ کرکے ہاسپٹل میں اتے ہیں
ریسپشنسٹ سے پیشنٹ کے روم کا پوچھ کر جیسے ہی وہاں پہنچتے ہیں تو نوید پہلے سے گارڈز کے ہمراہ کھڑا ہوتا ھے ۔۔۔۔۔ ۔
تو نوید انکو کمرے میں لے جاتا ھے ۔۔۔۔
اور پھر وہ حورا کو زخمی حالت میں دیکھ کر پریشان ہوجاتے ہیں لیکن دراب انکو سنبھال لیتا ھے ۔۔۔
پھر وہ روم سے باہر چلا جاتا ہے تاکہ باپ بیٹی اکیلے رہیں
حورا میری بچی میری جان یہ کیا ہوگیا
وہ اسکے ماتھے پڑ پیار کرتے ہیں تھوڑی دیر بعد کمرےمیں سے باہر آکر وہ دراب کا شکریہ ادا کرتے ہیں ۔۔
انکل!
پلیز شکریہ ادا کرکے مجھے مزید شرمندہ نہ کریں
کیونکہ اس میں میرے ڈرائیور کی غلطی ھے اگر وہ دھیان سے چلاتا تو ایسا نہ ہوتا اسکے لیے ایم سو سوری
ادھر دراب خان لے گاڑڈز اور نوید دونوں حیران ہوتے ہیں کیونکہ انکا بوس اور سوری ایمپاسیبل “””””””

نہیں بیٹا آپ سوری نہ بولیں یہ تو اپکا بڑاپن ھے کہ آپ میری بچی کو یہاں لے ائے ورنہ کہاں کوئی ایسا کرتا ہے آجکل کے دور میں ۔۔۔۔
انکل!
اب آپ مزید پریشان نہ ہونا میری ڈاکٹر سے بات ہوئی ھے اب اپکی بیٹی ٹھیک ھے
اور آپ کون کسی بھی چیز کی ضرورت ہوتو مجھے حکم کریں —-
نہیں بیٹا آپکا بہت شکریہ
ویسے آپکا نام کیا ھے؟
دراب خان *
ماشااللہ بہت پیارا نام ھے
اوکے انکل اب مجھے اجازت دیجیے
مجھے کچھ ضروری کام سے جانا ھے میرا اسیسٹنٹ یہی ھے آپکے پاس
نوید تم انکل اور انکی بیٹی کو گھر ڈراپ کر کے پھر واپس انا
اوکے سر!
💞💞💞

زوہیب صاحب کمرے میں انٹر ہوتے ہیں تو حورا کو ہوش آگیا ہوتا ہے
وہ جلدی سے اٹھ رہی ہوتی ہے کہ اسکے سر میں ٹیس سی اٹھتی ھے
آرام سے بچے ابھی زخم تازہ ھے مت اٹھو
پھر زوہیب صاحب رونے لگتے ہیں کہ حورا کہتی ھے کہ پاپا ایم فائن
پلیز آپ پریشان نہ ہوں
پھر کچھ دنوں بعد حورا کو ڈسچارج کردیا جاتا ہے
ادھر فیروزے اور رخسانہ بیگم بہت پریشان ہوتی ہیں وہ ہاسپٹل انا چاہتی ہیں کہ زوہیب صاحب روک دیتے ہیں
پھر فیروزے اور رخسانہ بیگم سب مل کے حورا کا بہت خیال تھکتے ہیں جسکی وجہ سے وہ جلدی ریکور ہوجاتی ہے ۔۔۔۔۔۔

●●●●

ادھر ظہان حیدر شاہ کا ٹکراؤ دراب خان سے ہوتا ہے
تو وہ دونوں ایک دوسرے کو ایسے دیکھتے ہیں جیسے ابھی کہ ابھی ایک دوسرے کو شوٹ کردیں گے اور دونوں کے گاڑڈز کا بھی یہی حال ہوتا ہے

پھر دونوں ہی ایک دوسرے کو غصے سے دیکھ کر چلے جاتے ہیں ۔۔۔۔۔۔
💞💞💞

ادھر زوئی اپنی اور فارب کی پکس شوشل میڈیا پر دے دیتی ہے جسکی وجہ سے پوری دنیا میں فارب شاہ کے افیئر کا تہلکہ مچ جاتا ہے کافی ساری لڑکیاں زوئی کو حسرت بھری نگاہیں سے دیکھ رہی ہوتی ہیں اور فضول سے کمنٹس پاس کر رہی ہوتی ہیں کہ
کاش اس چڑیل کی جگہ میں ہوتی
کاش فارب مجھے ایسے محبت بھری نظروں سے دیکھ رہا ہوتا
کاش یہ کاش وہ ~~~~~~

ادھر فارب بخاری کو جب اس نیوز کا پتا چلتا ھے تو وہ اپے سے باہر ہوجاتا ھے اسکا بیسٹ روپ باہر نکلتا ھے اور پھر پورے آفس میں اسکی صرف ایک گرجدار آواز اتی ھے
اور سارے کے سارے سٹاف کو جیسے سانپ سونگھ جاتا ہے
فارب ان سب کو وارن کرتا ہے کہ تم سب کے پاس صرف اور صرف 2 گھنٹے ہیں

You all have only two hours
I need the reporter, photographer & all the bloody hell who is also involved in this such a cheap pics…… to lose my reputation *

Only two hours
Mind it
So!
Get lost from here………..

Ok boss!

پھر وہ بیچاڑے باہر جاتے ہیں اور ان سب کے بارے میں معلوم کرتے ہیں
کیونکہ وہ اپنے باس کو اچھے سے جانتے ہیں کہ اگر انھوں نے ٹائم پہ کام نہ کیا تو شاید ہی کوئی اسکے قہر سے بچ جائے ۔

💞💞💞

بجو!
بجو و و و
کیا ہوا فیروزے کیوں شور مچا رہی ہو
اف آپ یہاں کیا کررہی ہیں
آئیں چلیں اندر میرے روم میں
پر کیوں؟
چلیں میری ہیلپ کریں نہ کل میں نے شاپنگ پہ جانا ھے اور آپ بھی بتائیں آپ نے کچھ منگوانا ھے بلکہ نہیں آپ بھی میرے ساتھ چلیں
فیروزے باتیں کرتے ہوئے حورا کو اپنے روم میں لے اتی ھے اور نان سٹاپ بولنا شروع کردیتی ھے
اف فیروزے ےےے
بس کرو یار کتنا بولتی ہو تم اف ۔۔
کہاں بولا میں نے
میں تو کافی دیر سے خاموش ہوں 😜

اگر اسے خاموش ہونا کہتے ہیں تو پھر خاموش عوام مر گئی
ہاہاہاہاہاہا ۔۔۔۔
بجو ۔۔
ہاہاہاہاہاہا ۔۔۔۔۔۔۔
اچھا چھوڑیں آپ بتائیں میری چاکلیٹس کہاں ہیں ہاں

او وہ ہ ہ ہ تو میں بھول گئی
کیا اااااااا ۔۔۔۔
پر کیوں ؟
کیسے؟
سو سوری ڈئیر میں بھول گئی پر پکا کل لازم مل جائیں گی ۔۔۔
ہممممممم
ٹھیک جائیں پھر میں آپ سے کل بات کروں گی 😏
جائیں ۔۔۔۔۔
Ok as you wish
پھر حورا تھوڑا سمائل کرتے ہوئے روم سے چلی جاتی ھے °°°
اور فیروزے سینٹی سی شکل بنا کہ روم لاک کردیتی ھے اور منہ پھلا کے بیڈ پر بیٹھ جاتی ھے ۔
ادھر کوئی بڑے غور سے فیروزے کے فیس ایکسپریشن دیکھ رہا ہوتا ھے
اسے حورا پہ کافی غصہ بھی آتا ھے کہ کیوں اسکی لٹل گرل کو چاکلیٹ نہیں دی
پھر اچانک فیروزے کی نظر سائڈٹیبل پر موجود چاکلیٹ باکس پر پڑتی ھے اور یہ کیا
فیروزے چاکلیٹ باکس اٹھاکے اپنا دوبٹہ لہراتے ہوئے ڈانس سٹیپ کرتی ھے پھر بیڈ پر چڑھ کہ گول گول گھومتی ھے اور پھر کچھ دیر یونہی خوشی سے ڈانس سٹیپ کرنے کے بعد بیڈپر بیٹھ جاتی ھے اور مزے اپنی چاکلیٹس کہانے لگتی ھے کیونکہ وہ تھی چاکلیٹ کی دیوانی ایسے موقعوں پہ جب اسے اسکی فیورٹ چیز چاہے آئسکریم ہویا چاکلیٹ ہو یا اسکی فیورٹ چیزوں میں سے کچھ بھی
اسکی خوشی کا اندازہ اسکے ڈانس سٹیپ سے بیاں ہوتا
اور پھر یہ کیا پورے روم میں فیروزے کی خوبصورت کھنکتی ہنسی گونجتی ھے
اور پھر سے کوئی اسے دلچسپی سے دیکھنے کے ساتھ اسکے ایک ایک فیس ایکسپریشن کو نوٹ کر رہا ہوتا ھے اگرچہ وہ کتنا ہی ڈسٹرب کیوں نہ تھا لیکن اپنے لو کو دیکھ اسکے چہرے کی ساری تھکاوٹ ارن چھو ہوگئی
اور پھر وہ اس حسین لڑکی کی ہنسی میں کہیں کھو جاتا ہے

This is me
All of me ‘
And I’m yours .”

Ahhhhhhh
Kizlarim

The memory of your smile was recorded in my heart

💗💗💗

–**–**–
جاری ہے
——
آپکو یہ ناول کیسا لگا؟
کمنٹس میں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Novels

Signup for Novels and get notified when we publish new Novel for free!




%d bloggers like this: