Tum Main aur yah Rasta Novel by Hashmi Hashmi – Episode 2

0
تم میں اور یہ راستہ از ہاشمی ہاشمی – قسط نمبر 2

–**–**–

احان علی شروع سے ہی سنجیدر سا تھا اس کی زندگی اس کے ماں باپ سے شروع ہو کر ماں باپ پر ختم ہوتی تھی لیکن جب وہ ۱۵ سال کا ہوا تو اس کے ماں باپ ایک پلین کرش میں جان بحق ہو گئے خوش قسمتی کہ اس حادثہ میں احان ان کے ساتھ نہیں تھا یو احان نے اپنے جان سے پیار ماں باپ کو کھود دیا احان کی ایک آنی تھی جو کہ لندن میں موجود تھی وہ احان کو اپنے ساتھ لے گئی

وہاں جانے کے بعد احان کم گو بھی ہو گیا اپنے کام سے کام رکھتا پڑھی مکمل کرنے کے بعد احان نے ایک کمپنی میں جوب کر رہا تھا لیکن اب وہ بہت ہی جلد پاکستان واپس انے والا تھا اپنے باپ کے بزس کو سنبھالا کے لیے
__________

وہ ڈنر کرتے ہوے اپنے بابا کو آج یونی میں کیا کیا ہوا سب بتا رہی تھی اور طاہر صاحب اس کی شرارتوں پر مسکرا رہے تھے حور احان پاکستان واپس ارہا ہے انہوں نے حور کو بتایا
کون احان بابا حور نے حیران ہوتے ہوے کہا اس کی بات پر وہ حیران ہوے تمہارے اعجار انکل کا بیٹا احان علی طاہر صاحب نے کہا اوو حانی کی بات کر رہے ہے حور کے چونک کر کہا

جی حانی طاہر صاحب نے مسکراتے ہوے کہا وہ واپس کیوں ارہے ہے مجھے سے مار کھانے تو نہیں حور نے سنجیدگئی سے کہا لیکن آنکھوں میں شرارت تھی

طاہر صاحب اور اعجاز صاحب یونی کے زمانہ سے دوست تھے سو وہ اتور کو طاہر صاحب کی طرف آتے تھے تو طاہر صاحب کبھی ان کے گھر پر موجود ہوتے احان حور سے 4 سال بڑھ تھا طاہر صاحب اس سے بہت محبت کرتے تھے لیکن پھر ان کی زندگی میں حور آگئی احان حور کو دیکھا کر خوش ہوتا

لیکن حور جب بھی احان کو اپنے بابا سے پیار کرتے دیکھتی بغیر کیسی وجہ سے احان کو مارنا شروع کر دیتی اور وہ بچارا اس کو کچھ نہیں کہتا جبکہ طاہر صاحب حور کو ڈنئٹے تو حور کو احان پر اور غصہ آتا جیسے جیسے حور بڑی ہوئی اس نے احان کا نام حانی رکھ دیا اس بات پر احان کو حور پر بہت غصہ آتا

ایک دن حور احان کو حانی حانی کہ کر چرا رہی تھی کہ احان کی برداشت جواب دے گئی تو اس کا ہاتھ ہوا میں اٹھا لیکن اس سے پہلے احان حور کو مارتا حور نے احان کے سینے پر مکار مارنے شروع کر دیے اور وہ ہمیشہ کی طرح اس کی مار کھانے کے بعد وہاں سے اپنے روم میں چلا گیا

اس واقع کے بعد احان حور کے سامنے نہیں جاتا تھا اور حور کو چاہے کیا تھا طاہر صاحب کا اور انکل اعجاز اور آنٹی کا پیار اس کو ہی ملتا پھر ایک دن حور کو پتا چلا کہ احان لندن جا رہا ہے تو وہ احان سے ملے ائی لیکن اس کو یہ نہیں پتا تھا کہ کہ انکل آنٹی اب اس دنیا میں نہیں ہے
حانی آپ جارہے ہے حور نے مصعومت سے پوچھا
ہاں احان نے ایک لفظ میں جواب دیا
واپس کب ائے گئے ایک اور سوال کیا گیا
کبھی نہیں احان نے کہا اور باہر کی طرف بڑھ
حانی I miss you حور نے کہا اور اس کے گلے لگئی جبکہ اس کی حرکت پر احان حیران ہوا
وقت گزارنے کے ساتھ ساتھ حور احان کو بھول گئی لیکن دماغ کے ایک حصہ میں ابھی بھی اس کی اور حانی کی کچھ یادیں تھی

حور بری بات اب آپ بڑی ہو گئی ہے اب آپ احان کو کچھ نہیں کہے گئی طاہر صاحب نے حور کو گھورتے ہوئے کہا جی بابا حور نے منہ بناتے ہوے کہا
______________

اج وہ پاکستان کی سر زمیں پر موجود تھا اس کو پتا تھا کہ یہ وقت ائے گا لیکن پھر بھی وہ اس وقت سے ڈردتا تھا ساری سوچوں کو ایک سائیڈ پر رکھ کر وہ ائیرپوٹ سے باہر آیا تو طاہر صاحب اس کے منتظر تھے ان کو دیکھا کر اس کے چہرے پر مسکراہٹ ائی وہ چلتا ہوا ان کے پاس ایا اسلام و علیکم انکل احان نے کہا

و علیکم اسلام میرا شیر طاہر صاحب نے اس کا ماتھا چوما تو اس کی مسکراہٹ اور گہرئی. ہو گئی کیسا ہے آپ وہ لوگ اب گاڑھی میں بیٹھ گئے تھے ٹھیک تم کیسے ہو طاہر صاحب نے پوچھا ٹھیک ہو
گاڑھی اس کے گھر کے باہر روکی

گھر آج بھی ویسا تھا جیسا وہ چھوڑ کر گیا تھا یہ سب طاہر صاحب کی وجہ سے تھا وہ اس کے بعد اس کے گھر اور بزس کا خیال رکھتے تھے اچھا تم فریش ہو جاو میں بوا سے کہ کر کھانا لگوتا ہو طاہر صاحب نے کہا تو وہ سر ہاں میں ہلاتا ہوا روم میں چلا گیا

وہ واپس ایا تو طاہر صاحب بولے اچھا احان میں چلتا ہو لیکن انکل کھانا تو کھاتے جائے احان نے کہا نہیں بیٹا حور انتظارا کر رہی ہو گئی میرا مجھے اجازت. دو طاہر صاحب نے کہا اوکے اللہ حافظ احان نے کہا اللہ حافظ طاہر صاحب نے اس کی پریشانی چومی اور باہر کی طرف بڑھ

انہوں لگ وہ حور کے بارے میں پوچھ گا لیکن حور کے نام پر اس کے چہرہ پر کوئی تثرات نہیں تھا یہ ہی سوچ طاہر صاحب کو پریشان کر رہی تھی اللہ سب بہتر کرے گا طاہر صاحب نے خود سے کہا سوری انکل کاش آپ مجھے معاف کر دے جو میں کرنے والا ہو احان نے ان کے جانے کے کہا ۔۔۔۔

–**–**–
جاری ہے
——
آپکو یہ ناول کیسا لگا؟
کمنٹس میں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Novels

Signup for Novels and get notified when we publish new Novel for free!




%d bloggers like this: