The Moon Of Lunar Night Novel by Bella Bukhari – Last Episode 40

0
دی مون آف لونر نائیٹ از بیلا بخاری – آخری قسط نمبر 40

–**–**–

 

شیری ۔۔۔۔۔۔
کیوٹ ہیرو ۔۔۔۔۔

کہاں ہوں ۔۔۔؟؟؟

وہ جو فارب کے ساتھ ملکر انکے لئیے سرپرائز پلین کررہا تھا حورا کی آوز سنتا ھے

شیری کال مت کاٹنا مجھے اپنی معصوم سی بہن کی آواز سننی ھے فارب کے کہنے پر وہ سیل فون سامنے رکھتا ھے جہاں سے حورا اسکے کمرے میں آتی ھے ۔۔۔

کیوٹ ہیرو آج میں بہت ذیادہ خوش ہوں اور اپنے پیارے سب سے پیارے بھائی کو بھی اپنی خوشی میں شامل کرنا چاھتی ہوں ۔۔

شیری تمہیں پتا ھے آج ہم واپس جارہے ہیں ظہان سے میری بات ہوگئی ھے ۔۔۔

رئیلی سس ہم واپس جارہے ہیں ۔۔۔

بلکل شیری
اف میں اتنی اتنی ذیادہ خوش ہوں کیا بتاو ۔۔۔۔

اوکے حورا سس آپ چلیں اب یہاں آرام سے بیٹھیں آپ مکمل ٹھیک ہوگئی مگر اتنے عرصے بعد آپ چل رہی تو کچھ دن تک احتیاط سے کام لینا پڑے گا ۔۔

ہہم تم ٹھیک کہہ رہے ہوں شیری پھر وہ دونوں ہی بیٹھ جاتے ہیں ۔۔۔۔

اچھا سس آپ کہہ رہی تھی میں آپ کا سب سے ذیادہ بہت ذیادہ پیارا بھائی ہوں وہ جان بوجھ کر فارب کو تنگ کرنے کی غرض سے حورا سے پوچھ رہا تھا ۔۔۔

Off course
You are the world best ever best bro my cute hero

فارب تو سچ میں اب جیلس ہوگیا تھا مگر وہ فلحال کنٹرول کررہا تھا کیونکہ ابھی وہ حورا سے بات نہیں کرسکتا تھامگر ڈیڑھ سال بعد وہ اسکی آواز سن رہا تھا تو اسکے لیئے یہی کافی تھا ۔۔۔۔

شیری مجھے سب کی بہت یاد آتی ھے
پاپا ممی فیروزے
آیت مماجانی اور بابا سائیں کی ان سب کی بہت یاد آتی تھی مگر اب میں خوش ہوں کی آج ان سب سے ملو گی ۔۔۔۔

وہ سب کا ذکر کرتی ھے سوائے فارب کے شاید جذبات میں وہ فارب کو بھول گئی تھی فارب نے یہ بات شدت سے محسوس کی تھی ۔۔۔۔

حورا سس ایک بات کہوں یہاں سے واپس جانے کا میرا دل نہیں چاہ رہا یہاں سب کچھ بہت خوبصورت ھے اور خاص طور پر آپ کے ساتھ میں ذیادہ سے ذیادہ ٹائم سپینڈ کررہا تھا واپس جاتے ہی آپکو آیت،فیروزے اور فارب برو گھیرے میں لے لیں گے اور میں پھر سے اکیلا ہوجاو گا ۔۔۔

میرے کیوٹ ہیرو اگر تمہارا دل نہیں ھے تو ہم نہیں جاتے سب کو یہیں بلوالیتے ہیں اب تم اداس نا ہوں

مگر حورا سس آپ میری خاطر اپنا ارادہ ملتوی کر رہی ہیں کیا میں آپ کے لیئے اتنا اہم ہوں ۔۔۔؟؟؟

چلو کیوٹ ہیرو تمہیں ایک چھوٹی سی سٹوری سناتی ہوں اس سٹوری میں تمہیں اپنے سوال کا جواب مل جائے گا ۔۔۔

ایک فیملی ہنسی خوشی رہ رہی تھی ان کے گھر میں ہر آسائش تھی وہ فیملی پر سکوں زندگی بسر کر رہی تھی وہاں صرف اور صرف ایک چیز کی کمی تھی پتا ھے وہ کمی کیا تھی اس لڑکی کی صرف ایک بہن تھی مگر بھائی نہیں تھا وہ روزانہ دعا مانگتی تھی کہ اسکا بھی بھائی آجائے وقت گزرتا گیا اور وہ لڑکی بھی سمجھدار ہوگئی تھی مگر نا جانے کیوں اس نے اپنی دعا مانگنی نہیں چھوڑی وہ اب بھی اپنے لئیے بھائی مانگتی تھی اور پھر وہ دن بھی آگیا کہ اللہ تعالی نے اس کی دعا سن لی اور اسے ایک بھائی کے بدلے دو بھائی مل گئے اور جیسے کہ بڑا بھائی بہت ذمہ دار ہوتا ھے تو اسکا بھی بڑا بھائی بہت لونگ اور کئرنگ تھا اور چھوٹا بھائی بھی بہت پیارا تھا اس لڑکی کو اپنا چھوٹا بھائی بہت پیارا تھا بڑا بھائی بھی تھا مگر چھوٹا تھوڑا سا ذیادہ پیارا تھا وہ اسکا بہت خیال رکھتی تھی کیونکہ وہ جیسے اپنے بھائی کی دعا مانگتی تھی کہ اسے کبھی بھی اداس نہیں ہونے دے گی اور ہمیشہ اسکی خواہش پوری کرنے کی کوشش کرے گی تو وہ اپنے کہے پر عمل کرتی تھی ۔۔۔۔۔

مجھے سمجھ آگیا سس وہ لڑکی آپ تھی اور آپ کے دو بھائی فارب برو اور میں ہوں مطلب آپ مجھے دعاوں میں مانگتی تھی میں کتنا لکی ہوں آپ کو پتا ھے آیت کے ہوتے ہوئے مجھے بڑی بہن کی کمی ہر وقت محسوس ہوتی تھی فارب برو ہر ممکن کوشش کرتے تھے کہ ہمیں کسی بھی چیز کی کمی محسوس نا ہو مگر یہ وہ بات ھے جو آج میں آپ کو بتا رہا ہوں اور مجھے خوشی ھے کہ مجھے لونگ سس ملی ھے ۔۔۔

اینجل ۔۔۔۔۔
ناٹ فیئر
آپکے کیوٹ ہیرو کی آپ کی زندگی میں بہت اہمیت ھے تو پھر میں کہاں ہوں ۔۔۔۔؟؟

ظہان آپ کب آئے ۔۔۔؟؟؟

تب جب میری اینجل سٹوری سنا رہی تھی ۔۔۔۔

حورا سس بھائی جیلس ہورہے ہیں ۔۔۔۔

حورا اسکے پاس جاتی ھے ۔۔۔

ظہان اہمیت بتائی نہیں جاتی بلکہ محسوس کی جاتی ھے اور آپ جانتے آپ میرے لئیے کتنے لازم ہیں ۔۔۔۔

ظہان اسکے ماتھے پر کس کرتا ھے ۔۔۔
اینجل میں جانتا ہوں بس تھوڑا سا تنگ کررہا تھا ۔۔۔۔

وہ شیری کو اشارہ کرتا ھے اور پھر دونوں ہی ظہان کی باہوں میں تھے ۔۔۔۔

مجھے اپنی ساری فیملی سے پیار ھے مگر اینجل سے بہت ذیادہ پیار ھے ۔۔۔۔

ظہان اب ہم واپس نہیں جارہے۔۔

کیوں صبح تو آرڈر دیے جارہے تھے ۔۔۔۔

ظہان بھائی ہم جارہے ہیں

مگر شیری ۔۔۔۔

حورا سس میں تو بس مذاق کررہا تھا پھر ہم واپس آجائیں گے یہاں کیوں بھائی ۔۔۔۔

کیوں نہیں تمہیں اپنی ویکنڈ والی بات تو یاد ھے ناں تو ویکنڈ پر آیا کریں گے ۔۔۔

اینجل ٹھیک ھے ناں ۔۔۔
اسطرح شیری کی سڈیز بھی ایفیکٹ نہیں ہونگی ۔۔۔۔

اوکے بھائی جیسے آپ کا حکم

مطلب شیری تم جان نہیں چھوڑنے والے کباب میں ہڈی بنو گے ۔۔۔۔

حورا جو اپنی ظہان اور شیری کی پیکنگ کرتی ھے اور پھر وہ حویلی کی طرف روانہ ہوجاتے ہیں ۔

حنان آپ ابھی تک نہیں آئے میں نے آپ سے کہا بھی تھا آج ظہان بھائی حورا سس کے ساتھ واپس آرہے ہیں اورآپ ہیں کہ ابھی تک گھر ہی واپس نہیں آئیں ۔۔۔۔۔

ہنی یار بات تو سنو ۔۔۔۔

ابھی میٹنگ ختم ہوئی ھے اور میں بس پہنچنے والا ہوں ۔۔۔

آیت جو لائٹ براون کلر کے ڈریس پہن کر تیار کھڑی تھی اور ساتھ ساتھ حنان سے بات بھی کرری تھی ۔۔۔۔

ہنی ناراض کیوں ہورہی ہوں تم بس آنکھیں بند کرو میں تمہارے سامنے ہوں گا مگر ۔۔۔

اوکے ۔۔۔۔

آیت جیسے ہی آنکھیں بند کرتی ھے اسے اپنی کمر پر ہاتھ محسوس ہوتا ھے وہ جھٹ سے آنکھیں کھولتی ھے اور اسکی حنان کی طرف پیٹھ تھی
آپ اگر آگئے تھے تو مجھے بتا دیتے آج آپ پر اتنا غصہ ہوگئی ۔۔

کوئی بات نہیں آج پہلی بار تمہارا غصے والا روپ دیکھنے کو ملا ۔۔۔۔

سوری حنان وہ بس بھائی اور بھابھی سے ملنے کے لئیے ایکسایٹڈ تھی تو ۔۔۔

جان حنان ۔۔۔۔
بہت بہت خوبصورت لگ رہی ہوں ۔۔۔

آیت کو اپنے ماتھے پر اسکا پیار بھرا لمس محسوس ہوتا ھے اور وہ بند آنکھوں کے ساتھ حنان کے پیار کو محسوس کررہی تھی وہ کتنے دیر ایک دوسرے کو محسوس کرتے رہتے ہیں اور ان لمحوں کا فسوں آیت کے سیل فون پر آنے والی کال سے ٹوٹتا ھے ۔۔۔۔

فارب بھائی کی کال ھے

اوکے ہنی تم بات کرو تب تک میں فریش ہوکر آتا ہوں ۔۔

جی بھائی ۔۔۔۔

آیت گڑیا کہاں ہوں سب آگئے ہیں تم کب تک آو گی ظہان کچھ ہی دیر میں پہنچنے والا ھے ۔۔۔

بس بھائی ہم بھی پہنچنے والے ہیں ۔۔۔۔

حنان وہ بھائی آنے والے ہیں ہم تو لیٹ ہوجائیں گے ۔۔۔

ریلیکس ہنی ہم پہلے پہنچ جائیں گے ٹرسٹ می ۔۔۔

پھر حنان اپنے کہے کے مطابق آیت کو حویلی پہنچاتا ھے اور پھر سب ہی بے صبری سے ان سب کا انتظار کررہے تھے ۔۔۔

بالآخر انتظار کی گھڑیاں ختم ہوئی حورا ۔۔۔۔
ظہان اور شیری کے ساتھ حویلی میں داخل ہوتی ھے اوراس کے ہر قدم کے ساتھ پھولوں کی بارش کی جارہی تھی حورا تو بہت خوش ہوکر چل رہی تھی اور حویلی کو بہت خوبصورتی سے سجایا گیا تھا وہ اتنی خوبصورت حویلی کو دیکھ رہی تھی اور اس خاص استقبال پر اسکی آنکھوں میں آنسو آگئے تھے ۔۔۔

حورا سب سے پہلے اپنے پاپا سے ملتی ھے وہ اپنی پرسسز کو صحیح سلامت دیکھ کر اپنے رب کا شکر ادا کررہے تھے پھر وہ اپنی ممی سے ملتی ھے اسی دوران ظہان اور شیری بھی سب سے مل رہے تھے سکندر شاہ اور آیت بیگم سے ملنے کے بعد آیت اور فیروزے کی باری آتی ھے اور وہ دونوں ہی حورا کو اپنے ساتھ اندر لے جاتی ہیں اور ان دونوں کی بے صبری پر سب ہنس رہے تھے ۔۔۔

سب اب ڈرائنگ روم میں باتیں کر رہے تھے ۔۔۔

بجو

I misssssss you a lottttttt……..

فیروزے دور ہو جاو مجھے بھی بات کرنے دو آیت جو کب سے فیروزے کے لاڈ دیکھ رہی تھی آخر بول پڑتی ھے ۔۔۔

کیوں ۔۔۔۔
فیروزے اپنی بجو کو اور مضبوطی سے پکڑ لیتی ھے ۔۔۔۔

اف فیروزے ۔۔۔۔

ادھر آجاو آیت ۔۔۔

وہ جلدی سے حورا کے پاس بیٹھتی ھے اور پھر گلے ملتی ھے حورا بھابھی آپ کو بہت یاد کیا اور شکر ھے آج آپ سے مل بھی لیا ۔۔۔

میں نے تمہیں بہت یاد کیا آیت ۔۔۔

بجو آپ نے مجھے نہیں یاد کیا جائیں میں اب آپ سے بات نہیں کررہی اور خبردار آیت اب اگر تم ظہان بھائی کے پاس آئی اور لیں جی فیروزے اپنے بھائی کو شکایتیں لگانے پہنچ چکی تھی ۔۔

آیت یہ ایسے ہی بول کر گئی ھے کچھ دیر بعد میرے پاس آجائے گی تم بتاو تم خوش تو ہو ناں حنان کا رویہ کیسا ھے تمہارے ساتھ مجھے سب بتاو ۔۔۔۔

میں بہت خوش ہوں اور وہ میرا بہت خیال رکھتے ہیں اور انکی فیملی بھی بہت ذیادہ پیار کرتی ھے ۔۔۔۔

حورا غور سے آیت کی آنکھوں کی چمک دیکھ رہی تھی جو حنان کے ذکر پر بلش کررہی تھی ۔۔۔۔

اوو تو میری شکایتیں لگائی جارہی ہیں ۔۔۔۔

حنان ان دونوں کے پاس آتا ھے کیونکہ آیت اسکی طرف دیکھ کر بات کررہی تھی ۔۔۔

نہیں تو ۔۔۔۔

آیت تم چپ رہو ہاں تو حنان میری بات غور سے سنو میری بہن کو ہمیشہ خوش رکھنا میں شادی میں نہیں تھی ورنہ یہ نصیحت اس دن کرتی ۔۔۔۔

میں آیت کو خوش نہیں رکھو گا ۔۔۔

حورا اور آیت اسکی طرف سکتے میں دیکھتی ہیں آیت کی آنکھوں میں آنسو آجاتے ہیں وہ جو اتنے دنوں سے سمجھ رہی تھی کہ حنان نے اسے معاف کردیا وہ سب اسکی خوش فہمی تھی ۔۔۔۔

بلکہ بہت ذیادہ خوش رکھوں گا وہ اپنی بات مکمل کرتا ھے ۔۔۔

اف حنان تم نے تو ڈرا ہی دیا ۔۔۔

آیت کی حالت تو دیکھو حنان بری بات ۔۔۔۔

اوکے سوری آیت میں تو ابھی بات کررہا تھا اور تم نے میری پوری بات سنے بغیر ہی خود ہی سوچنا شروع کردیا ۔۔۔۔

چلو حنان جب تک تم اسے مناو میں آرہی ہوں ۔۔۔۔

حورا اب بے تاب سی اپنے بھائی کو ڈھونڈ رہی تھی جو اسے کہیں بھی نظر نہیں آرہا تھا وہ اوپر کی طرف جاتی ھے تاکہ فارب کو ڈھونڈ سکے کیونکہ سب ہی باتیں کررہے تھے اور وہ کسی سے پوچھ بھی نہیں سکتی تھی مگر ظہان کا دھیان اپنی اینجل پر ہی تھا وہ جلدی سے اسکے پاس جاتا ھے تاکہ اسکی اینجل مزید پریشان نا ہوں ۔۔۔۔

اینجل ۔۔۔۔۔

ظہان وہ فارب بھائی کہاں ہیں میں انہیں کب سے ڈھونڈ رہی تھی مگر مجھے کہیں بھی نہیں مل رہے وہ مجھ سے ناراض ہیں ۔۔۔

آپ کو پتا ھے کہ وہ کہاں ہیں ۔۔۔

ہہم ایک شرط پر بتاو گا ۔۔۔۔

مجھے منظور ھے ۔۔۔

ارے پہلے جان تو لوں میری شرط یہ ھے فارب سے ملنے کے بعد تم ریسٹ کرو گی اور دوائی بھی کھاو گی تمہیں پتا تو ھے ڈاکٹر نے ابھی کچھ دن مزید احتیاط کرنے کا کہا ھے ۔۔۔

مگر ظہان میں سب کے ساتھ کچھ دیر بیٹھنا چاہتی ہوں ۔۔۔

ہاں تو اینجل سب یہیں پر ہیں رات آپ پھر باتیں کر لینا ۔۔۔۔

اولے ویسے آپ ٹھیک نہیں کررہے ظہان اگر میں فارب بھائی کی وجہ سے مجبور نا ہوتی تو آپ کی بات ہرگز نا مانتی ۔۔۔۔

اینجل ۔۔۔۔

اف اب بتائیں بھی کہاں ھے میرا بھائی ۔۔۔۔

تم سے چند قدم دور بالکنی میں ۔۔۔

حورا بھاگ کر اس طرف جاتی ھے اینجل دھیان سے ۔۔۔۔

فارب بھائی ۔۔۔۔۔

وہ اسکے پاس جاتی ھے اور اسکے ساتھ کھڑی تھی ۔۔۔

آپ کو پتا ھے میں نے سب سے ذیادہ کسے یاد کیا ۔۔۔۔

فارب اسکی طرف دیکھتا ھے ۔۔۔

آپ کو ۔۔۔
اپنے لونگ کئرنگ بھائی کو آپ ظہان کو جب بھی کال کرتے تھے مجھے پتا ہوتا تھا میرا بھی آپ سے بات کرنے کا دل کرتا تھا مگر دوائیوں کے زیراثر میں ذیادہ تر سوتی رہتی تھی تو آپ سے بات نہیں کرسکتی تھی ۔۔

حورا رو رہی تھی اور فارب کہاں برداشت کرسکتا تھا کہ اسکی بہن کی آنکھوں میں آنسو آئیں وہ اسے چپ کراتا ھے ۔۔۔

میں نے بھی بہت مس کیا تم نہیں جانتی حورا جب تم ہوش میں نہیں آرہی تھی ظہان تو پریشان تھا میری بھی جان پہ بن آئی تھی اور پھر جب ظہان تمہیں اپنے ساتھ لے کر چلا گیا تھا تب میں نے بہت مشکل سے سب کو سنبھالا تھا
وہ فارب جو ہر وقت بہادر نظر آتا تھا رات کے وقت روتا رہتا تھا اور اپنی پیاری سی بہن کی سلامتی کی دعائیں مانگتا رہتا تھا۔۔۔۔

اور اب میں بہت خوش ہوں میری پیاری بہن واپس آگئی ھے ۔۔۔۔

حورا تم میری بہن ہی رہنا سالی مت بننا ۔۔۔

کیا مطلب ۔۔۔۔۔

فیروزے اور میرا نکاح ہوچکا ھے اور میں نے ہی ظہان کو منع کیا تھا کہ وہ تمہیں نا بتائے ۔۔۔
پلیز اب تم ناراض مت ہونا ۔۔۔

ہہم سوچوں گی ۔۔۔۔

اوکے پھر آپ بھی اپنی ناراضگی ختم کریں میں جانتی ہوں صبح جب میں شیری سے بات کررہی تھی آپ سب کچھ سن رہے تھے۔۔۔

اوو مطلب میری بہن جان بوجھ کر تنگ کررہی تھی اوکے میں ناراض نہیں ہوں اور اپنی پیاری بہن سے بلکل بھی نہیں ۔۔۔

آپ کو ایک راز کی بات بتاو ۔۔۔۔

آپ اور فیروزے کا نکاح میری خواہش پر ہوا ھے ۔۔۔۔

آپ کی آنکھوں میں میں نے فیروزے کے لئیے محبت دیکھ چکی تھی اور میں نے باباسائیں اور پاپا سے بات کرلی تھی اور شادی کے بعد سرپرائز دینے والی تھی مگر اس حادثے کی وجہ سے ایسا نا ہو پایا مگر یہ جان کر میں خوش ہوں ۔۔۔۔

اپنے بھائی کی خوشی میں کیسے نہیں جان سکتی تھی ۔۔

حورا ۔۔۔۔

Thanks a lot

You are best sis

اب بہن بھائی کا روٹھنا منانا ہوچکا ہو تو کیا میں اپنی اینجل کو اپنے ساتھ لے جاسکتا ہوں اگر دا گریٹ فارب کی اجازت ہوں تو ۔۔۔۔۔

ہاہاہاہاہاہا ۔۔۔
کیوں نہیں جگر تیری بیوی ھے تیری مرضی چلے گی ۔۔۔۔

ہونہہ ایک شیری کیا کم تھا جو اب تو بھی ۔۔۔۔

اف ظہان خبردار جو آپ نے کچھ بھی کہا میرے بھائیوں کو آپ کو یاد ھے ناں میں پکی والی ناراض ہوجاو گی ۔۔۔۔

فارب آنکھ مارتا ھے اور پھر چلا جاتا ھے ۔۔۔۔

یار اینجل کچھ تو خیال کر لیا کرو ۔۔۔

کیوں میں کیوں خیال کرو آپ ہر وقت کیوں میرے بھائیوں کے پیچھے پڑے رہتے ہیں ۔۔۔

اوکے اوکے غصہ تو نا ہوں ۔۔۔

پھر سب رات کو ایک ساتھ ڈنر کرتے ہیں اور اسطرح ہنسی خوشی خوبصورت رات کا اختتام ہوتا ھے ڈنر کے دوران فارب اپنی فیروزے کو دیکھتا رہتا ھے مگر وہ ہمیشہ کی طرح اسے اگنور کردیتی ھے ۔۔۔۔

So guy’s how was the epi…….?

Give a stuning response ….

Agr like & coments zyada na huey tu mi b Horra ki trha pka wali naraz hojaon gi 🙈😇

 

فون کی مسلسل بیل پر فیروزے کی آنکھ کھلتی ھے اور وہ بنا کچھ دیکھے کال اٹینڈ کرتی ھے……

کیا صبح صبح مصیبت آگئ ھے..

کونسی آفت….

نہیں نہیں کونسی قیامت آ گئ..

بلکہ کس بلے نے کاٹا جو مجھ معصوم کی اتنی پیاری سی نیند کو بھگا دیا….

آخر میں نے تم سب کا کیا بگاڑا ھے جو سب میری معصوم سی پیاری سی کیوٹ سی نیند کے پیچھے پڑ گئے ہو ۔۔۔۔۔؟

ہاں بولو بھی اب یا ایویں میرا موڈ خراب کرنے کیلئے کال کی ۔۔۔

بولو بھ۔۔۔۔۔۔۔

ابھی فیروزے مزید اس شخص کی عزت افزائی کرتی کہ دوسری طرف سے آواز آتی ھے ۔۔۔۔۔

Relax…..

Relax babe I’m your man ……..

And i think you ……

ابھی اس شخص نے اپنی بات مکمل ہی نہیں کی تھی کہ فیروزے اس کی بات کاٹ دیتی ہے ۔۔۔۔

Wait wait……

What you mean that you are my man…..?

Ha I mean what the shit….🙄

او ہیلو مسٹر ایکس وائے زی ۔ ۔۔۔

تم جو کوئی بھی ہو مجھے اس سے فرق نہیں پڑتا اگر فرق پڑتا ھے تو اس بات سے کہ تم ایڈیٹ کی وجہ سے میری صبح کی نیند خراب ہوئی اور کیا مطلب ہے اس بات کا کہ

I’m your man……..?

ہاں او ہیلو بھائ۔۔۔۔۔

اور دوسری طرف موجود شخص پہلے تو فیروزے کی ڈانٹ کو اینجوائے کررہا تھا مگر اسکے بھائی لفظ کہنے سے جو کہ ابھی فیروزے کے پورا کرنے سے پہلے ہی وہ کاٹ چکا تھا اور غصے سے زور سے دھاڑتا ھے ۔۔۔۔

Shut up…….

Just shut up you idiot girl you damn…….

You…….

وہ جو ارلی مورننگ فیروزے کے گھر اسے اپنے ساتھ رات کو ڈنر پر لے جانے کا کہنے آتا ھے اور ناجانے کب سے فیروزے کے جاگنے کا انتظار کر رہا تھا کیونکہ وہ تقریبا دو گھنٹے سے فیروزے کے جاگنے کا ویٹ کررہا تھا اس لیے وہ زوہیب صاحب اور رخسانہ بیگم کے ساتھ گپ شپ کررہا تھا اور وہ میڈم اٹھنے کا نام نہیں لے رہی تھی تو رخسانہ بیگم فارب کی بے چین نگاہوں کو سمجھتے ہوئے فارب سے خود کہتی ہیں کہ۔۔۔۔۔۔

فارب بچے آپ فیروزے کے روم میں چلے جائیں میں جب تک بریک فاسٹ ریڈی کرواتی ہوں ۔۔۔

اور یہ سنتے ہی فارب نے اپنے قدم تیزی سے فیروزے کے روم میں بڑھائے لیکن اس سے پہلے وہ فیروزے کو کال کرتا ھے تاکہ وہ اٹھ جائے پر اس نے تو غصے میں فارب بخاری کو ناجانے کیا کیا سنا ڈالا اور اوپر سے اسے یعنی فارب بخاری کو بھائی کہنے لگی تھی تو فارب کا فیروزے پر غصہ تو بنتا تھا نہ تو وہ فیروزے کے روم میں جانے سے پہلے اس نے اپنے غصے کو قابو کرنا چاہا مگر پھر وہ ڈور کو ناک کیے بنا انٹر ہوتا ھے ۔۔۔۔۔

اور فیروزے جو پہلے سے ہی فارب کے کال پر چلانے سے سہمی بیٹھی ہوتی ہے تو فارب کو اپنے سامنے دیکھ کر مزید ڈر کر اپنی آنکھوں پر ہاتھ رکھ دیتی ہے ۔۔۔۔۔۔

اور فارب بخاری تو اپنی فیروزے کی اس ادا پر دل و جان سے فدا ہوگیا تھا ۔۔ ۔۔۔

پھر وہ دھیرے دھیرے قدم اٹھاتے ہوئے فیروزے کے پاس بیڈ پر بیٹھتا ھے اور پھر فیروزے کے دونوں ہاتھوں کو اس کے منہ سے ہٹاتا ھے ۔۔۔۔

اور پھر بڑی ہی نرماہٹ کے ساتھ فیروزے کے ہاتھوں کو اپنے ہاتھوں کی گرفت میں لیتا ھے ۔۔۔

پھر فارب بخاری کی ڈارک براون آئیز فیروزے کے خوبصورت سے حسین چہرے کا طواف کرتی ہیں ۔۔۔۔

اور وہ نظریں جھکائے اپنے ڈر کو قابو کررہی تھی کیونکہ وہ فارب کی دھاڑ پر کافی حد تک ڈر گئی تھی ۔۔۔۔

تو فارب فیروزے کے کپکپاتے ہاتھوں سے اسکے ڈرنے کی وجہ جان گیا تھا پھر وہ فیروزے کو جھٹکے سے اپنی طرف کھنچتا ھے اور فیروزے کے گرد اپنی باہوں کا گھیرا بناتا ھے اور فیروزے جو پہلے ہی سے سہمی ہوئی تھی اسے تو جیسے سہارے کی ضرورت تھی ۔۔۔۔

پھر وہ فارب کو ٹائٹلی ہگ کرتی ھے تاکہ اپنا ڈر کم کرسکے اور فارب بھی فیروزے کو خود میں مزید بھینچ لیتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔

Hi……

Hi princess don’t cry…..

I’m I’m really really very sorry……

Please don’t cry my beauty Queen…..

اور یہ کیا فیروزے فارب کے سوری کہنے سے مزید رونے لگتی ھے جسکی وجہ سے فارب کافی پریشان ہوجاتا ھے اور وہ خود کو ملامت کرتا ھے کہ کیوں اس نے اس پیاری سی لڑکی کو ڈانٹا جس میں اسکی جان بستی ھے ۔۔۔۔۔

پھر وہ فیروزے کے آنسو صاف کرنے کیلئے اسے اپنی باہوں کے حصار سے ہٹانے کی کوشش کرتا ہے مگر فیروزے ایسا نہیں کرنے دیتی اور وہ مزید خود کو فارب کی باہوں میں چھپاتی ھے ۔۔۔۔

تو فارب فیروزے کو سمجھاتا ھے ۔۔۔۔

Hi my Queen why are you crying……?

I’m not angry with you…..

I’m so sorry my love……..

I’m so sorry my heart my soulmate my Queen…….

Please don’t cry……..

I’m not shouting at you…

Your tears hurt me please don’t cry………….

Ok ,,,,
I willnot be angry with my princess , neither in the morning nor in the evening……

So be happy……..

I …….””””

ابھی وہ کچھ کہتا فیروزے اسے چپ کرا دیتی ہے ۔۔۔۔

آ پ نے مجھے اتنے زور سے ڈانٹا مم میں ڈر گئی ۔۔۔۔۔

اا ۔۔۔اس طرح بھلا کوئی کسی کو ڈانٹتا ھے وہ بھی ارلی مورننگ ۔۔۔۔

Hmmmm ….

Point to be noted…….🤔

یو مین کہ میں ارلی مورننگ نہ ڈانٹوں بس پھر رات کو یا شام کو یا کسی اور ٹائم ڈانٹ سکتا ہوں ۔۔۔

So i promise I will not shout at you in the morning…..

Otherwise……..

وہ جو فارب کے سوری کہنے اور اسکے نرم لہجے میں بات کرنے سے سے کچھ نارمل ہو رہی تھی ۔۔۔

فارب کے دوبارہ ڈانٹنے سے فورا فارب کے چہرے کی طرف دیکھتی ھے اور بہت ہی معصوم سے انداز میں فارب کی گردن میں اپنی باہوں کا ہار بنا کر فارب سے اپنی پیاری سی ہیزل برائون آئز فارب بخاری کی ڈارک براون آئیز میں ڈال کر بہت ہی معصومیت سے پوچھتی ھے کہ ۔۔۔۔۔۔

اچھا کیا واقعی آپ مجھے ارلی مورننگ نہیں ڈانٹیں گے پر آپ دوپہر کو شام کو اور رات کو مجھ پر شاوٹ کریں گے مجھے ڈانٹیں گے ۔۔۔۔۔

فیروزے منہ پھلا کے کہتی ھے ۔۔۔۔۔

اور فارب وہ تو پہلے ہی فیروزے کے اپنے اتنے قریب آنے پر نہیں سنبھلا تھا کہ فیروزے کے چہرے کو اپنے بے حد قریب دیکھ کر اور اوپر سے فیروزے کی نیند سے آدھی جاگی اور آدھی سوئی ہیزل برائون آئز میں خود کو کھو رہا تھا ۔۔۔۔

کہ وہ خود پر بڑی مشکل سے جبر کیے ہوئے تھا کیونکہ فیروزے تھی ہی اتنی پیاری کہ فارب بخاری نہ چاہتے ہوئے بھی خود کو کوئی گستاخی کرنے سے روک گیا ۔۔۔۔۔۔

جب فارب بخاری نے فیروزے کے پوچھنے پر کوئی رسپانس نہیں دیا تو فیروزے پھر سے فارب سے پوچھتی ھے ۔۔۔۔۔

جلاد بولو نہ ۔۔۔۔۔

جلاد ۔۔۔۔۔۔

اور فارب بخاری کہاں فیروزے کی بات سنتا اسکی تو نظریں فیروزے کے چہرے کا طواف کررہی تھیں ۔۔۔۔۔۔

“دم گفتار تیرے ہونٹ سے رستی
ہوئی بات

جیسے یاقوت کی سل چیر کے
جھرنا پھوٹے “”””

بلاآخر فیروزے دوبارہ سے فارب کو کندھوں سے پکڑ کر ہلاتی ہے پھر وہ ہوش کی دنیا میں آتا ھے ۔۔۔۔۔

Yes….
Yes princess…….
What are you saying……?

کب سے میں آپ سے کہہ رہی ہوں کہ کیا آپ واقعی میں مجھ پر شاوٹ کریں گے،،، مجھے ڈانٹیں گے ۔۔۔۔۔؟؟؟؟

اممممم ۔۔۔۔۔۔

سوچنے دو فارب شرارت سے فیروزے کی آنکھوں میں دیکھتا ھے جو مزے سے فارب کے گلے میں اپنی باہوں کا ہار بنائے بڑی معصومیت سے فارب کے جواب کا ویٹ کررہی تھی ۔۔۔۔۔۔

بولیں نہ جلاد ۔۔۔۔۔

امممممممم۔۔۔۔۔
ہاں میں صرف شام کو اور رات کو ڈانٹتوں گا صبح نہیں ۔۔۔۔

اوکے اب ہیپی ہو میری جان ۔۔۔۔۔؟

یہ کہنے کی دیر تھی کہ فیروزے پھر سے رونے لگتی ھے اور فارب صیح معنی میں پریشان ہوجاتا ھے ۔۔۔۔۔

Hi ……
Hi princess ……..

I’m not shouting at you..

Your tears hurt me please don’t cry………

Ok i promise , i will not be angry with my princess , neither in the morning nor in the evening ……

Ok now my dear be happy don’t cry anymore.

♡♡♡♡♡♡♡

پھر فارب بڑی مشکل سے فیروزے کو چپ کراتا ھے جو اسی کے گلے لگ کر اسی کی شکایت کررہی تھی ۔۔۔۔۔

Ferozay please love don’t cry…….

Please…….

کک کیوں نہ کرائے کروں آ آ آپ پپ پھر سے مجھ پر شاوٹ کریں گے ۔۔۔۔

آپ بب بہت برے ہیں ۔۔۔۔۔
مم میں آپ سے ہرگز بات نہیں کروں گی ۔۔۔۔

صبح صبح مجھے رولا دیا پپ پتا نہیں کہاں سے آجاتے ہیں آپ جج جلاد کہیں کے ۔۔۔۔۔

Ferozay my cutipie listen to me love…..

نن نہیں ۔۔۔۔۔

مم میں آپ کی کوئی بھی بات نہیں سنوں گی بہت برے ہیں آپ بہت گندے جج جلاد ہیں آپ ۔۔۔۔۔۔۔

اور فارب بخاری کے چہرے پر فیروزے کے شکوے سن کر سمائل آجاتی ھے پھر وہ فیروزے کو ویسے ہی ہگ کیے بیٹھا رہتا ھے اور ساتھ ساتھ فیروزے کے بالوں میں ہاتھ پھیرتا ھے اور اسے کان میں سرگوشی کرتا ہے کہ ۔۔۔۔۔۔

Ferozay……..

My love tonight i have a surprise for you……

You have to be ready in the evening .This is your dress .I will to pick you up in the evening…….

اور فیروزے وہ تو فارب کی سرگوشیاں اپنے کان میں سنتی ہوئی بلش کرجاتی ھے کیونکہ یہ سب کہتے ہوئے فارب کے ہونٹ فیروزے کے کان کو بولتے ہوئے بوسہ دے رہے تھے ۔۔۔۔۔۔

Ok princess you got it….

پھر وہ ہمت کر کے بولتی ھے نن نہیں ۔۔۔
مم میں نہیں جاوں گی آپ کے ساتھ مجھےکوئی سرپرائز نہیں چاہیے ۔۔۔۔۔

But why my love……??

فارب فیروزے کے منا کرنے کی وجہ پوچھتا ھے تو وہ کہتی ھے ۔۔۔۔

مم میری مرضی میں جج جاوں یا نہیں ۔۔۔۔۔

اور اس بات پر فارب کے ہونٹوں پر بل آتے ہیں کیونکہ فیروزے نے اتنے لاڈ سے کہا کہ فارب بخاری کو اس پر ٹوٹ کے پیار آیا جس سے وہ فیروزے کے ہیڈ پر کس کرتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔

اور فیروزے بڑے آرام سے فارب کو ہگ کیے اسکے کندھے پر سر رکھے ہلکی ہلکی نیند کی وادی میں جانے لگ رہی تھی جو کہ فارب کو بھی لگا کہ اسکی کیوٹی پائی سونے لگی ھے تو پھر وہ فیروزے سے کوئی بات نہیں کرتا اور ہولے ہولے اسکی پیٹھ تھپکتا رہتا ھے جس سے فیروزے بہت جلد نیند کی وادیوں میں چلی جاتی ہے ۔۔۔۔۔۔

تقریبا آدھے گھنٹے تک فارب اپنی پیاری سی کیوٹی پائی کو سینے سے لگائے رہتا ھے جو بڑے آرام سے اپنے جلاد کو ہگ کیے سوئی ہوئی تھی ۔۔۔۔۔۔

چونکہ وہ دونوں بیڈ پر بیٹھے ہوئے تھے اور فیروزے اسی پوزیشن میں سو گئی تھی تو آدھے گھنٹے بعد فارب فیروزے کو بیڈ پر بڑے احتیاط کے ساتھ سلاتا ھے اور ایسا کرتے ہوئے وہ خود بھی فیروزے کے بے حد نزدیک ہوتا کیونکہ فیروزے نے فارب کے گلے میں اپنی باہیں ڈالی ہوئی تھیں جنکو فارب بہت آرام سے ہٹاتا ھے اور پھر کچھ دیر وہ یونہی فیروزے کو نہارتا رہتا ھے جو کے سوتے ہوئے کسی معصوم بچے کی طرح لگ رہی تھی ۔۔۔۔۔۔
اور پھر فیروزے کو ہیڈ کس کرکے اسکے روم کا ڈور بڑے آہستہ انداز میں بند کر کے ڈرائنگ روم میں جاتا ھے جہاں رخسانہ بیگم اور حسن صاحب فارب کا انتظار کر ریے تھے ۔۔۔۔۔۔

♡♡♡♡♡♡♡

اوکے انکل آنٹی اجازت دیں میں چلتا ہوں ۔۔۔۔

ارے فارب بیٹا بریک فاسٹ تو کرلو ۔۔۔۔۔

نہیں انکل پلیز اجازت دیں ایکچوئیلی بہت اہم میٹنگ ھے جانا ہوگا ۔۔۔۔۔

اور آنٹی میں شام کوفیروزے کو لینے آوں گا کیا اجازت دیں گے آپ دونوں ۔۔۔۔۔

ہاں ۔۔۔۔
ہاں بیٹا ضرور اس میں پوچھنے والی کیا بات ھے شام کو فیروزے ریڈی ہوگی آپ لے جانا ۔۔۔۔۔

Ok …….
Thnk u soooòooòo MUCH aunty……

پھر فارب بڑے ہی خوشگوار موڈ میں چلا جاتا ہے ۔۔۔۔
کیونکہ اسکی صبح جو اتنی دلکش تھی ۔۔۔۔۔۔
اپنی فیروزے کودیکھ کے اسے باتیں کرکے اسکی شکایتیں سن کر اسکا خون ڈھیروں بڑھ گیا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

شام کو فیروزے فارب کی صبح والی بات کو بھلائے مزے سے گارڈن میں بیٹھی بہت پیارے سے موسم کو انجوائے کررہی تھی تو کچھ دیر بعد رخسانہ بیگم فیروزے کے پاس آتی ہیں تو فیروزے اپنی ممی کو دیکھ کر سمائل پاس کرتی ھے ۔۔۔۔۔

ممی کتنا پیارا موسم ھے نہ ۔۔۔۔

ہاں موسم تو بہت پیارا ھے پر تم نہ جلدی سے ریڈی ہو جاو تمہیں کہیں جانا نہیں ھے ۔۔۔،

مجھے کہاں جانا ھے ممی اور میں کیوں کہیں جاو گی ۔۔۔؟

فیروزے تم بھول گئی فارب شام کو تمہیں لینے آئے گا اور آٹھ بجنے میں صرف ایک گھنٹہ باقی ھے جاو جلدی سے ریڈی ہو جاو ۔۔۔۔

ہاں یاد آیا وہ جلاد صبح آیا تھا اور میری نیند خراب کرکے چلا گیا میں نے نہیں جانا اس جلاد کے ساتھ ۔۔۔۔۔
فیروزے نے منہ پھلا کر کہا ۔۔۔۔

تم جاو گی اور جاو جا کے ریڈی ہو اب میں کوئی بہانا نہ سنو اور خبردار تم نے فارب بیٹے کو جلاد کہا شوہر ھے وہ تمہارا اور تمیز سے ادب سے پیش آیا کرو اس سے آئندہ میں نہ سنو تمہارے منہ سے یہ لفظ اب جاو ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کیا مصیبت ھے موم میں نہیں جارہی ۔۔۔۔

پر پھر وہ رخسانہ بیگم کے آنکھیں دکھانے پر فورا روم میں جاکے ریڈی ہوتی ھے اور ساتھ ساتھ اپنے جلاد کو صلواتیں بھی سناتی رہتی ھے ۔۔۔۔۔۔

جب وہ مکمل طور پر مہرون ڈنر گاون میں لائٹ سی جیولری کے ساتھ مڈ ہیل پہنے بالوں کو جھوڑا سٹائل میں سیٹ کیے مرر میں خود کو ایک طائرانہ نظر دیکھنے کے بعد جب وہ کلچ اٹھانے کیلئے بیڈ کی طرف آتی ھے جو کہ وہی پر اسکے باقی سامان کے ساتھ رکھا ہوتا ھے جو فارب بخاری اسکے لیے لے کر آتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔

جب وہ اٹھا لیتی ھے تو جیسے ہی وہ سیدھی ہوتی ھے تو وہ جو کب سے فیروزے کو اپنی کیزلریم کو تیار ہوتے ہوئے دیکھ رہا تھا جب اسکی کیزلریم مکمل ریڈی ہوئی اسے دکھتی ھے تو وہ بلکل جامد ہوجاتا ہے ۔۔۔۔۔

اور اسکے منہ سے صرف یہی ایک لفظ نکلتا ھے ۔۔۔۔

kizlarim ‘
( my girl)

اور سٹرینجر کا یہ کہنا تھا کہ فیروزے کو جیسے یہ کیزلریم لفظ بہت ذیادہ فیل ہوتا ھے تو وہ ادھر ادھر اپنی ہیزل برائون آئیز گھماتی ھے اسے لگتا ھے جیسے اسکا جن یہی کہیں آس پاس ھے ۔۔۔۔۔۔

مگر بے سود جب فیروزے کو اسکا جن نہیں دکھتا تو اسکی ہیزل برائون آئیز مایوس ہوجاتی ہیں ۔۔۔۔۔

اور فیروزے کے جن نے اپنی کیزلریم کی ہیزل برائون آئیز میں اپنے جن کو نہ دکھنے کی مایوسی دیکھی تھی ۔۔۔۔

تو اس سٹرینجر کو کافی سکون ملا تھا کہ اسکی کیزلریم صرف اسکی ھے

جو اسے مس کرتی ھے ۔۔۔۔

جواسکی غیرموجودگی فیل کرتی ھے۔۔۔۔۔

تو کچھ دیر میں دونوں کا ایک دوسرے کو محسوس کرنے کا تسلسل رخسانہ بیگم کی آواز سے ٹوٹتا ھے ۔۔۔۔۔۔

فیروزے ۔۔۔۔۔۔

جی جی ممی ۔۔۔۔۔۔

ماشااللہ میرا بچہ تو بہت پیارا لگ رہا ہے اللہ بری نظر سے بچائے ۔۔۔۔۔

Thnx Mummy…..

فیروزے مسکرا کر اپنی ممی سے کہتی ھے ۔۔۔۔

ارے فیروزے بیٹے مجھے فارب کی کال آئی تھی وہ تمہیں دس منٹ تک پک کرنے آرہا ھے ۔۔۔۔۔
تو جلدی سے آجاو ۔۔۔۔

اوکے ممی میں کچھ دیر میں آتی ہوں ۔۔۔۔۔

اور دوسری طرف اس سٹرینجر کا غصے سے برا حال تھا اسے بلکل بھی اچھا نہیں لگا غصے سے اسکی آنکھیں ریڈ ہوگئی تھیں وہ اپنے غصے کو کنٹرول کرنا بہت زیادہ مشکل ہوگیا تھا ۔۔۔۔۔۔۔

Ahhhhhhhhh …….

Kizlarim ‘
( My girl)

Una cosa que no entiendes es que solo eres mia ‘

( one thing you don’t understand is that you are only mine)’

Ahhhhhhh……..

Kizlarim ‘
( my girl)’

♡♡♡♡♡♡

ٹھیک ہے بیٹے جلدی آجانا ۔۔۔
یہ کہہ کہ رخسانہ بیگم چلی جاتی ھیں اور فیروزے بھی کچھ دیر بعد جب سیڑھیاں اترتی ہوئی آتی ھے تو فارب تو فیروزے کے حسن میں گم ہوجاتا ھے وہ قاتل حسینہ سے کم تو نہ لگ رہی تھی ۔۔۔۔
تو فارب بخاری کے ہوش کیسے نہ اڑتے ۔۔۔۔

اورفارب بخاری بھی تھری پیس ڈنر ڈریس پہنے کسی شہزادے سے کم نہ لگ رہا تھا فیروزے نے خود بھی بڑی مشکل سے فارب پر سے اپنی نظریں ہٹائیں ۔۔۔

پھر جب فیروزے فارب بخاری کے قریب آکر کہتی ھے کہ چلیں جلاد ۔۔۔۔

ہا ۔۔ ۔۔
ہاں چلو ڈئیر کیوٹی پائی ۔۔۔۔۔

اور فیروزے فارب کے بوکھلا جانے پر بڑی مشکل سے اپنی سمائل روکتی ھے ۔۔۔۔

پھر وہ دونوں رخسانہ بیگم سے اجازت لینے کے بعد روانہ ہو جاتے ہیں ۔۔۔۔

جب وہ دونوں لاہور کے ٹاپ ٹن ریسٹورنٹ میں سے سب سے زیادہ فیمس ریسٹورینٹ ۔۔۔

Cosa Nostra ‘

میں جاتے ہیں اور پھر گاڑی پارکینگ ایریا میں پارک کرنے کے بعد فارب فیروزے کی طرف دیکھتا ھے جو منہ پھلائے فارب بخاری کو بہت کیوٹ لگ رہی تھی ۔۔۔۔۔۔

پھر وہ فیروزے سے بنا بات کیے اسے آنکھوں کے رستے دل میں اتار رہا ہوتا ھے اور فیروزے اپنے جلاد کے اس طرح دیکھنے پر غصے سے فارب کو دیکھتی ھے اور آہستہ سے کہتی ھے ۔۔۔۔۔

کیسے پاگلوں کی طرح مجھے گھور رہے ہیں اور کنجوس کتنے ہیں میری ذرا بھی تعریف نہیں کی ۔۔۔۔۔
ہونہہ جلاد کہیں کے ۔۔۔

اور فارب اپنی کیوٹی پائی کی باتیں سن کر مسکراتا ھے اور فیروزے کو اپنی طرف کھنچتا ھے اور فیروزے کا چہرہ اچانک فارب کے کھینچنے پر فارب کے چہرے کے ساتھ جالگتا ھے جس سے فیروزے شرم سے نظریں نہیں اٹھا سکتی اور فارب اپنی کیوٹی پائی کے بلش کرنے پر دل و جان سے فدا ہوگیا تھا ۔۔۔۔۔۔۔

پھر وہ فیروزے سے کہتا ھے کہ

I’m not stingy & not at all about you.

( میں کوئی کنجوس نہیں اور تمہارے بارے میں تو بلکل بھی نہیں )

My style of praising is a little different.

( بس میرا تعریف کرنے کا انداز تھوڑا مختلف ھے )

I don’t like to make this typical praising like everyone else does.

(مجھے یہ ٹیپیکل تعریف کرنا پسند نہیں جیسے ہر کوئی کرتا ھے ۔)

You will see my style of praising only when you are completely within the reach of Farib Bukhari.

(میرا تعریف کرنے کا انداز تم تب دیکھنا جب تم مکمل طور پر میری دسترس میں آو گی )

But still, i must have remembered a ghazal when I saw my beautiful cutipie .

لیکن پھر بھی مجھے اپنی پیاری سی کیوٹی پائی کو دیکھ کر ایک غزل زرور یاد آئی ھے )

And that’s it.

( اور وہ یہ ھے )

“”””Ghazal “”””

Your hairs’

Your eyelids ‘

Your eyes ‘

Your face ‘

Your shoulder ‘

Clear neck ‘

Bracelets wringing in the wrists ‘

Fine fingers of hanai hands’

In which sandalwood is smelling ‘

The nurmur of soft breaths ‘

When you take up a step, the heartbeat stops ‘

Every angle of the body ‘

No i don’t know your example ‘

You are perfect to know perfection ‘

And you are the soul of Farib Bukhari ‘

“”” غزل “””

تمہاری زلفیں ۔۔۔
تمہاری پلکیں ۔۔۔
تمہاری آنکھیں ۔۔۔۔۔
تمہارا چہرہ ۔۔
تمہارے شانے ۔۔۔۔
صراحی گردن ۔۔
کلائیوں میں کھنکتے کنگن ۔۔۔

حنائی ہاتھوں کی انگلیوں کی حسین پوریں ۔۔

کہ جن میں صندل مہک رہی ھے ۔۔۔۔

یہ نرم سانسوں کی گنگناہٹ ۔۔

قدم اٹھاو تو دھڑکنیں ساتھ چھوڑتی ہیں ۔۔

بدن کا ہر زاویہ قیامت ۔۔۔

نہیں تمہاری مثال جاناں ۔۔۔۔۔۔

کمال ہوتم کمال جاناں ۔۔۔۔

اور تم ہو فارب کی جان جاناں ۔

اینڈ میں فارب لائین چینج کرکے اپنا نام ایڈ کرتا ھے اور فیروزے تو فارب کے لفظوں میں اپنی تعریف سن کر فارب کے بیان کرنے کےانداز پر بہت زیادہ بلش کرتی ھے ۔۔۔۔۔۔
اور فارب بخاری فیروزے کے بلش کرنے پر اسے کس کرتا ھے اور اسے کہتا ھے کہ

You know, Ferozay , when you blush, Farib Bukhari starts to drive you crazy.

( تم جانتی ہو فیروزے جب تم بلش کرتی ہو تو فارب بخاری تمہارا دیوانہ ہونے لگتا ھے )

Now let’s go inside, Farib Bukhari’s soul.

جج جی چلیں ۔۔۔۔۔
فیروزے گھبرا کر تھوڑا نروس ہوکر کہتی ھے کیونکہ فارب بخاری نے اتنے انوکھے اور دل موہ لینے والے انداز میں اپنی فیروزے کی تعریف کی ۔۔۔۔۔۔۔

♡♡♡♡♡♡

پھر جیسے ہی فیروزے فارب کے ساتھ ہوٹل کے ٹیرس پر انٹر ہوتی ھے تو اس ٹیرس پر ڈنر کیلئے سپیشل ارینجمنٹس کو دیکھ کر فیروزے کے منہ سے بس یہی ایک لفظ نکلتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

OMG………

پھر وہ فارب کے ہاتھ سے اپنا ہاتھ نکالتی ھے اور بھاگ کر کوسا نوسٹرا ریسٹورینٹ کے ٹیرس پر موجود ساری ارینجمنٹس کو خوش ہوتے ہوئے دیکھتی ھے اور بھاگ ایک ایک چیز کو اپنے ہاتھوں سے چھوتی ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔

کیونکہ فارب بخاری نے فیروزے کی پسند کو مدنظر رکھتے ہوئے ایک آیک چیز اسکی پسند کی ڈیکوریٹ کرائی ۔۔۔۔۔

ریسٹورینٹ کے ٹیرس کو اٹلی کے مشہور ڈیکوریٹر کو بلوا کر ہر ایک ٹیرس کا کونہ سجایا گیا تھا ۔۔۔۔۔۔

ٹیرس کے پلرز کے اردگرد بہت ہی شائنی کرٹنز لگے ہوئے تھے جن پر لائٹنگ کی گئی تھی اور ٹیرس کی بہت چھوٹی سی والز جو کہ ٹیرس پر آرٹیفیشل والز فارب نے سپیشلی فیروزے کی پروٹیکشن کیلئے خصوصی طور پر لگائی گئی تھی کیونکہ فارب اپنی کیوٹی پائی کو بہت اچھے سے جانتا تھا کہ اسکی کیوٹی پائی ایکسائٹڈ ہوکر ہر ایک چیز کو بچوں کی طرح خوش ہوکر چھوئے گی جیسے کے اب وہ ہر ایک چیز کو چھو رہی تھی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

وہ آرٹیفیشل والز جو کہ ٹیرس کے اطراف میں لگائی گئی تھیں ان پر ہر رنگ کے فلاورز لگے ہوئے تھے اور پھر بہت سارے شائنگ سٹارز جو کے پورے ٹیرس پر لٹکے ہوئے تھے جنکی چمک اتنی تیز تھی کہ فیروزے وہاں پر کسی پری کی طرح لگ رہی تھی جو ستاروں کے جہاں میں موجود اپنے شہزادے کو اپنا دیوانہ بنائے جارہی تھی اور اسکا شہزادہ بھی اپنی پری کو بہت چاہ سے نہار رہا تھا ۔۔۔۔۔

پھر فیروزے فارب کے پاس آتی ھے اور اسکا ہاتھ پکڑ کر کہتی ھے جلاد دیکھو نہ یہ سب کتنا خوبصورت ھے کیا یہ سب آپ نے کیا میرے لیے سچی ۔۔۔۔۔

پھر فارب اپنی کیوٹی پائی سے کہتا ھے ۔۔۔۔
ہاں یہ سب میں نے کیا ھے کیا میری فیری کو پسند آیا ۔۔۔۔

جی یہ تو بہت بہت زیادہ مسمرائز کردینے والا ھے میں بہت بہت بہت بہت بہت بہت بہت بہت زیادہ خوش ہوں ۔۔۔۔۔۔۔۔

Thank you soooòooòo much Jalad…….

I Love you………

یہ کہتے ہوئے وہ فارب کو اسکی چیک پر کس کرتی ھے اور پھر جب وہ رئلائز کرتی ھے کہ اس نے ایکسائٹمٹ میں کیا کردیا تو شرمندگی سے آنکھیں نیچی کر لیتی ھے ۔۔۔۔۔
اور فارب بخاری پہلے فیروزے کے کس کرنے پر نہیں سنبھلا تھا کہ فیروزے نے آئی لو یو بول کر فارب بخاری کو حیران کردیا اور پھر وہ اس خوشی میں فیروزے کو ۔۔۔۔۔۔۔۔

 

فارب بخاری پہلے فیروزے کے کس کرنے پر نہیں سنبھلا تھا کہ فیروزے نے آئی لو یو بول کر فارب کو حیران کردیا اور پھر وہ اس خوشی میں فیروزے کو اٹھا کر گول گول گھوماتا ھے اور پھر اسے بنا اتارے اوپر اٹھائے پوچھتا ہے کہ فیروزے مائی لو میری جان کیا کہا تم نے۔۔۔۔۔۔

اور فیروزے جو پہلے ہی فارب کی باہوں میں کھڑی کنفیوز تھی اور تھوڑی گھبرا رہی تھی کیونکہ فارب نے اسے اوپر اٹھایا ہوا تھا جس سے فیروزے نے بڑی مشکل سے اپنے ہاتھ فارب کے شولڈر پر رکھے ہوئے تھے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔
اور اوپر سے جناب کی فرمائش کے تھوڑی دیر پہلے کیا بولا ۔۔۔۔۔۔

پھر وہ کہتی ھے کہ کیا بولا میں نے یہی کہ آپ بہت اچھے ہیں جو کہ اب بلکل بھی اچھے نہیں لگ رہے نیچے اتاریں مجھے۔۔۔۔۔۔

نہیں ۔۔۔
میں نہیں اتار رہا پہلے بتاو تم نے اسکے بعد کیا کہا کہ میں اچھا ہوں اور تم مجھ سے کیا کرتی ہو ۔۔۔۔؟

مم میں نے کک کچھ نہیں کہا آپ مجھے نیچے اتاریں ۔۔۔۔

پھر فارب فیروزے کو تھوڑا نیچے کرتا ھے جس سے اب فیروزے کا فیس فارب کے فیس کے بلکل قریب تھا اور اس نے گرنے کے ڈر کی وجہ سے اپنی باہوں کا ہار فارب کے گلے میں ڈالا ہوا تھا ۔۔۔۔۔۔

پھر فارب فیروزے سے پوچھتا ھے اچھا کیا واقعی تم نے کچھ نہیں کہا۔۔۔

ہاں میں نے بس اتنا کہا ۔۔۔۔

Ok never mind my cutipie …….

اگر آپ نہیں بتائیں گی تو میں بھی آپکو نیچے نہیں اتاروں گا پھر آج رات آپ ایسے ہی میری باہوں میں رہیں ۔۔۔۔۔

اور اس بات پر فیروزے گھبرا کر فارب کی طرف دیکھتی ھے اور اب ہیزل برائون آئز ڈارک براون آئیز میں کہیں کھو جاتی ہیں ۔۔۔۔۔۔
اور پھر وہ دونوں ایک دوسرے میں گم کافی دیر تک ایسے ہی ایک دوسرے کو نہارتے ہوئے آنکھوں کی ناجانے کونسی بولی بولتے ہوئے کئی پل بتا دیتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔

🎀 تمہاری آنکھیں کمال گہری ہیں

میں ڈوبا تو پھر ڈوبتا ہی گیا 🎀

پھر ان خوبصورت لمحوں کا فسوں فیروزے کی آواز سے ٹوٹتا ھے
کیونکہ وہ فارب سے کہتی ھے پلیز جلاد مجھے نیچے اتاریں ۔۔۔۔۔۔

تو وہ کہتا ھے ۔۔۔۔

اگر نہ اتاروں تو ۔۔۔۔۔؟؟؟؟

تو فیروزے بہت معصومیت سے فارب کو دیکھتی ھے جس سے فارب کو بھی اپنی فیری پر ترس آجاتا ہے اور پھر وہ فیروزے کو ہیڈ کس کرکے نیچے اتارتا ھے ۔۔۔۔۔

پھر وہ فیروزے کا ہاتھ پکڑ کر ڈنر ٹیبل پر لے جاتا ھے اور وہ سب سے پہلے فیروزے کو چئر پر بہت ہی سپیشل وے سے بیٹھاتا ھے اور پھر خود بیٹھتا ھے ۔۔۔۔۔

جب تک ویٹرز کی فوج بہت ساری ڈیشز ٹیبل پر سیٹ کرتی ہیں اور پھر جب وہ سب سیٹ کرکے چلے جاتے ہیں تو فارب فیروزے سے کہتا ھے کہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

You look so beautiful in this dress.

What will you take?

I have ordered all your favourite dishes.

If you need anything else, tell me, my dear.

پھر فیروزے کہتی ھے نہیں مجھے اور کچھ نہیں چاہیے ۔۔۔۔

Ok …….

پھر وہ فیروزے سے دوبارہ پوچھتا ھے ۔۔۔۔

You liked a surprise dinner?

You like all these arrangements?

پھر فیروزے فارب کے اتنے سارے سوال سن کر کہتی ھے ۔۔۔۔

Jalad….. i mean Farib , you will be silent for a minute .You are speaking yourself .Give me a chance to speak.

پھر فارب کہتا ھے ۔۔۔۔

Yes…
Yes my love.

پھر فیروزے کہتی ھے۔۔۔۔۔

So , i have to say that i don’t like all these arrangements.
Does anyone give such a surprise?

I’m so sorry i found it so radiculous.
It’s all kind of nonsense.

اور یہ سب کہتے ہوئے فیروزے کی آنکھوں میں شرارت تھی جسے فارب نے بخوبی نوٹ کیا وہ جان گیا تھا کہ اسکی فیری اسے مذاق کر رہی ھے ۔۔۔۔

لیکن پھر وہ کہتا ھے ۔۔۔۔۔

Well, did you really find all this nonsense?

Then i will remove all this now……

پھر فیروزے جلدی میں کہتی ھے کہ جج جلاد میں نے تو بس مذاق میں کہا پھر وہ مسکرانے لگتی ھے ۔۔۔۔۔

تو فارب کہتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔

Well, you made a joke , so you made fun of me, my feelings, these arrangements .

You are not ashamed to say all this. Nothing happened to you while hurting me.

And yes, i forgot that madam Ferozay doesn’t like Farib Bukhari at all…

یہ سب کہتے ہوئے فارب فیروزے کے بلکل پاس بہت غصے سے کہہ رہا تھا ………

اور فیروزے تو سہمی سی فارب بخاری کے تیور دیکھ رہی تھی جو اسے ڈرائے جارہا تھا ۔۔۔۔۔۔

پھر فیروزے اسے دوبارہ کہتی ھے کہ جج جلاد میں نے تو بس مذاق میں کہا اگ اگر آپ کک کو بورا لگا تت تو

I’m so sorry…….

یہ الفاظ کہنے کے بعد فیروزے رونے لگتی ھے تو فارب اسکے رونے کا ارادہ جان کر کہتا ھے کہ خبردار فیروزے اگر تمہاری آنکھوں میں ایک آنسو بھی آیا تو مجھ سے برا کوئی نہیں ہوگا ۔۔۔۔۔۔

پھر فیروزے اپنے رونے کا سین کینسل کرکے فارب کو اسکی بات کا ریپلائے دیتی ہے ۔۔۔۔

آ ۔۔۔ آپ سے برا کوئی ھے بھی نہیں جج جلاد کہیں کے ۔۔۔۔

اور فارب بخاری فیروزے کی بات سن کر سمائل کرتا ھے اور آگے بڑھ کر فیروزے کو کس کرتا ھے جس سے فیروزے حیران سی اپنے جلاد کو دیکھتی ھے جو اسے پریشان کیے جارہا تھا اور اب سمائل ہی ختم نہیں ہورہی تھی اسکی ۔۔۔۔۔۔

پھر فارب فیروزے سے کہتا ھے کہ مائی کیوٹی پائی تم تو ڈر گئی میں تو بس تمہیں تنگ کر رہا تھا چلو اب کھانا کھاو میں نے سب کچھ تمہاری پسند کا آرڈر کیا ھے ۔۔۔۔۔۔۔

پھر فیروزے غصے سے فارب کو دیکھتی ھے اور فارب آگے بڑھ کر فیروزے کی ہیزل برائون آئیز پر باری باری اپنا لمس چھوڑتا ھے اور فیروزے کو کان میں سرگوشی کرتا ہے کہ ۔۔۔۔۔۔

🎀ہاں تمہاری باتیں بہت پیاری ہیں فیروزے

لیکن فارب بخاری نے دل ہارا ھے تمہاری آنکھوں پر 🎀

اور ساتھ میں وہ فیروزے کے کان پر اپنے دہکتے لب رکھتا ھے جس سے فیروزے کے جسم میں سنسنی سی دور جاتی ھے اور پھر فارب فیروزے کو کہتا ہے ۔۔۔

Dear love please take it…

پھر فیروزے پہلےتو تھوڑا ہچکچاتی ھے پھر جب فیروزے اپنی فیورٹ ڈشز دیکھتی ھے تو سب بھلائے کھانے لگتی اور فارب بخاری بڑی محویت سے اپنی فیروزے کو نہارتا رہتا ھے اور وہ دشمن جاں مزے سے ڈنر اینجوائے کرنے میں بزی تھی پھر فارب بخاری فیروزے کے ہاتھ کو پکڑ کر اس میں موجود برگر کا بائیٹ لیتا ھے اور پھر وہ ہر اس ڈش جو فیروزے پہلے کھا لیتی پھر فارب اسی کے ہاتھوں سے لے کر کھاتا ۔۔۔۔۔۔۔

اور اسطرح فاب فیروزے کو تنگ کرتے اور لڑائی کرتے ڈنر اینجوائے کرتے ہیں ۔۔۔۔۔۔

پھر فارب بخاری ڈنر کرنے کے بعد فیروزے کے ہاتھ میں اپنی انگلیاں ڈالتے ریسٹورینٹ کے ٹیرس پر تھوڑی دیر چہل قدمی کرتے ہیں پھر کچھ ہی دیر میں میوزیشن ویلن اور ڈیفرنٹ میوزک انسٹرومنٹ کے ساتھ میوزک اینڈ سونگ سٹارٹ کرتے ہیں اور فارب بخاری فیروزے کا ہاتھ پکڑ کر اس طرف لے آتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔___۔۔۔۔۔۔

اور وہ فیروزے کے آگے ہاتھ بڑھا کر اجازت طلب نظروں سے فیروزے کو دیکھتا ھے ۔۔۔

May I……….????

پھر فیروزے مسکرا کر اپنا ہاتھ فارب بخاری کے ہاتھ پر رکھتی ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

پھر وہ دونوں

Etta James

کے سونگ ایٹ لاسٹ پر کپل ڈانس کرتے ہیں

 

“” At last “”

At last my love has come along

My lonely days are over and life is like a song, oh yeah

At last the skies above are blue

My heart was wrapped up clover the night I looked at you

I found a dream that I could speak to

A dream that I can call my own

I found a thrill to press my cheek to
A thrill I’ve never known,

oh yeah
You smiled, you smiled

oh and then the spell was cast… …

And here we are in Heaven ……

For You are mine……

* At last *

♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡

اور وہ دونوں ڈانس کرنے اور ایک دوسرے میں اتنے محو ہوتے ہیں کہ کب میوزک بند ہوا کب میوزیشن گئے انھیں کچھ خبر نہیں ہوتی ۔۔۔۔۔

کیونکہ پاکیزہ محبت پاکیزہ رشتے کا احساس ہی اتنا دلکش اور حسین اور معتبر ہوتا ھے کہ ہر چیز پاکیزہ ہوجاتی ھے ۔۔۔۔
اور فارب بخاری نے بھی اپنی جان سے پیارے لڑکی اپنی فیروزے کو اس پاکیزہ رشتے میں باندھ کر معتبر کردیا ۔۔۔۔

☆☆☆☆☆☆

پھر کچھ ہی دیر میں فارب کی نظر فیروزے کی بائیں گال پر پڑتی ھے تو وہ ایک ٹرانس سی کیفیت میں فیروزے کی لیفٹ چیک پر کس کرتا ھے اور وہ کس کرنے کا انداز تھوڑا مختلف تھا کیونکہ فارب بخاری کے اس انداز میں اتنی شدت تھی کہ فیروزے کانپ کر رہ گئی اور فارب نہ جانے کتنی دیر تک اسی حالت میں فیروزے کی گال پر اپنے لب جمائے کھڑا رہا اور فیروزے اسے تو کھڑا ہونا بھی محال ہوگیا تو اس نے اپنے دونوں ہاتھ جو کہ فارب بخاری کے کندھوں پر رکھے ہوئے تھے تو اپنے نرم ہاتھوں کا دباؤ فارب بخاری کے کندھوں پر مزید بڑھا دیا اور فارب اسے تو جیسے کچھ یاد ہی نہیں تھا وہ تو الگ ہی دنیا میں تھا اسے تو جیسے کوئی ہوش نہیں تھا نہ جانے فیروزے کی لیفٹ چیک پر ایسا کیا تھا کہ وہ فیروزے کی چیک کو چھوڑنے کا نام نہیں لے رہا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔
اور فیروزے اسکی تو حالت غیر ہورہی تھی پھر وہ بڑی مشکل سے ہمت کر کے فارب بخاری اپنے جلاد سے کہتی ھے ۔۔۔۔

جج جلاد پپ پلیز لیو می ۔۔۔۔
جج جلاد ۔۔۔۔

مگر فارب بخاری فیروزے کی کوئی بات نہیں سنتا ۔۔

پھر فیروزے دوبارہ کہتی ھے کہ ۔۔۔۔۔

جج جلاد پپ پلیز دور ہٹیں مم مجھ سے کھڑا نہیں جارہا ۔۔۔۔

تو اس بار فیروزے کی باریک سی سریلی آواز فارب بخاری کی سماعت سے ٹکڑاتی ھے تو وہ فیروزے کو اسی حالت میں اٹھا کر چیئر پر اپنی گود میں بیٹھتا ھے مگر فیروزے کی چیک پر سے اپنے لب نہیں ہٹاتا ۔۔۔۔۔۔۔۔

اور فیروزے وہ حیران سی اپنی ہیزل برائون آئیز کی پتلیاں پھیلائے اپنے جلاد کو دیکھتی ھے جو اسے چھوڑنے کا نام نہیں لے رہا تھا ۔۔۔۔

پھر فیروزے دوبارہ فارب بخاری اپنے جلاد سے کہتی ھے کہ جج جلاد مم میری بات تو سنیں ۔۔۔۔

جج جلاد سنو نہ ۔۔۔۔

جب وہ نہیں سنتا تو وہ غصے سے چلا کر کہتی ھے کہ

کک کیا یار جلاد چچ چھوڑیں بھی چمگادڑ کی طرح چمٹ گئے اب ایسا بھی کیا ھے میری چیک پر جج جو آپ چھوڑنے کا نام نہیں لے رہے ۔۔۔۔۔

مگر فارب بخاری پھر بھی فیروزے کو کوئی رسپانس نہیں دیتا ۔۔۔۔۔

تو فیروزے رونے لگتی ھے جسکی وجہ سے اسکے آنسو لڑکھ کر اسکی گال پر بہنے لگتے ہیں تو فارب کو اپنے ہونٹوں پر فیروزے کے آنسوؤں کا نمکین پانی محسوس ہوتا ھے تو وہ ہوش کی دنیا میں آتا ھے ۔۔۔۔۔۔

اور فیروزے سے کہتا ھے ۔۔۔۔۔۔

Hi …….
Hi princess ……..

Your tears hurt me please don’t cry……

You know , i can’t see the tears in your Hazel Brown eyes……

Ok don’t cry how why are you cruel to those beautiful eyes……

( اوکے اب ہرگز مت رونا کیوں ان خوبصورت آنکھوں پر ظلم کرتی ہو )

Because you don’t know that Farib Bukhari gets lost when he looks at them…….

( کیونکہ تم نہیں جانتی فارب بخاری جب ان میں جاھنکتا ھے تو کھو جاتا ھے )

These hazel brown eyes captivate Farib Bukhari in their magic……..

( یہ ہیزل برائون آئیز فارب بخاری کو اپنے جادو میں قید کر لیتی ہیں )

These are not THE eyes , but the world of Farib Bukhari…….

( یہ آنکھیں نہیں بلکہ فارب بخاری کی دنیا ہیں )

And in this world , Faraib Bukhari only wants to be your’s……..

(اور اس دنیا میں فارب بخاری صرف تمہارا بن کے رہنا چاہتا ھے )

So i don’t See tears in those hazel brown eyes …….

(اور آئیندہ میں ان ہیزل برائون آئیز میں آنسو نہ دیکھوں)

Ok …….
YOU got it my heart……

اور میں تمہیں پھر کبھی بتاو گا کہ مجھے آپ کی گال پر ایسا کیا دکھا کہ میں چمگادڑ کی طرح چمٹ گیا ۔۔۔۔۔
یہ کہتے ہوئے فارب فیروزے کو شرارت بحری نگاہوں سے دیکھتا ھے ۔۔۔۔۔۔

اور فیروزے وہ تو فارب کی لو دیتی نگاہوں سے پزل ہوگئی پھر وہ خاموشی سے اپنی نظریں نیچے جھکا دیتی ھے ۔۔۔۔۔

جب فیروزے فارب کے پوچھنے پر کوئی رسپانس نہیں دیتی تو فارب فیروزے کے بازوں پر دباو بڑھاتا ھے تو وہ کہتی ھے ۔۔۔

جج جی کک کیا کہہ رہے تھے آپ ۔۔۔۔۔۔؟

پھر فارب کہتا ھے کہ کیوں آپ نے میری بات نہیں سنی فارب غصہ سے فیروزے کو دیکھتے ہوئے کہتا ھے ۔۔۔۔۔

تو فیروزے ڈر کہ کہتی ھے جج جی جلاد میں نے سس سب سنا ہے کہ مم میں کبھی نہ روں آپ مجھ سے پپ پیار کرتے ہیں ۔۔۔۔
مم مجھے روتا ہوا نہیں دیکھ سکتے ۔۔۔۔۔۔۔

تو فارب بخاری یہ سب سن کر سمائل کرتا ھے اور فیروزے کو کس کرتا ھے اور پھر فیروزے کو ٹائٹلی ہگ کرتا ہے اور فیروزے وہ تو بس اپنے جلاد کے آج نئے روپ دیکھ رہی تھی جنہوں نے اسکی جان ہوا کردی دی ۔۔۔۔۔۔۔۔

چونکہ فارب بخاری نے ابھی بھی فیروزے کو اپنی گود میں لیے ہوئے ہگ کیے بیٹھا تھا اور ساتھ بار بار فیروزے کو کبھی چیک پر کبھی ہیڈ پر کبھی کان میں سرگوشی کرتے ہوئے فیروزے پر اپنے لمس چھوڑ رہا تھا اور فیروزے اسکی حرکتوں پر کبھی بلش کرتی کبھی ڈانٹ دیتی کہ اسے نیچے اتارے مگر نہ جی فارب بخاری اور اپنی فیری کو ایک منٹ بھی خود سے دور کرنے کے موڈ میں ہرگز نہیں تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

پھر نہ جانے رات گئے تک فارب نے فیروزے کو اسکے گھر ڈراپ کیا حالانکہ اسکا ہرگز دل نہیں تھا کہ وہ اپنی فیری کو اب خود سے دور کرے ۔۔۔۔۔۔

پھر اسطرح ان لو برڈز کی بہت حسین شام کا اختتام ہوتا ہے ۔۔۔۔

♡♡♡♡♡♡

جب فیروزے کو فارب گھر ڈراپ کرکے چلا جاتا ھے تو وہ اپنے روم میں آنے کے بعد فریش ہوتی ھے پھر بہت جلد نیند اسے اپنی آغوش میں لے لیتی ھے ابھی اسے سوئے کچھ ہی دیر ہوئی تھی کہ کوئی بڑے ہی احتیاط سے فیروزے کے ساتھ بیڈ پر لیٹتا ھے اور ناجانے کتنی دیر وہ فیروزے کے ایک ایک نقش کو حفظ کرتا ھے کہ اسکے دیکھنے کا تسلسل فیروزے کی وجہ سے ٹوٹتا ھے کیونکہ فیروزے اس سٹرینجر کے اوپر اپنی باہیں پھیلا کر لیٹ گئی تو اس سٹرینجر کے تو ہوش ہی اڑ گئے اپنی کیزلریم کو اپنے اتنے پاس دیکھ کر تو وہ ایک ٹرانس سی کیفیت میں اپنی کیزلریم کے چہرے پر دیوانہ وار اپنا لمس چھوڑتا ھے جس سے اسکی آنکھ کھل جاتی ھے اور اس سے پہلے کہ وہ چیختی اس سٹرینجر نے اپنا بھاری ہاتھ فیروزے کے منہ پر رکھ دیا جس سے اسکی چیخ کہیں دب جاتی ھے اور وہ ڈر کی وجہ سے رونے لگتی ھے جس سے فیروزے کے آنسو اس سٹرینجر کے ہاتھ کو بھگونے لگتے ہیں تو وہ جلدی سے اپنا ہاتھ ہٹا کر اپنی کیزلریم کو ٹائٹلی ہگ کرتا ہے کیونکہ وہ سمجھ گیا تھا کہ اسکی کیزلریم ڈر گئی ھے ۔۔۔۔۔۔

پھر وہ اپنی کیزلریم کی پیٹھ کو سہلاتے ہوئے کہتا ھے ۔۔۔۔

Shhhhh…….

Kizlarim ‘
( my girl)’

No tengas miedo porque estoy contigo ‘

( don’t be fear for i am with you)’

Mi nina pequena ‘
( my baby girl)’

جب فیروزے کو اپنے جن کی آواز سمجھ آتی ھے کہ اسے ڈرانے والا کوئی اور نہیں بلکہ اسکا جن ھے تو اسکے آنسوؤں میں مزید روانی آجاتی ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تو فیروزے کا جن اسے چپ کراتا ھے ۔۔۔۔

No llores mi amor ‘
( don’t cry my love)’

Mi corazon ‘
( my heart)’

Mi nina innocente ‘
( my innocent girl)’

Shhhh relajate ‘
( shhh relax)’

پھر جب فیروزے کچھ نارمل ہوتی ھے تو وہ اپنے جن سے دور ہونے کی کوشش کرتی ھے جو مزے سے اپنی کیزلریم کو اسی کے بیڈ پر ہگ کیے لیٹا ہوا تھا ۔۔۔۔

اور اس نے اپنی کیزلریم کی دور ہونے کی کوشش کو ناکام بنائے باہوں کے گھیرے کو مزید تنگ کر دیا مطلب صاف تھا کہ ایسی کوشش سے گریز کیا جائے ۔۔۔

جب فیروزے اپنے جن سے الگ ہونے کی کوشش میں ناکام ہوئی تو وہ غصے سے اپنے جن کی پیٹھ پر اپنے ناخن چبھاتی ھے جسکا آسکے جن پر کوئی خاطرخواہ اثر نہیں ہوا ۔۔۔۔۔

آخر تھک ہار کر وہ اپنے جن کو کہتی ھے کہ ۔۔۔۔۔

کیا مسئلہ ہے تمہارے ساتھ ہاں ۔۔۔۔؟؟

چچ چھوڑو مجھے ۔۔۔۔۔

جاو اپنی چڑیلوں کو جاکے ہگ کرو میری جان چھوڑو ۔۔۔۔

ابھی وہ مزید کچھ کہتی اسکا جن غصے سے دھاڑتا ھے کیونکہ جس تکلیف سے وہ گزر رہا تھا شاید ہی کوئی جان پاتا کیونکہ اس سٹرینجر نے اپنی کیزلریم کو کسی اور کیلئے تیار ہوئے دیکھا تھا جو کہ اسکی برداشت سے باہر تھا ۔۔۔۔۔۔

اور پھر وہ فیروزے کو سرگوشی نما کچھ کہتا ھے ۔۔۔۔۔

¿ Como te atreves a acercar a esta persona ?

( how dare you bring this person closer to you?)

Cuidado, incluso si dejas que esta persona se acerque a ti , nadie sera’ peor que yo’

( beware that even if you let this person come close to you, no one will be worse than me )’

Una cosa que no entiendes es que solo eres mia ‘

( one thing you don’t understand is that you are only mine)’

Asi que trata de mantener a esa persona lejos de ti porque solo eres mia kizlarim ‘

( so try to keep that person away from you ‘coz you are only mine kizlarim)’

Y si vi este hombre a tu alrededor ‘

( and if i saw this man around you )’

Entonces no pasara’ mucho tiempo antes de que me convierta en la bestia ‘

( then it wouldn’t be long before i became the beast)’

اور فیروزے وہ تو بیچاری اپنے جن کی باہوں میں پھڑ پھڑا کے رہ جاتی ھے ۔۔۔۔۔

پھر کچھ دیر بعد اس سٹرینجر کو یاد آتا ھے کہ وہ تو سپینش لینگویج میں اپنی کیزلریم پہ غصہ کررہا ھے اسے ڈانٹ رہا ھے تو وہ دوبارہ فیروزے سے اسی کی لینگویج یعنی اردو میں کہتا ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔

کیزلریم مائی لو میری جان تمہیں ایک بات سمجھ نہیں آتی میں نے تم سے کہا تھا کہ

اس شخص سے دور رہو ۔۔۔۔

پھر تمہیں میری بات سمجھ کیوں نہیں آتی ۔۔۔۔۔

تم صرف میری ہو صرف میری کیزلریم ۔۔۔۔

تو کوشش کرنا وہ شخص تم سے دور رہے اور خبردار جو تم نے اس شخص کو اپنے قریب آنے بھی دیا تو مجھ سے برا کوئی نہیں ہوگا ۔۔۔۔

اور اگر میں نے اس شخص کو تمہارے آس پاس دیکھا تو تم میرا ڈیول روپ دیکھو گی ۔۔۔۔۔۔۔

اور اس سٹرینجر کی باتیں سن کر فیروزے اپنا رونا چھوڑ کر اسے بہت زور سے پڑے دھکیلتی ھے جس سے وہ بس تھوڑا سا فیروزے سے دور ہوتا ۔۔۔۔۔

پھر وہ جلدی سے اپنے جن کی باہوں کے گھیرے کو توڑ کر اسے دور ہوتی ھے اور چلا کر کہتی ھے کہ ۔۔۔۔

میں نے تمہیں ہزار بار کہا ھے کہ میرے پاس مت آیا کرو مگر نہ تم پھر بھی آجاتے ہو ۔۔۔۔

میں نے تمہیں کئی بار کہا ھے کہ میں اب کسی کی امانت ہوں مگر نہ تم نے تو میری بات ماننی ہی نہیں ھے ۔۔۔۔

میں نے تمہیں کتنی بار کہا کہ چلے جاو میری زندگی سے تو تم میری بات کیوں نہیں مانتے۔۔۔۔

جاو یہاں سے میں صرف فارب بخاری کی ہوں اور ہمیشہ اسی کی رہوں گی سنا تم نے ۔۔۔۔

So….
You may leave now…

فیروزے کا یہ کہنا تھا کہ وہ سٹرینجر جو ضبط کیے بیٹھا تھا فیروزے کی یہ بات اسے شدید ناگوار گزری اور وہ ایک جست میں فیروزے کو اپنی طرف کھنچتا ھے جس سے وہ سیدھا اس سٹرینجر کے سینے سے جالگتی ھے اور پھر وہ اپنی کیزلریم کے ہاتھوں کو اسکی کمر کے ساتھ لگا کر ان پر اپنی گرفت سخت کردیتا ھے جس سے فیروزے کے منہ سے ایک سسکی نکل جاتی ھے ۔۔۔۔

پھر وہ سٹرینجر اپنی کیزلریم کے چہرے کو اپنے ہاتھ سے دبوچتا ھے اور اپنے غصہ بھری آواز میں کچھ کہتا ھے ۔۔۔۔

Una cosa que no entiendes es que solo eres mia kizlarim ‘

( one thing you don’t understand is that you are only mine)’

اور فیروزے وہ تو درد کی شدت سے روئے جارہی تھی تو اسکا جن جو کہ اپنی کیزلریم کی آنکھوں میں آنسو ہرگز نہیں دیکھ سکتا تھا وہ اسے کہتا ہے ۔۔۔۔

Te lo hi dicho mil veces ‘

( I have told you a thousand times)’

Para no derramar lagrimas en esos hermosos ojos ‘

( not to shed tears in those beautiful eyes)’

Entonces por que ` no me entiendes ‘

(Then why don’t you understand me)’

یہ سب کہتے ہوئے وہ ساتھ ساتھ فیروزے کے آنسو بھی اپنے اسی پرانے سٹائل میں صاف کررہا تھا جس سے فیروزے کانپ کر رہ گئی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تو وہ اپنے جن سے دور ہونے کی کوشش کرتی ھے کہ اسکا جن اسکے بازوں پر گرفت سخت سے سخت کردیتا ھے اور پھر سے فیروزے سے سرگوشی کرنے لگتا ھے ۔۔۔۔۔۔

No te atrevas a moverte desde aqui ‘

( don’t dare to move from here )’

افف میں یہ کیوں بھول جاتا ہوں کہ میری کیزلریم کو سپینش لینگویج نہیں آتی ۔۔۔۔

ہاں تو میں کیا کہہ رہا تھا ۔۔۔۔

ہاں خبردار جو تم یہاں سے ہلی بھی تو ۔۔۔۔

اب تک تم نے میری نرمی دیکھی ھے اب تم دیکھو گی میرا ڈیول روپ اور آئی سوئر یہ تمہیں بہت مہنگا پڑے گا مائی لو ۔۔۔۔۔

کیونکہ تم نے خود کو مجھ سے اپنے ڈئیر جن سے دور کرکے بہت غلط کیا اور جہاں تک تمہارے وہ کیا نام ھے اسکا جو ہمارے بیچ ہماری معصوم محبت کے بیچ آیا اسے تو میں ایسا سبق سکھاؤں گا کہ وہ یاد رکھے گا کے میری کیزلریم اور اسکے ڈئیر جن کے درمیان آ کہ اس نے بہت بڑی غلطی کی ھے ۔۔۔۔۔۔

Lo arruinare ‘
( i will ruin him) ‘

Matare ‘ a este bhastard ‘
( i will kill ThiS bhastard)’

اور فیروزے اسکی درد سے حالت نہیں سنبھل رہی تھی کہ اسکے جن نے اسے دھمکیاں دینا سٹارٹ کردیا تھا جس سے فیروزے لگاتار رونے لگتی ھے اور اسکا جن کافی دیر تک اپنی کیزلریم کو آنسو بہاتے بڑی بے رحمی سے دیکھ رہا تھا تو فیروزے غصے سے اپنے جن کو گھورتی ھے جس سے وہ آگے بڑھ کر فیروزے کی ہیزل برائون آئیز پر اپنا لمس چھوڑتا ھے اور ہلکی مگر بہت دلکش آواز میں اپنی کیزلریم سے کچھ کہتا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

“” الجھنیں بھی اسے دیکھیں تو سلجھ جاتی ہیں

یار وہ نگاہوں سے گرہ کھولتا ھے “”

پھر وہ فیروزے سے دوبارہ مخاطب ہوتا ھے ۔۔۔۔

Kizlarim ‘
( my girl)’

ابھی وہ مزید کچھ کہتا کہ فیروزے اسے کہتی ھے ۔۔۔۔

تت تم ۔۔۔۔

تت تم نے مجھے کیا سمجھا کہ تم مجھے ڈراو گے تت مم میں کیا ڈر جج جاوں گی نہیں ہرگز نہیں میں تم سے نہیں ڈرتی اور میں فارب اپنے جلاد سے ضرور ملوں گی تت تم ۔۔۔۔۔۔۔۔

ابھی وہ کچھ کہتی کہ وہ سٹرینجر فیروزے کی بولتی بند کردیتا ہے اور اپنی کیزلریم کو تب تک نہیں چھوڑتا جب تک اسکی سانسیں نہیں تھمنے لگتی کیونکہ یہ وہ کہاں برداشت کرسکتا تھا کہ اسکی کیزلریم اسکے سامنے کسی دوسرے شخص کا نام لے پھر کافی دیر بعد جب وہ فیروزے کو جھٹکے سے چھوڑتا ھے جس سے وہ لڑکھڑا کے نیچے گرتی ھے اس سے پہلے وہ گرتی وہ سٹرینجر اسے سہارا دے کے کھڑا کرتاھے اور اسکے منہ کو دبوچ کر اس پر ایک شکستہ شیر کی طرح دھاڑتا ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔

Te lo hi dicho mil veces ‘

(I have told you a thousand times )’

Una cosa que no entiendes es que solo eres mia kizlarim’

( one thing you don’t understand is that you are only mine kizlarim)’

کہ ابھی وہ مزید کچھ کہتا فیروزے اسے دھکا دے کر خود سے پڑے دھکیلتی ھے اور چلا کر کہتی ھے کہ ۔۔۔۔

تت تمہاری ہمت کیسے ہوئی مجھ سے اسطرح بیہو کرنے کی میں تمہاری جان لے لوں گی نکل جاو یہاں سے اس سے پہلے میں کچھ کر گزروں نکل جاو یہاں سے پھر وہ روتے ہوئے نیچے بیٹھ جاتی ھے اور وہ سٹرینجر کہاں برداشت کرسکتا تھا کہ اسکی کیزلریم ایسے روئے مگر وہ ضبط کیے اسکے پاس آتا ھے اور پھر سے فیروزے کے چہرے کو اپنی طرف کرتا ھے اور فیروزے اسے منہ موڑ لیتی ھے تو وہ دوبارہ غصے سے فیروزے کی گردن کو دبوچتا ھے اور پھر سے کہتا ھے ۔۔۔۔

مائی لو ۔۔۔۔۔
مائی بیوٹی ۔۔۔۔۔
مائی ہرٹ ۔۔۔۔۔۔۔
مائی کیزلریم ۔۔۔۔۔۔۔۔

تم صرف میری ہو صرف میری کیزلریم ہو میں تمہیں کسی کا نہیں ہونے دوں گا یاد رکھنا تم صرف میری ہو صرف میری ۔۔۔۔۔۔

یہ سب کہتے ہوئے فیروزے کا جن کوئی دیوانہ لگ رہا تھا کیونکہ اسکے ہر انداز میں پاگل پن تھا کیونکہ بات کرنے کے ساتھ ساتھ وہ فیروزے کی گردن پہ اپنے ہاتھ سے دباو مزید بڑھا رہا تھا جس سے فیروزے کی آنکھیں باہر آنے کو تھی کیونکہ فیروزے کیلئے سانس لینا محال ہوگیا تھا مگر اس سٹرینجر پر تو جیسے جنون سوار تھا اسے تو کچھ سجھائی نہیں دے رہا تھا ۔۔۔۔۔

پھر جب اس نے دیکھا کہ اسکی کیزلریم کی حالت غیر ہورہی ھے تو وہ جلدی سے اپنا ہاتھ فیروزے کی گردن سے ہٹاتا ھے اور بھاگ کر پورے کمرے میں ادھر ادھر دیکھتا ھے چونکہ کمرے میں لائٹنگ مدھم تھی تو اسے کچھ واضح دکھائی نہیں دے رہا تھا تو وہ اپنے سیل کی فلیش لائٹ آن کرتا ھے اور جلدی سے پانی لے کر اپنی کیزلریم کے پاس آتا ہے اور اسے پانی پلاتا ھے جو مسلسل کھانسے جارہی تھی اور پھر بڑی مشکل سے فیروزے نے دو چار گھونٹ پیے اور وہ سٹرینجر فیروزے کو مزید پانی پلانے لگتا ھے تو فیروزے گلاس کو دور دھکیلتی ھے تو وہ سٹرینجر فیروزے کے پاس دوبارہ آتا ھے اور پھر وہ اپنی کیزلریم کو زبردستی باہوں میں اٹھا کر بیڈ پر لیٹاتا ھے اور پھر سے فیروزے سے سرگوشی کرنے لگتا ھے ۔۔۔۔۔

Kizlarim ‘
( my girl)’

Por favor ‘
( please)’

Eres solo mia kizlarim ‘

( you are only mine kizlarim)’

Por siempre soy tuya , eternamente eres mia.’

( forever I’m yours, eternally you are mine. )’

Ahora tengo que ir a recordar mi ‘

( now i have to go remember my words)’

پھر وہ سٹرینجر یہ کہہ کر اپنی کیزلریم کو زبردستی ہیڈ کس کرکے چلا جاتا ھے اور فیروزے وہ تو جیسے اپنے ڈئیر جن جو کہ اب ڈیول بن گیا تھا اسکے جانے کے بعد زارو قطار روتی ھے اور کسی صورت اسکا ڈر اسکا غم کم نہیں ہورہا تھا اور وہ سٹرینجر جو فیروزے کے روم کی ونڈو کے باہر کھڑا اپنی کیزلریم کی سسکیاں سن رہا تھا اسے تکلیف تو بہت ہورہی تھی فیروزے کو اپنی کیزلریم کو اسطرح روتے ہوئے دیکھ کر مگر اب وہ سخت بنا ہوا تھا کیونکہ اسے یہ گوارا نہیں تھا کہ اسکی کیزلریم کسی اور کو چاہے کسی اور کو سوچے اسلیے اس نے آج فیروزے کو اپنا ڈیول روپ دکھایا تھا ۔۔۔۔۔۔

اور ہاں اب سے وہ فیروزے کا ڈئیر جن نہیں بلکہ ڈیول بن گیا تھا ۔۔۔۔۔

کیونکہ وہ اپنی کیزلریم سے سخت خفا تھا اور وہ اسے سزا دینا چاہتا تھا اور اسلئے اب وہ فیروزے کو سخت سے سخت سزا دینے کی ٹھان چکا تھا اور اسکے لیے چاہے اس سٹرینجر کی کیزلریم کو چاہے کتنی ہی تکلیف نہ ہو وہ اسے ہر طرح سے تڑپائے گا کیونکہ اب وہ ڈیول بن چکا تھا ۔۔۔۔

ہاں وہ اپنی کیزلریم کا ڈیول بن گیا تھا ۔۔۔۔

کیونکہ وہ محبت سے ہارا ہوا شخص تھا ۔۔۔۔۔۔

کیونکہ وہ محبت سے ٹھکرایا ہوا شخص تھا ۔۔۔

تو وہ ڈیول کیسے نہ بنتا ۔۔۔۔

ہاں اب سے اس نے اپنا نیا روپ دھار لیا تھا ۔۔۔۔

ہاں اب اس ڈیول نے سوچ لیا تھا کہ وہ اپنی کیزلریم کو ہر وہ سزا دے گاجس سے اسکی روح تک فنا ہوجائے گی ۔۔۔۔۔

یہ سب سوچتے ہوئے اس سٹرینجر کی آنکھ سے ایک موتی ٹوٹ کر گرا اور پھر وہ بنا اپنی کیزلریم کو چپ کرائے اپنی کیزلریم اپنی فیری اپنے لو کی سسکیوں کی پرواہ کیے وہاں سے چلا جاتا ھے ۔۔۔۔۔

ہاں وہ اپنی کیزلریم کو سسکتے ہوئے چھوڑ کر چلا جاتا ھے ۔۔۔۔

ہوا تھمی تھی ضرور لیکن

وہ شام جیسے سسک رہی تھی

کہ زرد پتوں کو اندھیروں نے

عجب قصہ سنا دیا تھا

کہ جسکو سن کہ تمام پتے

سسک رہے تھے بلک رہے تھے

نہ جانے کس سانحے کے غم میں

شجر جڑوں سے اکھڑ رہے تھے

(سیزن ون ختم شد )

“”””بیلا بخاری “”””

♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡♡

Alhamdulillah my 1st & most loving novel is completed 🤗😻💚😘

G tu guy’s kisi lgi last epi of season 1😍

Give your reviews about the season 1 of 👇

“” THE MOON OF LUNAR NIGHT “”””

Stay Tuned 4r nxt season 💚💥

Let’s see Ferozay ka jinn devil bna kr nxt season mi kya krta h 😇

Bella Bukhari

 

–**–**–
ختم شد
——
آپکو یہ ناول کیسا لگا؟
کمنٹس میں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Novels

Signup for Novels and get notified when we publish new Novel for free!




%d bloggers like this: